ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

پرائیویٹ کمپنی کے ملازمین کو نمونہ تبدیل کرکے پازیٹو رپورٹ دیتا تھا وارڈ بوائے، گرفتار

کھام گاؤں کے ایک سرکاری اسپتال میں کام کرنے والے وارڈ بوائے پر نجی ملازمین سے رقم لینے اور انہیں کووڈمثبت رپورٹ دینے کا الزام ہے۔

  • Share this:
پرائیویٹ کمپنی کے ملازمین کو نمونہ تبدیل کرکے پازیٹو رپورٹ دیتا تھا وارڈ بوائے، گرفتار
علامتی تصویر

کورونا کے دور میں کرپشن اور دھاندلی کی بہت ساری خبریں سامنے آ رہی ہیں۔ ایسا ہی ایک معاملہ مہاراشٹر کے بلڈھانہ میں سامنے آیا ہے۔ کھام گاؤں کے ایک سرکاری اسپتال میں کام کرنے والے وارڈ بوائے پر نجی ملازمین سے رقم لینے اور انہیں کووڈمثبت رپورٹ دینے کا الزام ہے۔ وارڈ بوائے جانچ کے لئے آنے والے نمونوں میں ہیرا پھیری کرتا تھا تاکہ ملازمین کووڈمثبت رپورٹ حاصل کرسکیں۔


پولیس نے ملزم کو گرفتار کرلیا ہے۔پولیس کے مطابق ملزم کا نام وجے راکھنڈے ہے جو کھام گاؤں جنرل اسپتال میں ٹھیکیدار کے طور پر کام کرتا ہے۔ ایک پولیس افسر نے بتایا کہ ملزم وارڈ بوائے کو اسپتال کے رہائشی میڈیکل آفیسر ڈاکٹر نلیش ٹپری کی شکایت کی بنیاد پر گرفتار کیاہے۔پولیس کا کہنا ہے کہ نجی کمپنی کے کچھ ملازمین کو معلوم تھا کہ وارڈ بوائے نمونہ تبدیل کرکے جعلی کووڈ19 رپورٹ بنانے میں مدد کرتا ہے۔ میڈیکل آفیسر کو یہ بات پتہ چلی کہ وارڈ بوائے پہلے ہی کووڈ مثبت رپورٹ تبدیل کرتا ہے تا کہ جب یہ رپورٹ مثبت آئے تو وہ چھٹی کے لئے درخواست دے سکے اور انشورنس کی اسکیموں سے فائدہ اٹھا سکیں۔


پولیس کے مطابق ملزم ٹیسٹنگ لیب میں داخل ہونے کے بعد نمونہ تبدیل کرتا تھا۔ اس کے بدلے میں وہ نجی ملازمین سے رقم وصول کرتا تھا۔ پولیس نے نجی کمپنی کے ملازم چندرکانت اُمپ کے خلاف بھی مقدمہ درج کرلیا ہے۔ اسی ملازم نے وارڈ بوائے سے دوسروں کے لئے بھی چار نمونوں کا بندوبست کرنے کو کہا تھا۔ کھام گاؤں پولیس کا دعویٰ ہے کہ اس معاملے میں کچھ اور لوگ بھی ملوث ہوسکتے ہیں۔ پولیس پورے معاملے کی تحقیقات کر رہی ہے۔

Published by: Sana Naeem
First published: Jul 03, 2021 09:38 AM IST