ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ایک ہی ویکسین کے لگوانے ہوں گے دو ڈوز، حاملہ اور دودھ پلانے والی خواتین کو ابھی ٹیکہ لگوانے کی ہے مناہی

وزارت سے جاری بیان کے مطابق دونوں خوراک ایک ہی ویکسین (Same Vaccine) کی لینی ہوں گی۔ الگ۔الگ کمپنی کی ویکسین کا استعمال نہیں کیا جائے گا۔

  • Share this:
ایک ہی ویکسین کے لگوانے ہوں گے دو ڈوز، حاملہ اور دودھ پلانے والی خواتین کو ابھی ٹیکہ لگوانے کی ہے مناہی
وزارت سے جاری بیان کے مطابق دونوں خوراک ایک ہی ویکسین (Same Vaccine) کی لینی ہوں گی۔ الگ۔الگ کمپنی کی ویکسین کا استعمال نہیں کیا جائے گا۔

ملک میں 16 جنوری سے کورونا وائرس وبا  (Covid-19 Pandemic)  کے خلاف دنیا کا سب سے بڑا امیونائزیشن پروگرام   (immunization programme)  شروع ہونا ہے۔ مرکزی وزارت صحت (Health Ministry)  نے امیونائیزیشن کو لیکر احتیاط برتنے کو ریاستوں اور (Union Territory) کے ساتھ ایک فیکٹ شیٹ (Fact-Sheet)  شیئر کی ہے۔ وزارت سے جاری بیان کے مطابق دونوں خوراک ایک ہی ویکسین (Same Vaccine)  کی لینی ہوں گی۔ الگ۔الگ کمپنی کی ویکسین کا استعمال نہیں کیا جائے گا۔ مثلا اگر کوویکسین کی پہلی خوراک دی گئی ہے تو دوسری خوراک بھی اسی کی لینی ہوگی۔  اس کے علاوہ خواتین اور دودھ پلانے والی خواتین کو فی الحال ابھی ویکسین نہیں دی جائے گی۔

وزارت صحت کی فیکٹشیٹ میں بہت سی اہم معلومات


مرکز اور ریاستوں کے مرکزی خطوں   (Union Territory) کو بھیجے گئے خط میں کوویکسن اور کووی شیلڈ کے بارے میں  فیکٹ شیٹ (Fact-Sheet) شیئر کی  گئی ہے۔ اس فیکٹ شیٹ میں ، ویکسین کی خوراک ، کولڈ اسٹوریج ، تضاد جیسی متعدد معلومات شیئر کی  گئی ہیں۔ وزارت صحت نے اس   فیکٹ شیٹ (Fact-Sheet) کو ہر سطح پر کام کرنے والے منیجروں یا ویکسینیشن پروگرام کو سنبھالنے والے عہدیداروں تک پہنچانے کا حکم دیا ہے۔


ایمرجنسی  حالات کا بھی ذکر کیا

خط میں  ویکسی نیشن کے دوران کی جانے والی احتیاطی تدابیر اور تضادات کے بارے میں لکھتے ہوئے کہا گیا ہے ، 'یہ ویکسین کسی ایسے شخص کو دی جاسکتی ہے ،  ایمرجنسی صورتحال میں 18 سال یا پھر 18 سال سے زیادہ عمر کے شخص کو  یہ ویکسین دی جا سکے گی۔ دونوں خوراکیں الگ۔الگ نہیں بلکہ ایک ہی  ویکسین کی دی جائیں گی۔ اگر کسی صورت میں  الگ۔الگ  ویکسین کی خوراکیں دینی پڑیں  تو کم سے کم 14 دن کا وقفہ برقرار رکھنا ضروری ہوگا۔

اہم بات یہ ہے کہ سیرم انسٹی ٹیوٹ آف انڈیا کی ویکسین کووی شیلڈ اور بھارت بایوٹیک-آئی سی ایم آر کی کوویکسین کو ہنگامی طور پر استعمال کرنے کی اجازت دی گئی ہے۔ ملک میں ان دونوں ویکسین کے ذریعہ ویکسینیشن پروگرام کرایا جائے گا۔ امریکی دوا ساز کمپنی فائزر نے بھی اپنی ویکسین کے ہنگامی استعمال کے لئے اجازت طلب مانگی تھی۔ لیکن ملک میں کوئی لوکل اسٹڈی نہ ہونے کی وجہ سے انکار کردیا گیا ہے۔
Published by: Sana Naeem
First published: Jan 15, 2021 10:39 AM IST