ہوم » نیوز » No Category

جموں۔کشمیر: ڈی پی ایل اننت ناگ سے مزید 14 پولیس اہلکار کورونا وائرس پازیٹو، ڈسٹرکٹ پولیس لائنز میں تشویش کی لہر

تفصیلات کے مطابق چند روز قبل ڈسٹرکٹ پولیس لائنز اننت ناگ سے ایک پولیس اہلکار کو کورونا سے متاثر پایا گیا جسکے بعد ہنگامی بنیادوں پر مذکورہ پولیس اہلکار کے رابطے میں آۓ لوگوں کی نشاندہی کی گئ اور انکے کورونا کےلئے نمونے حاصل کیے گئے۔ حالات نے تب تشویشناک رخ اختیار کیا جب مزید 7 پولیس اہلکار اور پولیس لائنز میں رہائش پزیر ایک خاتون کو کورونا پازیٹیو پایا گیا۔

  • Share this:
جموں۔کشمیر: ڈی پی ایل اننت ناگ سے مزید 14 پولیس اہلکار کورونا وائرس پازیٹو، ڈسٹرکٹ پولیس لائنز میں تشویش کی لہر
تفصیلات کے مطابق چند روز قبل ڈسٹرکٹ پولیس لائنز اننت ناگ سے ایک پولیس اہلکار کو کورونا سے متاثر پایا گیا جسکے بعد ہنگامی بنیادوں پر مذکورہ پولیس اہلکار کے رابطے میں آۓ لوگوں کی نشاندہی کی گئ اور انکے کورونا کےلئے نمونے حاصل کیے گئے۔ حالات نے تب تشویشناک رخ اختیار کیا جب مزید 7 پولیس اہلکار اور پولیس لائنز میں رہائش پزیر ایک خاتون کو کورونا پازیٹیو پایا گیا۔

اننت ناگ: جموں کشمیر میں کورونا کے 62 نئے معاملوں کے ساتھ ہی یہاں پر ہر گزرتے دن کے ساتھ کورونا مریضوں میں غیر متوقع طور پر اضافہ ہو رہا ہے۔ جبکہ ان نئے معاملات میں  ڈسٹرکٹ پولیس لائنز اننت ناگ سے مزید 14 پولیس اہلکاروں کے کورونا ٹیسٹ مثبت پاۓ گۓ۔ جسکے ساتھ ہی ڈی پی ایل اننت ناگ میں کوروناوائرس پازیٹو  پولیس اہلکاروں کی تعداد 22 سے تجاوز کر گئ۔ پولیس اہلکاروں کے رپورٹ مثبت (Coronavirus Positive)  آنے کی وجہ سے ڈسٹرکٹ پولیس لائنز میں تشویش کی لہر دوڈ گئ ہے۔

تفصیلات کے مطابق چند روز قبل ڈسٹرکٹ پولیس لائنز اننت ناگ سے ایک پولیس اہلکار کو کورونا سے متاثر پایا گیا جسکے بعد ہنگامی بنیادوں پر مذکورہ پولیس اہلکار کے رابطے میں آۓ لوگوں کی نشاندہی کی گئ اور ان کے کورونا کےلئے نمونے حاصل کیے گئے۔ حالات نے تب تشویشناک رخ اختیار کیا جب مزید 7 پولیس اہلکار اور پولیس لائنز میں رہائش پزیر ایک خاتون کو کورونا پازیٹیو پایا گیا۔ حالات کی نزاکت کو سمجھتے ہوئے فی الفور کورونا متاثرہ پولیس اہلکاروں کے رابطے میں آئے مزید افرد کو کورننٹائن کیا گیاجسکے بعد اتوار کے روز مزید 14 پولیس اہلکاروں کو کورونا مثبت پایا گیا۔

پولیس اہلکاروں کے لگاتار مثبت آنے کی وجہ سے پورے خیمے میں تشویش کی لہر دوڈ گئ ہے۔ ماہرین کے مطابق پولیس لائنز جیسی تنصیبات میں کورونا جیسے معاملات پر فوری قابو پانا وقت کی اہم ضرورت ہے کیونکہ اسطرح کی تنصیبات میں پولیس یا سیکورٹی اہلکاروں کی بھاری تعیناتی کی وجہ سے یہاں پر نہ صرف  سوشل ڈسٹینسنگ بحال رکھنا محال ہے بلکہ وائرس کے مزید بے قابو ہونے کے بھی خدشات ہیں۔ جبکہ ماہرین کا ماننا ہے کہ پولیس و سیکورٹی اہلکاروں کی ڈیوٹی کی نوعیت کے تناظر میں بھی اہلکاروں کا کورونا سے متاثر ہونا ایک سنگین  خطرے کی علامت ہے جبکہ امن و قانون کی سلامتی ، ملیٹینسی مخالف آپریشنز اور ٹریفک مینجمنٹ جیسے امورات میں پیش پیش رہنے کی وجہ سے سیکورٹی و پولیس اہلکاروں کو کورونا جیسے انفیکشنز سے کافی خطرہ لاحق رہتا ہے۔

ادھر پولیس لائنز میں تعینات ایک افسر نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر کہا کہ ڈسٹرکٹ پولیس لائنز میں پہلے ہی سینٹایزیشن و فیموگیشن کے عمل کا آغاز ہو کیا گیا ہے۔ جبکہ کورونا متاثرہ افراد کے رابطے میں آۓ دیگر اہلکاروں کی ایک خاصی تعداد کو احتیاطی طور پر کارینٹین کیا گیا ہے۔ادھر ڈپٹی چیف میڈیکل افسر اننت ناگ ڈاکٹر ایم وائ زاگو نے کہا کہ پولیس اہلکاروں کا کورونا متاثر ہونا یقینی باعث تشویش ہے لیکن اسے پریشان ہونے کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔ کیونکہ یقینی طور پر اس وبا کو مزید پھیلنے سے پولیس پہلے سے کی کافی متحرک ہے۔ ڈاکٹر زاگو کے مطابق ضلع میں کورونا کے 35 مریض مکمل طور پر صحت یاب ہوچکے ہیں جبکہ آئندہ دنوں میں یہ تعداد مزید بڑھنے کے روشن امکانات نظر آ رہے ہیں.

ڈاکٹر زاگو کا کہنا ہے کہ آیسولیشن میں زیر علاج کورونا مریضوں کی حالت بھی بالکل مستحکم ہے جو ایک خوش آئند بات ہے، لیکن لوگوں کو اب بھی باہر نکلنے سے گریز کرنا چاہیے اور گھروں کے اندر رہنے کو ہی ترجیح دینی چاہیے تاکہ کورونا کی اس مضبوط زنجیر کو توڑ کر اس وبا کا خاتمہ ممکن بنایا جا سکے۔

First published: May 17, 2020 11:23 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading