ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

جامعہ، شاہین باغ واقعے کی تحقیقات میں دہلی پولیس مصروف

پولیس نے کہا کہ جامعہ ملیہ اسلامیہ میں فائرنگ اور شاہین باغ میں مظاہرے کے مقام کے قریب آتش زنی کے واقعات کی تحقیقات کی جا رہی ہے۔ جنوب مشرقی ضلع کے پولیس ڈپٹی کمشنر راجندر پرساد مینا نے کہا کہ آج صبح نو بج کر 15 منٹ پر شاہین باغ مظاہرے کے مقام کے پاس آتش زنی کی اطلاع ملی۔ شاہین باغ تھانے کی پولیس موقع پر پہنچی تو پتہ چلا کہ ایک بینر، دری اور بانس میں آگ لگی ہوئی تھی اور کچھ ٹوٹی ہوئی بوتلیں بھی پڑی ہوئی تھی۔ اس کے ساتھ ہی جائے وقوعہ کے سامنے گلی میں کچھ دودھ کی بوتلیں ملی ہیں۔

  • UNI
  • Last Updated: Mar 22, 2020 05:20 PM IST
  • Share this:
جامعہ، شاہین باغ واقعے کی تحقیقات میں دہلی پولیس مصروف
شاہین باغ میں دہلی پولیس نے دفعہ 144 نافذ کردی۔

نئی دہلی:  پولیس نے کہا کہ جامعہ ملیہ اسلامیہ میں فائرنگ اور شاہین باغ میں مظاہرے کے مقام کے قریب آتش زنی کے واقعات کی تحقیقات کی جا رہی ہے۔ جنوب مشرقی ضلع کے پولیس ڈپٹی کمشنر راجندر پرساد مینا نے کہا کہ آج صبح نو بج کر 15 منٹ پر شاہین باغ مظاہرے کے مقام کے پاس آتش زنی کی اطلاع ملی۔ شاہین باغ تھانے کی پولیس موقع پر پہنچی تو پتہ چلا کہ ایک بینر، دری اور بانس میں آگ لگی ہوئی تھی اور کچھ ٹوٹی ہوئی بوتلیں بھی پڑی ہوئی تھی۔ اس کے ساتھ ہی جائے وقوعہ کے سامنے گلی میں کچھ دودھ کی بوتلیں ملی ہیں۔

پولیس ڈپٹی کمشنر راجندر پرساد مینا نے کہا کہ ابتدائی جانچ میں پتہ چلا ہے کہ ایک شخص نے آگ پکڑنے والے اشیاء پھینک کر لائٹر سے اس میں آگ لگائی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اسی طرح جامعہ میں مظاہرے کے مقام کے پاس گیٹ نمبر چھ کے قریب ایک خالی کارتوس، ایک لائٹر اور کچھ ٹوٹی ہوئی بوتلیں ملی ہیں۔ پولیس ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ دونوں مقامات پر ایف ایس ایل کی ٹیم نے پہنچ کر جائے وقوعہ کا معائنہ کیا۔ اس واقعہ میں جامعہ نگر اور شاہین باغ تھانے میں ایف آئی آر درج کر لی گئی ہے۔ کئی ٹیمیں تشکیل دے کر معاملے کی جانچ کی جا رہی ہے۔

واضح رہے کہ شہریت ترمیمی قانون (سي اےاے) کے خلاف تین ماہ سے زیادہ عرصے سے جاری احتجاج کے دوران جامعہ ملیہ اسلامیہ میں اتوار کو ایک بار گولی چلنے اور شاہین باغ میں مظاہرے مقام کے پاس پیٹرول بم پھینکنے کا الزام لگایا گیا ہے۔ شاہین باغ مظاہرے میں شروع سے وابستہ رہیں حنا احمد کا کہنا ہے کہ صبح ساڑھے نو بجے کے تقریب نامعلوم شخص مظاہرے کے مقام کے نزدیک پٹرول بم پھینک کر فرار ہوگیا۔ پولیس موقع پر پہنچ کر جانچ کررہی ہے۔

احمد نے کہا کہ وزیراعظم نریندر مودی کے جنتا کرفیو کی اپیل کا احترام کرتے ہوئے ہم نے مظاہرے کے مقام سے دوری بنالی ہے لیکن سی اے اکے خلاف مظاہرہ جاری رکھنے کے لئے مظاہرے کے مقام پر تخت پر ایک جوڑی چپل رکھ کر احتحاج ظاہر کیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پولیس کی موجودگی میں پٹرول بم پھینکے جانے کے واقعہ سے سبھی حیران ہیں۔

جامعہ کوآرڈی نیشن کمیٹی نے دعوی کیا ہے کہ گیٹ نمبر 7 پر واقع مظاہرے کے مقام کے نزدیک بائک سوار ایک شخص نے گولی چلائی۔ سی سی ٹی وی میں بائک سوار تین بیگ کے ساتھ نظر آرہا ہے۔ اس سے ایسا لگ رہا ہے کہ شاید وہ ڈلیوری بوائے ہے۔ بائک کا نمبر صاف نظر نہیں آرہا ہے۔ پولیس نے موقع پر پہنچ کر ایک کارتوس برآمد کیا ہے۔

جامعہ کو آرڈی نیشن کمیٹی نے اگرچہ کورونا وائرس کے خطروں کو دیکھتے ہوئے کل عارضی طور پر مظاہرہ ملتوی کرنے کا اعلان کیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ سی اے اے، این پی آر اور این آر سی کے خلاف مظاہرہ کے اپنے فیصلے پر قائم ہے۔ قانون کی واپسی تک جدوجہد جاری رہے گی۔
First published: Mar 22, 2020 05:20 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading