ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

کوروناوائرس کے معاملے میں مہاراشٹر کی راہ پر دہلی! ان 8 کا اشارہ بڑے خطرے کی جانب

دہلی میں دو ماہ بعد ایک دن میں سب سے زیادہ اعدادو شمار درج کئے گئے ہیں ۔ گزشتہ کچھ ہفتوں کے حالات کے لحاظ سے جانکار اس بات کا اندازہ لگانے میں مصروف ہیں کہ کیا واقعی مل میں کورونا وائرس وبا (Covid-19 pandemic) کی دوسری لہر کی دستک ہو چکی ہے۔

  • Share this:
کوروناوائرس کے معاملے میں مہاراشٹر کی راہ پر دہلی! ان  8 کا اشارہ بڑے خطرے کی جانب
Covid-19 pandemic

ملک میں کورونا وائرس (Coronavirus in India) کے معاملوں میں پھر سے اضافی دیکھا جا رہا ہے۔ اب صرف مہاراشٹر یا صرف کیرالہ ہی نہیں راجدھانی دہلی میں حالات بگڑتے نظر آرہے ہیں۔ جمعرات کو دہلی میں دو ماہ بعد ایک دن میں سب سے زیادہ اعدادو شمار درج کئے گئے ہیں ۔ گزشتہ کچھ ہفتوں کے حالات کے لحاظ سے جانکار اس بات کا اندازہ لگانے میں مصروف ہیں کہ کیا واقعی مل میں کورونا وائرس وبا (Covid-19 pandemic) کی دوسری لہر کی دستک ہو چکی ہے۔ وہیں کچھ حقائق بھی ایسے موجود ہیں جو دہلی میں حالات بگڑنے کی جانب اشارہ کر رہے ہیں۔


آفیشیل اعداد و شمار کے مطابق یکم جنوری کو 585 معاملات سامنے آئے تھے جبکہ چار جنوری کو 384 معاملات درج کئے گئے تھے ۔ اس کے بعد گیارہ جنوری کو 306 معاملات اور 12 جنوری کو 386 معاملات سامنے آئے تھے ۔ قومی راجدھانی دہلی میں زیر علاج مریضوں کی تعداد بڑھ کر 2020 ہوگئی ہے ۔


محکمہ صحت کے مطابق جمعرات کے روز دہلی میں 409 کیس رپورٹ ہوئے۔ یہ تعداد 9 جنوری کے بعد سب سے زیادہ تھی۔ ایک ہی وقت میں راجدھانی میں کورونا پازیٹو کی شرح 0.59 فیصدی تک پہنچ گئی ہے۔ تین نئی اموات کے ساتھ کووڈ 19 کی وجہ سے اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھنے والوں کی تعداد 10 ہزار 934 ہوگئی ہے۔


بدھ کے روز دہلی میں 370 نئے مریض پائے گئے جن میں سے 3 کی موت ہوگئی۔ جبکہ منگل کو مریضوں کی تعداد 320 تھی۔ ایک ہی وقت میں 4 مریض اپنی زندگی سے ہاتھ دھو بیٹھے۔

فروری میں کورونا وائرس کے معاملات کم ہونا شروع ہوئے۔ 26 فروری کو مہینے میں ایک دن کے زیادہ سب سے زیادہ 256 معاملے درج کیے گئے لیکن گزشتہ ایک ہفتے سے مریضوں کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہوتا جارہا ہے۔

بدھ کے روز شہر میں ایکٹو کووڈ کے معاملے 1900 سے 2020 تک بڑھ گئے تھے جبکہ کورونا متاثرین کی کل تعداد بڑھ کر 6 لاکھ 42 ہزار 439 ہوگئی تھی۔


ماہرین صحت اس اضافے کا ذمہ دار لوگوں کے لاپرواہ برتاؤ کو بتاتے ہیں۔ ماہرین اور ڈاکٹروں کے مطابق لوگ سمجھ رہے ہیں کہ سب کچھ ٹھیک ہوچکا ہے اور کووڈ قوانین پر عمل نہیں کررہے ہیں۔

ہیلتھ بلیٹن کے مطابق ہوم آئیسولیشن میں مریضوں کی تعداد 1028 ریکارڈ کی گئی ہے جبکہ مثبت ریٹ اب کل ۴ اعشاریہ ۹۱ فیصد رہ گیا ہے ۔ دہلی بھر کے اسپتالوں کی بات کریں تو کل 5711 بیڈ ہیں ، جس میں سے 579 پر مریض بھرتی ہیں ۔ باقی 5132 ابھی بھی خالی پڑے ہوئے ہیں ۔ نیز ڈیڈیکیٹڈ کووڈ کیئر سینٹر میں 5525 بیڈ ہیں ، جن میں سے صرف چار پر ہی کورونا مریض بھرتی ہیں ۔

ملک کی کچھ ریاستوں میں جان لیوا کورونا وائرس کے کیسزمیں اچانک اضافے کے دوران گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ایکٹیو کیسز میں ایک بارپھر اضافہ کی اطلاعات ہیں گزشتہ دو دنوں سے ایکٹیو کیسز میں کمی آئی تھی لیکن اب ایک بار پھر اس میں اضافہ درج کیا گیا ہے۔ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 4628 ایکٹیو کیسز کا اضافہ ہوا جبکہ بدھ اور منگل کے روز1285،1285 ایکٹیو کیسز کی کمی درج کی گئی تھی۔  اسی عرصے میں کورونا وائرس سے مرنے والے مریضوں کی تعداد ایک بار پھر 100 سے بڑھ کر 126 ریکارڈ کی گئی ہے۔ یہ تعداد بدھ کے روز 133 ، منگل اور پیر کے روز 97 ، اتوار کو 100 ، ہفتہ کو 108 اور جمعہ کو 113 تھی۔

دریں اثنا ملک میں اب تک دو کروڑ 56 لاکھ 85 ہزار سے زائد افراد کو اینٹی کورونا ویکسین دی جاچکی ہے۔
Published by: Sana Naeem
First published: Mar 12, 2021 02:13 PM IST