ہوم » نیوز » عالمی منظر

پاک فوج کا ظالمانہ چہرہ: کورونا مریضوں کو زبردستی بھیج رہی پی او کے اور گلگت

ذرائع کے مطابق ، میرپور اور دیگر بڑے شہروں میں صوبہ پنجاب کے کورونا وائرس کے مریضوں کے علاج معالجے کے لئے قرنطینہ مراکز قائم کردیئے گئے ہیں۔

  • Share this:
پاک فوج کا ظالمانہ چہرہ: کورونا مریضوں کو زبردستی بھیج رہی پی او کے اور گلگت
پاک فوج کا ظالمانہ چہرہ: کورونا مریضوں کو زبردستی بھیج رہی پی او کے اور گلگت

اسلام آباد۔ پاکستان میں کورونا وائرس تیزی سے پھیل رہا ہے۔ اس کے پیش نظر پاکستانی فوج نے  پاک مقبوضہ کشمیر اور گلگت بلتستان میں کورونا وائرس کے پازیٹیو مریضوں کو زبردستی منتقل کرنا شروع کردیا ہے۔ ذرائع کے مطابق ، میرپور اور دیگر بڑے شہروں میں صوبہ پنجاب کے کورونا وائرس کے مریضوں کے علاج معالجے کے لئے قرنطینہ مراکز قائم کردیئے گئے ہیں۔


فوج کے اعلی افسران کی جانب سے ایک حکم میں کہا گیا ہے کہ پوری احتیاط برتی جانی چاہئے کہ کوئی بھی قرنطینہ مرکز فوجی احاطے کے قریب نہ ہو۔ یہی وجہ ہے کہ بڑی تعداد میں کورونا وائرس کے مریضوں کو میرپور شہر اور گلگت بلتستان کے دیگر علاقوں میں منتقل کیا جارہا ہے۔ وہیں، مقامی لوگوں نے فوج کے ذریعہ کی جانے والی جبری منتقلی کے خلاف احتجاج کیا۔ ان کا کہنا ہے کہ اس علاقے میں پہلے سے ہی بنیادی ڈھانچے اور طبی عملے کی کمی ہے۔ ایسی صورتحال میں فوج کے اس اقدام کی وجہ سے یہاں کی صورتحال مزید خراب ہوسکتی ہے۔ اسی کے ساتھ ، پی او کے کے لوگوں کو خوف ہے کہ اگر یہ مراکز ان کے علاقے میں علاج کے لئے بنائے جاتے ہیں تو یہ وبا پورے علاقے کو اپنی لپیٹ میں لے لے گی اور کشمیری عوام کی زندگیاں خطرے میں پڑ جائیں گی۔


لوگ کورونا وائرس کے انفیکشن کے پھیلاؤ سے فکرمند


تاہم ، پاک فوج کے اعلی عہدیداروں کو اس بارے میں کوئی فکر نہیں ہے۔ اس کی وجہ یہ ہوسکتی ہے کہ پاکستان کے صوبہ پنجاب کے مقابلے پی او کے اور گلگت بلتستان کی کوئی سیاسی اہمیت نہیں ہے۔ وہیں، مظفرآباد کے لوگ وبا پھیلنے سے خوفزدہ ہیں۔ اس کی وجہ یہ بھی ہے کہ اس علاقے میں معمولی بیماریوں سے نمٹنے کے لئے صحت کی کوئی سہولت موجود نہیں ہے۔ مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ پاکستانی فوج صرف پنجاب کے بارے میں سوچتی ہے۔
First published: Mar 27, 2020 01:27 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading