ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

کورونا وائرس پر قابو پانے کے لئے مودی حکومت نے بنایا ایک خاص منصوبہ۔ ان نکات میں جانئے پوری تیاری

کورونا کے خلاف جنگ کی پوری حکمت عملی وزارت صحت کی ویب سائٹ پر شیئر کی گئی ہے۔ آئیے دیکھتے ہیں کہ حکومت نے 20 صفحات پر مشتمل اس دستاویز میں کورونا انفیکشن پر قابو پانے کے لئے کیا تیاری کی ہے۔

  • Share this:
کورونا وائرس پر قابو پانے کے لئے مودی حکومت نے بنایا ایک خاص منصوبہ۔ ان نکات میں جانئے پوری تیاری
ایڈوائزری میں کہا گیاہے کہ کھانسی، بخار ہونے یا سانس لینے میں دشواری آنے کی صورت میں طبی مشورہ لینے کی صلاح دی گئی ہے۔ تاہم اس میں اپنے دوستوں یا اہل خانہ کو بھی باخبرکرنا لازمی ہے تاکہ ان کی مدد طلب کی جاسکے۔ لوگوں سے کہا گیا ہے کہ وہ گھروں میں ہی رہیں اور سماجی دوری کو برقرار رکھیں۔ اُن سے مزید کہا گیا ہے کہ وہ سفری تفاصیل یا مثبت معاملے کے ساتھ رابطے کو رضاکارانہ طور پر رپورٹ کریں۔۔(تصویر: علامتی فوٹو،نیوز18)۔

نئی دہلی۔ کورونا وائرس کو ختم کرنا دنیا بھر کے ممالک کے لئے سب سے بڑا چیلنج بن گیا ہے۔ ہندوستان نے بھی اس انفیکشن کی روک تھام کے لئے گذشتہ ماہ 21 دن کے لاک ڈاؤن کا اعلان کیا۔ اس کے باوجود کورونا مثبت مریضوں کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے۔ نیز اموات کی تعداد میں بھی روزانہ اضافہ ہوتا جارہا ہے۔ 22 مارچ سے لے کر اب تک کووڈ۔ 19 کے معاملات میں تین گنا اضافہ ہوا ہے۔ ایسی صورتحال میں مودی سرکار نے اس وائرس سے نمٹنے کے لئے خصوصی منصوبہ تیار کیا ہے۔ کورونا کے خلاف جنگ کی پوری حکمت عملی وزارت صحت کی ویب سائٹ پر شیئر کی گئی ہے۔ آئیے دیکھتے ہیں کہ حکومت نے 20 صفحات پر مشتمل اس دستاویز میں کورونا انفیکشن پر قابو پانے کے لئے کیا تیاری کی ہے۔


1. اس حکمت عملی کے تحت سب سے زیادہ متاثرہ علاقے کو بفر زون بنا کر مکمل طور پر سیل کردیا جائے گا۔ اس طرح کا علاقہ تقریبا ایک ماہ تک مکمل طور پر بند رکھا جائے گا۔ یہاں کسی کے بھی آنے جانے پر پابندی ہوگی۔


2. جن علاقوں میں کورونا کے مریض ہوں گے وہاں اسکولوں ، کالجوں اور دفاتر کو بند رکھا جائے گا۔ نیز ، نجی اور عوامی نقل و حمل کو بھی یہاں چلنے کی اجازت نہیں ہوگی۔ صرف ضروری خدمات کو ہی بحال رکھا جائے گا۔


چین کے ایکسپرٹ ڈاکٹر کا دعوی ، اپریل میں اس تاریخ تک قابو میں آجائے گا کورونا وائرس

3. ان علاقوں سے تبھی پابندیاں ختم کی جائیں گی جب یہاں سے کوئی نیا کورونا مریض نہیں ملتا ہے۔ اس کے لئے یہ شرط رکھی گئی ہے کہ آخری پازیٹیو مریض ملنے کے چار ہفتوں کے بعد تمام پابندیاں ختم کردی جائیں گی۔

4. کورونا کے تمام مریضوں کو اسپتال کے الگ تھلگ وارڈ میں رکھا جائے گا۔ یہ وہ اسپتال ہوں گے جو خصوصی طور پر کورونا کے لئے تیار کئے گئے ہوں گے۔

5. کورونا کے مریض کو اسپتال سے فارغ کرنے کے لئے رہنما خطوط بھی تیار کرلیے گئے ہیں۔ اس کے تحت کسی بھی مریض کو اس وقت ہی اسپتال سے فارغ کیا جائے گا جب دو مسلسل نمونے منفی آ جائیں۔ اس کے علاوہ کم علامات والے مریضوں کو اسٹیڈیم میں رکھا جائے گا۔ قدرے زیادہ علامات کے مریضوں کو اسپتال میں رکھا جائے گا۔ جبکہ مزید سنگین مریضوں کو بڑے اور خصوصی اسپتال میں بھیجا جائے گا۔

6. صحت مراکز میں انفلوئنزا جیسی بیماریوں کے معاملات کی جانچ کی جائے گی۔ کسی بھی طرح کی بڑھت پر نظر رکھی جائے گی اور مزید جانچ کے لئے اسے سرویلانس آفیسر یا سی ایم او کے علم میں لایا جائے گا۔
First published: Apr 06, 2020 09:21 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading