உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    EXCLUSIVE: بھارت بائیوٹیک Covaxin بوسٹرشاٹ کا لےگی جائزہ، ٹرائلزکےلیے DCGI کی منظوری طلب

    کوویکسین بوسٹر شاٹ کے اثر کو پرکھنا چاہتا ہے بھارت بایوٹیک، DCGI سے مانگی ٹیسٹنگ کی اجازت ۔ فائل فوٹو ۔

    کوویکسین بوسٹر شاٹ کے اثر کو پرکھنا چاہتا ہے بھارت بایوٹیک، DCGI سے مانگی ٹیسٹنگ کی اجازت ۔ فائل فوٹو ۔

    حال ہی میں آدھار پونا والا Adar Poonawalla کے سیرم انسٹی ٹیوٹ آف انڈیا نے بھی Covishield کو بوسٹر خوراک کے طور پر انتظام کرنے کے لیے ڈرگ کنٹرولر جنرل آف انڈیا (DCGI) سے منظوری طلب کی تھی جس کا حوالہ دیتے ہوئے مناسب اسٹاک اور بوسٹر شاٹ کی مانگ کی گئی تھی، لیکن درخواست مسترد کر دی گئی۔

    • Share this:
      بھارت بائیوٹیک (Bharat Biotech) نے بھارت کے ڈرگ ریگولیٹر سے اپنی کوویڈ 19 ویکسین کوویکسین (Covaxin) کی تیسری خوراک کی افادیت کا جائزہ لینے کے لیے کلینیکل ٹرائلز کرنے کی اجازت طلب کی ہے۔ ایک اعلیٰ سرکاری اہلکار کے مطابق مقامی ویکسین بنانے والی کمپنی نے دوسری اور تیسری خوراک کے درمیان چھ ماہ کا وقفہ رکھتے ہوئے 5000 صحت مند رضاکاروں پر کوویکسین کے بوسٹر شاٹ کے کلینیکل ٹرائلز کرنے کی تجویز پیش کی ہے۔ مزید برآں فرم نے امیونوکمپرومائزڈ افراد پر ٹرائلز چلانے کی تجویز بھی پیش کی ہے، جس میں تقریباً 500 ایچ آئی وی پازیٹو مریض شامل ہیں۔

      یہ اقدام وزیر اعظم نریندر مودی کی طرف سے صحت کی دیکھ بھال، فرنٹ لائن کے ساتھ ساتھ ساتھ بزرگ شہریوں کے لیے ایک احتیاطی خوراک یا تیسری خوراک کا اعلان کرنے کے بعد سامنے آیا ہے۔ احتیاطی خوراک 10 جنوری 2022 سے دی جائے گی۔

      حال ہی میں آدھار پونا والا Adar Poonawalla کے سیرم انسٹی ٹیوٹ آف انڈیا نے بھی کوویکسین کو بوسٹر خوراک کے طور پر انتظام کرنے کے لیے ڈرگ کنٹرولر جنرل آف انڈیا (DCGI) سے منظوری طلب کی تھی جس کا حوالہ دیتے ہوئے مناسب اسٹاک اور بوسٹر شاٹ کی مانگ کی گئی تھی، لیکن درخواست مسترد کر دی گئی۔

      ذرائع کے مطابق ڈی سی جی آئی کے ماہر پینل نے سیرم انسٹی ٹیوٹ کی درخواست کا جائزہ لیا، اس نے فرم سے کہا کہ وہ بوسٹرز کی درخواست کو درست ثابت کرنے کے لیے مقامی کلینیکل ٹرائل ڈیٹا جمع کرے۔ مزید یہ کہ SII نے برطانیہ کے مطالعے سے صرف 75 سبجیکٹس کا مدافعتی ڈیٹا پیش کیا تھا۔



      اس ماہ کے شروع میں عالمی ادارہ صحت کے امیونائزیشن کے ماہرین کے اسٹریٹجک ایڈوائزری گروپ نے کہا تھا کہ جن لوگوں کی قوت مدافعت کم ہے یا جنہوں نے کووِڈ 19 کی غیر فعال ویکسین حاصل کی ہے، ان کو اینٹی باڈیز کی کمی اور کورونا کے بڑھتے ہوئے کیسز کے پیش نظر تحفظ کے لیے بوسٹر شاٹس لینے چاہئیں۔

      قومی، بین الاقوامی اور جموں وکشمیر کی تازہ ترین خبروں کےعلاوہ تعلیم و روزگار اور بزنس کی خبروں کے لیے نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں ۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: