ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

بڑی خبر ! جموں و کشمیر میں 50 فیصد کووڈ مراکز ہوئے خالی ، ڈاکٹروں نے کہی یہ بڑی بات

اسکمز صورہ کے میڈیکل سُپر نٹنڈنٹ ڈاکٹر فاروق جان کہتے ہیں کہ جہاں اسپتال میں جولائی سے اکتوبر تک کووڈ وارڈ بھرے رہتے تھے وہاں آج صرف 48 مریض زیر علاج ہیں۔ کشمیر میں 10 اور جموں میں 9 کووڈ مراکز میں کوئی مریض نہیں ہے ، لیکن انھیں بند کرنے کے معاملے میں محکمہ صحت ابھی کوئی فیصلہ نہیں لے رہی ۔

  • Share this:
بڑی خبر ! جموں و کشمیر میں 50 فیصد کووڈ مراکز ہوئے خالی ، ڈاکٹروں نے کہی یہ بڑی بات
بڑی خبر ! جموں و کشمیر میں 50 فیصد کووڈ مراکز ہوئے خالی ، ڈاکٹروں نے کہی یہ بڑی بات

سرینگر : جموں و کشمیر میں کووڈ مراکز تیزی سے خالی ہورہے ہیں ۔ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق یہاں پر کووڈ19 کے لئے مخصوص کُل  44 مراکز میں سے 19 مراکز میں اب کوئی مریض زیر علاج نہیں ہے ۔ ان اعداد و شمار میں کہا گیا ہے کہ جموں و کشمیر میں کُل 3666 بستر کووڈ مریضوں کے لئے مختص کئے گئے تھے ، جن میں سے 3255 یعنی 89 فیصد اب خالی ہیں۔ مطلب یہ کہ اب صرف 411 مریض  اسپتالوں میں زیر علاج ہیں ۔ ان مریضوں  میں سے 60 انتہائی نگہداشت والی  یونٹ میں ہیں۔اسپتالوں میں زیر علاج مریضوں میں سے جموں میں 120 اور کشمیر وادی میں 291 کووڈ19 کے مریض زیر علاج ہیں۔


یکم جنوری کو ایکٹیو پازیٹیو کووڈ مریضوں کی تعداد 3016 تک پہنچ گئی ، جو پچھلے چھ ماہ میں سب سے کم ہے۔ اموات کی تعداد دسمبر 2020 میں 175 رہی ۔ یعنی پچھلے چھ مہینے میں سب سے کم۔ ستمبر 2020 میں جموں و کشمیر میں کووڈ 19  کے 37 ہزار 382 معاملات سامنے آئے اور 478 اموات ہوئیں  ۔ ستمبر کے اختتام پر یہاں 17ہزار 17 ایکٹیو کووڈ پازیٹیو  کیس موجود تھے ۔ اکتوبر میں انفیکشن میں کمی آئی اور کُل 19162 مثبت کیس درج کئے گئے ، 284 اموات ہوئیں اور کووڈ ایکٹیو  معاملوں کی تعداد گھٹ کر 6419 رہ گئی۔


نومبر  میں کُل 15353 افراد کووڈ مثبت پائے گئے ، لیکن مریضوں کی صحتیابی کی شرح بہتر رہی اور ایکٹیو مثبت معاملات 4965 تک محدود رہے۔ اس دوران 220 اموات درج کی گئیں ۔ دسمبر مہینے میں کووڈ مثبت معاملات اور اموات دونوں میں کافی کمی درج کی گئی۔ سال 2020 کے اس آخری مہینے میں 10747 کووڈ مثبت معاملے درج ہوئے اور 189 اموات واقع ہوئیں ۔ ایکٹیو پازیٹیو معاملات گھٹ کر31 دسمبر کو تین ہزار نو رہ گئے جو یکم جنوری کو 3016 تک پہنچ گئے۔ دسمبر مہینے کے آخری ہفتے میں دو بار صرف ایک موت درج کی گئی اور 28 دسمبر کو پچھلے چھ ماہ میں روزانہ کووڈ مثبت معاملوں کی سب سے کم تعداد درج کی گئی۔


ماہرین کا ماننا ہے کہ جموں و کشمیر میں کووڈ پھیلانے والا وائرس اب دم توڑتا دکھائی دے رہا ہے ۔ اسکمز صورہ کے میڈیکل سُپر نٹنڈنٹ ڈاکٹر فاروق جان کہتے ہیں کہ جہاں اسپتال میں جولائی سے اکتوبر تک کووڈ وارڈ بھرے رہتے تھے وہاں آج صرف 48 مریض زیر علاج ہیں۔ کشمیر میں 10 اور جموں میں 9 کووڈ  مراکز میں کوئی مریض نہیں ہے ، لیکن انھیں بند کرنے کے  معاملے میں محکمہ صحت ابھی کوئی فیصلہ  نہیں لے رہی ۔

محکمہ صحت کے اعلٰی  افسران کے مطابق برطانیہ اور یورپ میں کووڈ وائرس کی نئی قسم کے پیش نظر ایسا کرنا فی الحال مشکل ہے۔ حالانکہ کشمیر کے ڈائریکٹر  ہیلتھ سروسز نے نیوز 18 اردو کو بتا یا کہ کشمیر میں انگلینڈ سے آئے تمام افراد کووڈ منفی پائے گئے  ہیں ، لیکن وادی کے سیاحتی مراکز خاص طور پہ گلمرگ میں نئے سال کے موقع پر سیاحوں کا تانتا بندھا رہا ایسے میں محکمہ صحت عجلت میں کوئی فیصلہ نہیں لینا چاہتا ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Jan 02, 2021 08:13 AM IST