உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مشن 72 گھنٹے: تبلیغی جماعت کے اجتماع میں شریک افرادکوکیسے پہنچایاگیاکوارنٹین مرکز؟

    بڑی خبر: جماعت کے غیر ملکی اراکین ہوئے رہا، 10-7 ہزار روپئے جرمانہ ادا کر کے لوٹ سکیں گے اپنے ملک

    بڑی خبر: جماعت کے غیر ملکی اراکین ہوئے رہا، 10-7 ہزار روپئے جرمانہ ادا کر کے لوٹ سکیں گے اپنے ملک

    وزارت صحت کے جوائنٹ سکریٹری ، لیوو اگروال نے دو دن قبل بتایا تھا کہ تبلیغی جماعت کے اجتماع میں شرکت کرنے والے تقریباً9000 افراد کی شناخت کرکے انہیں کوارنٹین مرکز کو بھیج دیاگیاہے۔

    • Share this:
    نظام الدین مرکز میں اجتماع میں شرکت کے بعد ملک کی مختلف ریاستوں اور شہروں تک پہنچنے والے افراد کی نشاندہی کرکے انہیں کورانٹین مرکز تک پہنچانا ، پولیس او ر محکمہ صحت کے لیے آسان کام نہیں تھا۔نظام الدین مرکز کو خالی کرنے کی کارروائی کا حصہ بننے والے دہلی پولیس کے ایک سینئر افسر کا کہنا ہے کہ اس معاملے میں ہم نے موبائل فو ن کا سہار ا لیا۔ نہ صرف دہلی پولیس ، بلکہ جن ریاستوں میں یہ لوگ پہنچے تھے وہاں کی پولیس کو بھی ان کے موبائل فون نمبر فراہم کیے گئے تاکہ انہیں جلدہی کوارانٹین مرکز تک پہنچایا جاسکیں۔

    مختلف ریاستوں کی پولیس نے اجتماع میں شریک افراد کے فون پر سخت نظر رکھی ۔ ان میں سے 70 فیصد فون آن تھے اور ان افرادکو فون کرکے کورانٹین مرکز پہنچنے کا مشورہ دیاگیا۔ تبلیغی جماعت کے کئی ارکان کورانٹین مرکز پہنچ گئے ۔ بعض علاقوں میں تبلیغی جماعت کے ارکان کوارنٹین مرکز نہیں پہنچے تو پولیس نے انہیں حراست میں لیکرکورانٹین مرکز پہنچایا۔وزارت صحت کے جوائنٹ سکریٹری ، لیوو اگروال نے دو دن قبل بتایا تھا کہ تبلیغی جماعت کے اجتماع میں شرکت کرنے والے تقریباً9000 افراد کی شناخت کرکے انہیں کوارنٹین مرکز کو بھیج دیاگیاہے۔

    مرکزی اور ریاستی حکومت کے علاوہ ملی تنظیموں کے ذمہ داروں نے بھی تبلیغی جماعتوں کے ارکان سے آگے آنے کی اپیل کی تھی۔وزارت داخلہ کی جانب سے صرف 72 گھنٹوں میں اجتماع میں شریک افراد کا پتہ لگانے کی ہدایت دی گئی تھی۔ دہلی پولیس کو صرف اتنی اطلاع تھی کے اجتماع میں شرکت کے بعد کونسے او رکتنے ارکان ، کن ریاستوں یا شہروں کو گئے ہیں۔جس کے بعد پولیس نے فون نمبرات کی ایک فہرست تیار کرکے تمام ریاستوں کی پولیس کے ساتھ شیئر کی ۔

    بیشتر ریاستوں کی پولیس نے موبائل کے ذریعہ تبلیغی جماعت کے ارکان کا پتہ لگایا ۔مختلف ریاستوں میں پولیس نے ان افراد کو حراست میں لینے کے لیے پولیس کی گاڑی کا نہیں بلکہ ایمبولنس کا استعمال کیا۔ ہریانہ ، تمل ناڈو ، راجستھان ، دہلی ، تلنگانہ ، آندھرا پردیش ، آسام ، اتر پردیش ، اور مدھیہ پردیش سمیت 17 ریاستوں میں پولیس نے ایسے افراد کی نشاندہی کی ہے جو تبلیغی جماعت کے اجتماع میں شریک افراد سے رابطے میں آئے تھے ۔پولیس نے ایسے تمام لوگوں کو بھی کوارٹین مرکز کو بھیج دیا۔
    Published by:Mirzaghani Baig
    First published: