ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

13 جنوری کو ہندستان میں لگایا جا سکتا ہے کورونا وائرس کا پہلا ٹیکہ: صحت سکریٹری

مرکزی صحت سکریٹری راجیش بھوشن نے منگل کو کہا کہ ہندستان میں کورونا وائرس کی پہلی ویکسین 13 جنوری کو دی جا سکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایمرجنسی یوز اتھورائزیشن جس دن ہوا ہے اس کے 10 دن کے اندر ٹیکہ کاری شروع ہونے کی پوری تیاری ہے۔

  • Share this:
13 جنوری کو ہندستان میں لگایا جا سکتا ہے کورونا وائرس کا پہلا ٹیکہ: صحت سکریٹری
13 جنوری کو ہندستان میں لگایا جا سکتا ہے کورونا وائرس کا پہلا ٹیکہ: فوٹو اے پی

نئی دہلی۔ مرکزی صحت سکریٹری راجیش بھوشن نے منگل کو کہا کہ ہندستان میں کورونا وائرس (Coronavirus) کی پہلی ویکسین 13 جنوری کو دی جا سکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایمرجنسی یوز اتھورائزیشن جس دن ہوا ہے اس کے 10 دن کے اندر ٹیکہ کاری شروع ہونے کی پوری تیاری ہے۔ انہوں نے کہا کہ ویکسین کے لئے سیشن بانٹنے کا پورا عمل الیکٹرانکلی ہو گا۔ استفادہ کنندہ کو ویکسینیشن ہوا یہ ڈیجیٹل ریکارڈ کیا جائے گا اور اسے اگلا ڈوز لینے کب آنا ہے اس کی جانکاری بھی اسے ڈیجیٹل طور پر ملے گی۔ انہوں نے کہا کہ ویکسین لینے کے بعد اگر اس کا کوئی برا اثر ہوتا ہے تو اس کی رئیل ٹائم رپورٹنگ کے لئے کوون ویکسین ڈلیوری مینجمنٹ سسٹم میں التزام کیا گیا ہے۔


چیف سکریٹری نے کہا کہ کوون پلیٹ (CoWin Platform) فارم ہم نے ہندستان میں بنایا ہے لیکن یہ دنیا کے لئے ہے۔ جو بھی ملک اس کا استعمال کرنا چاہے گا حکومت ہند اس میں اس کی مدد کرے گی۔ بھوشن نے کہا کہ صحت کارکنان اور فرنٹ لائن ورکرز کو کوون پلیٹ فارم (ویکسینیشن کے لئے) پر اپنا رجسٹریشن کرانے کی ضرورت نہیں ہو گی، ان کا ڈیٹا پہلے ہی ریکارڈ کیا جا چکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کرنال، ممبئی، چنئی اور کولکاتہ میں واقع جی ایم ایس ڈی نامی 4 ابتدائی ویکسین اسٹور ہیں اور ملک میں 37 ویکسین اسٹور ہیں۔ وہ ٹیکوں کو تھوک میں جمع کرتے ہیں اور پھر انہیں آگے تقسیم کرتے ہیں۔


صحت سکریٹری نے کہا کہ اسٹور کئے گئے ٹیکوں کی تعداد اور درجہ حرارت ٹریکر سمیت سہولت کی ڈیجیٹل طور پر نگرانی کی جاتی ہے۔ ہمارے پاس ملک میں ایک دہائی سے زیادہ وقت سے یہ سہولت ہے۔


خیال رہے کہ گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 29،091 مریضوں کے صحتیاب ہونے سے صحتیاب ہونے والوں کی تعداد بڑھ کر 99.75 لاکھ اورشفایابی کی شرح 96.32 فیصد ہوگئی ہے ۔ ایکٹو کیسز کی تعداد 12،917 کم ہوکر 2.31 لاکھ ہوگئی اور ان کی شرح 2.23 فیصد رہ گئی۔ اسی دوران 201 مریضوں کی موت ہونے سے مرنے والوں کی تعداد بڑھ کر 1،49،850 ہوگئی ہے اور شرح اموات اب بھی 1.45 فیصد ہے۔
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Jan 05, 2021 07:00 PM IST