உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اونٹ۔گھوڑوں میں ملا Lumpy وائرس، راجستھان سے جانچ کیلئے بھیجے گئے نمونے پائے گئے پازیٹو

    Lumpy skin disease یعنی lumpy وائرس جانوروں کے جسم میں گانٹھوں کا سبب بنتا ہے۔ اس کی وجہ سے جانوروں کو بخار ہو جاتا ہے اور ان کا وزن کم ہو جاتا ہے۔

    Lumpy skin disease یعنی lumpy وائرس جانوروں کے جسم میں گانٹھوں کا سبب بنتا ہے۔ اس کی وجہ سے جانوروں کو بخار ہو جاتا ہے اور ان کا وزن کم ہو جاتا ہے۔

    Lumpy skin disease یعنی lumpy وائرس جانوروں کے جسم میں گانٹھوں کا سبب بنتا ہے۔ اس کی وجہ سے جانوروں کو بخار ہو جاتا ہے اور ان کا وزن کم ہو جاتا ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Hisar | Haryana | Delhi | Rajasthan
    • Share this:
      ملک کے مختلف حصوں میں پھیلنے والی lumpy جلد کی بیماری یعنی Lumpy وائرس اب دوسرے جانوروں میں بھی پھیلنا شروع ہو گیا ہے۔ چند روز قبل بھینسوں میں اس بیماری کی علامات پائی گئی تھیں۔ اب جانچ میں راجستھان کے گھوڑوں اور اونٹوں کے نمونے مثبت پائے گئے ہیں۔ نیشنل ہارس ریسرچ سینٹر حصار کے سائنسدان ان نمونوں کی بنیاد پر تجزیہ میں مصروف ہیں۔ lumpy pox بیماری کے کیس پہلی بار اڈیشہ میں سال 2019 میں پائے گئے تھے۔ اس بیماری کا وائرس مکھیوں اور مچھروں کے ذریعے ایک جانور سے دوسرے جانور میں تیزی سے پھیلتا ہے۔ اس سال گجرات اور راجستھان سمیت ہریانہ کے جانوروں میں اس بیماری کا پھیلاؤ زیادہ ہے۔ حصار میں نیشنل ایکوائن ریسرچ سینٹر کو اس بیماری سے بچاؤ کے لیے ویکسین ایجاد کرنے کی ذمہ داری دی گئی تھی۔

      مرکز نے Lumpy Provac نامی ویکسین بھی دریافت کر لی ہے لیکن تشویشناک بات یہ ہے کہ اس بیماری کے وائرس نے دوسرے جانوروں کو بھی متاثر کرنا شروع کر دیا ہے۔ راجستھان سے حصار کے نیشنل ایکوائن ریسرچ سنٹر کو بھیجے گئے گھوڑوں اور اونٹوں کے کچھ نمونوں میں لمپی پوکس وائرس کی تصدیق ہوئی ہے۔ سینٹر کے ڈائریکٹر ڈاکٹر یشپال نے بتایا کہ اونٹوں اور گھوڑوں کے کچھ نمونوں میں وائرس پایا گیا ہے، جن کی مکمل جانچ کی جا رہی ہے۔

      نہ صرف Monkeypox اور کورونا، بچوں پر منڈرا رہا ہے Encephalitisو Tomato Fever کا خطرہ

      چنئی ایئرپورٹ پر پکڑا گیا بینکاک کا مسافر، جانچ کی تو ملا کچھ ایسا افسران کے اڑ گئے ہوش

      یہ ہے Lumpy وائرس
      Lumpy skin disease یعنی lumpy وائرس جانوروں کے جسم میں گانٹھوں کا سبب بنتا ہے۔ اس کی وجہ سے جانوروں کو بخار ہو جاتا ہے اور ان کا وزن کم ہو جاتا ہے۔ صحیح وقت پر مناسب علاج نہ ملنے پر جانور مر جاتے ہیں۔ یہ وائرس مچھروں، مکھیوں، جوؤں اور پسووں سے دوسرے جانوروں میں منتقل ہوتا ہے۔

      ٹیسٹنگ کے لیے ویکسین لگائی جا رہی ہیں۔
      نیشنل ایکوائن ریسرچ سینٹر حصار کے سینئر سائنسدان ڈاکٹر نوین کمار نے کہا کہ فیز III ٹرائل کے لیے Lumpy Provac اور ویکسین کی تقریباً 1.5 لاکھ خوراکیں تیار کی گئی ہیں۔ کچھ گاؤں بشمول حصار اور کئی دیگر مقامات پر جانوروں کو ٹیکے لگائے جا رہے ہیں جن گوشالوں میں ویکسین دی جا رہی ہے وہاں کے جانوروں کا مکمل ریکارڈ لیا جا رہا ہے۔ اب تک تقریباً تین ہزار جانوروں کو ٹیکے لگائے جا چکے ہیں اور ان کی تفصیلات طلب کر لی گئی ہیں۔ ویکسین کا 100% اثر ہو رہا ہے۔ وزارت زراعت، حکومت ہند کی طرف سے ویکسین کے تجارتی استعمال کی اجازت ہے۔ اس کے لیے کارروائی جاری ہے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: