உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کورونا وائرس: دہلی کے لئے خطرے کی گھنٹی؟ پھر سے انفیکشن میں مبتلا ہو رہے ہیں ٹھیک ہو چکے مریض

    فائل فوٹو

    فائل فوٹو

    قومی دارالحکومت دہلی میں کورونا وائرس کا بحران قابو میں مانا جا رہا تھا۔ سرکاری اعداد وشمار اسی طرف اشارہ کر رہے تھے کہ سب کچھ ٹھیک ٹھاک ہو رہا ہے۔ لیکن اب ایک اور خطرے کی گھنٹی بجتی دکھائی دے رہی ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی۔ قومی دارالحکومت دہلی میں کورونا وائرس (Coronavirus Delhi) کا بحران قابو میں مانا جا رہا تھا۔ سرکاری اعداد وشمار اسی طرف اشارہ کر رہے تھے کہ سب کچھ ٹھیک ٹھاک ہو رہا ہے۔ لیکن اب ایک اور خطرے کی گھنٹی بجتی دکھائی دے رہی ہے۔ ریاست کے کچھ اسپتالوں کا کہنا ہے کہ کووڈ۔ انیس کے انفیکشن سے ابھر چکے کچھ لوگ اب پھر سے انفیکشن میں مبتلا ہو رہے ہیں۔ قومی راجدھانی میں کچھ اسپتالوں کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس سے ٹھیک ہو چکے کچھ مریض پھر سے انفیکشن کے شکار ہو کر ان کے پاس آ رہے ہیں۔ دہلی حکومت کے ذریعہ چلائے جا رہے راجیو گاندھی سپر اسپیشیلٹی اسپتال میں کورونا سے ٹھیک ہو چکے دو مریض پھر سے انفیکشن کی زد میں آ گئے۔

      اسپتال نے بتایا کہ پچھلے مہینے کے آغاز میں ہی دونوں ٹھیک ہو گئے تھے۔ لیکن اب پھر سے ان میں علامت پائی گئی اور وہ پھر سے انفیکشن کی زد میں آ گئے ہیں۔ دہلی واقع دوراکا کے آکاش ہیلتھ کئیر اسپتال میں بھی ایسا ہی ایک معاملہ سامنے آیا ہے جہاں کورونا کا شکار ہو چکا ایک شخص ٹھیک ہونے کے بعد دوبارہ اس کی زد میں آ گیا۔ اتنا ہی نہیں، اس بار اس کی موت بھی ہو گئی۔ بتایا گیا کہ ایک پولیس اہلکار بھی دوبارہ کورونا مثبت پایا گیا۔ ایسے معاملوں نے پھر سے حکومت اور ڈاکٹروں کی پیشانی پر بل لا دیا ہے۔

      رپورٹ کے مطابق، میونسپل کارپوریشن کے ذریعہ چلائے جا رہے ایک کورونا اسپتال میں تعینات نرس بھی انفیکشن سے ٹھیک ہونے کے بعد پھر سے انفیکشن کی زد میں آ گئی۔ دہلی حکومت کے ذریعہ چلائے جا رہے اسپتال کے میڈیکل ڈائریکٹر ڈاکٹر بی ایل شیروال کے مطابق، جب تک وائرس بڑھنے کا پتہ نہیں چل جاتا یا اس کے جین کی سکوینسنگ نہیں کر لی جاتی ہے تب تک یہ پتہ کرنا مشکل ہے کہ کیا وائرس کے دوسرے اسٹرین نے شخص کو دوسری بار انفیکشن سے دوچار کیا ہے؟
      Published by:Nadeem Ahmad
      First published: