ہوم » نیوز » عالمی منظر

روس سے آئی مدد: آکسیجن، دوائیوں سمیت 2  طیارے پہنچے دہلی، کسٹم سے کلیئرینس پر ہو رہا ہے مسلسل کام

روس نے ہندوستان کو بھیجی جانے والی پہلی کھیپ میں 20 آکسیجن (OxygenConcentrators) ، 75 وینٹیلیٹر ، 150 بیڈ سائیڈ مانیٹر اور دوائیں شامل ہیں۔

  • Share this:
روس سے آئی مدد: آکسیجن، دوائیوں سمیت 2  طیارے پہنچے دہلی، کسٹم سے کلیئرینس پر ہو رہا ہے مسلسل کام
روس نے ہندوستان کو بھیجی جانے والی پہلی کھیپ میں 20 آکسیجن (OxygenConcentrators) ، 75 وینٹیلیٹر ، 150 بیڈ سائیڈ مانیٹر اور دوائیں شامل ہیں۔

نئی دہلی. ہندستان میں کورونا وائرس وبا Covid-19 pandemic کے بڑھتے ہوئے واقعات کے درمیان روس Russia سے طبی ضروریات کی پہلی کھیپ جمعرات کو بھارت پہنچی ہے۔ روس ںے ہندوستان کو بھیجی جانے والی پہلی کھیپ میں 20 آکسیجن (OxygenConcentrators) ، 75 وینٹیلیٹر ، 150 بیڈ سائیڈ مانیٹر  اور دوائیں شامل ہیں۔ روس کی جانب سے دو پروازیں یہ ساری مدد لیکر علی اصبح دہلی پہنچیں۔ اس سلسلے میں  سینٹرل بورڈ آف ان ڈائریکٹ ٹیکس اینڈ کسٹم (CBIC) نے کہا کہ ایئر کارگو  اور دہلی کسٹم دونوں طیارے میں آنے والی اشیاء کا تیزی سے کلیئرینس کررہے ہیں۔


وزیر اعظم نریندر مودی (pm modi) نے ہفتے کے روز ایک جائزہ اجلاس میں محکمہ ریونیو کو ہدایت کی کہ وہ اس طرح کے آلات کی ہموار اور تیزی سے کلیئرنس کو یقینی بنائے۔ اس کے بعد ، محکمہ ریونیو نے کسٹم کلیئرنس سے متعلق امور کے لئے کسٹمز جوائنٹ سکریٹری  سچن گوور مسلدن کو  نوڈل آفیسر نامزد کیا ہے۔



ان ممالک نے کی مشکل گھڑی میں بڑھایا ہندستان کی مدد کیلئے ہاتھ
غور طلب ہے کہ امریکہ ، روس ، فرانس ، جرمنی ، آسٹریلیا ، آئر لینڈ ، بیلجیم ، رومانیہ ، لکسمبرگ ، سنگاپور ، پرتگال ، سوڈان، نیوزی لینڈ ، کویت اور ماریشس سمیت متعدد بڑے ممالک نے اس وبا سے بچنے کے لئے ہندوستان کو طبی امداد فراہم کرنے کا اعلان کیا ہے۔

پوتن۔ مودی کے درمیان ہوئی بات چیت
اس سے پہلے وزیر اعظم نریندر مودی نے کورونا کی اس مشکل گھڑی میں روس کے صدر ولادیمیر پوتن Vladimir Putin سے بات کی۔ اس بات چیت میں روس کی جانب سے ہندوستان کو کورونا ویکسین اسپوتنک وی، کی سپلائی کا یقین دلایا گیا۔ امید کی جارہی ہے کہ ایک مئی سے ہندوستان میں میں روس کی یہ ویکسین بھی دی جائیگی۔

امریکی صدر جو بائیڈن سے بھی بات چیت
کورونا سے نمٹنے کے حوالے سے وزیر اعظم نریندر مودی اور امریکی صدر جو بائیڈن کے مابین فون پربات چیت ہوئی ۔ اس بات چیت کے بعد پی ایم مودی نے ٹویٹ کرکے اس کی جانکاری دی ۔ وزیر اعظم مودی نے لکھاکہ دونوں ممالک میں کورونا وائرس سے پیدا ہوئے حالات پر تفصیل سے گفتگو ہوئی۔ پی ایم نے صدر بائیڈن کو امریکہ کے ذریعہ ہندوستان کی مدد کرنے پر شکریہ ادا کیا ۔ ایک دوسرے ٹویٹ میں وزیر اعظم مودی نے لکھا کہ صدر جو بائیڈن نے ہندوستان کو کورونا وائرس ویکسین کیلئے خام تیل اور دواوں کی بلا رکاوٹ سپلائی کی اہمیت کا اعادہ کیا ۔ ہندوستان اور امریکہ ہیلتھ کیئر کی پارٹنرشپ کورونا وائرس کے عالمی چیلنجز سے نمٹ سکتی ہے ۔واضح ہو کہ امریکہ نے کووی شیلڈ ویکسین کے خام مال کو ہندوستان بھیجنے سے اتفاق کیا تھا ۔ خیال رہے کہ امریکی صدر جو بائیڈن نے اتوار کو ایک ٹویٹ میں کہا تھا کہ کورونا وائرس کی شروعات میں جب ہمارے اسپتال بھرے تھے اور اس وقت جس طرح ہندوستان نے امریکہ کو مدد بھیجی تھی ، ٹھیک اسی طرح ہم بھی ضرورت کی اس گھڑی میں ہندوستان کی مدد کرنے کیلئے پابند عہد ہیں ۔
<
Published by: Sana Naeem
First published: Apr 29, 2021 06:24 PM IST