ہوم » نیوز » انٹرٹینمنٹ

اسپتال کے CEO کو روتا دیکھ کر سشمیتا سین نے کی آکسیجن کی پیشکش تو سوشل میڈیا پر لوگوں نے پوچھ ڈالے ایسے سوال

سشمتا سین نے سنیل ساگر کی ویڈیو دیکھنے کے بعد ان کی مدد کی پیش کش کرتے ہوئے آکسیجن بھیجنے کی خواہش کا اظہار کیا ہے۔ سنشیل ساگر کی ویڈیو پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے سشمیتا سین نے لکھا- 'یہ گہری اور دل دہلا دینے والی ہے۔

  • Share this:
اسپتال کے CEO کو روتا دیکھ کر سشمیتا سین نے کی آکسیجن کی پیشکش تو سوشل میڈیا پر لوگوں نے پوچھ ڈالے ایسے سوال
سشمتا سین نے سنیل ساگر کی ویڈیو دیکھنے کے بعد ان کی مدد کی پیش کش کرتے ہوئے آکسیجن بھیجنے کی خواہش کا اظہار کیا ہے۔ سنشیل ساگر کی ویڈیو پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے سشمیتا سین نے لکھا- 'یہ گہری اور دل دہلا دینے والی ہے۔

کورونا وائرس  (Coronavirus)  وبا کے چلتے ہر جانب حالات بیحد ہی خراب ہو رہے ہیں۔ وبا کی زد میں آرہے مریضوں میں آکسیجن کی کمی کی پریشانی کافی سامنے آرہی ہے۔ ایسے میں ملک کے الگ۔الگ حصوں میں آکسیجن سلینڈر کی کمی بھی دیکھنے کو مل رہی ہے۔ حالات یہ ہیں کہ ڈاکٹرس بھی اب ہمت ہارنے لگے ہیں۔ اب حال ہی میں دہلی شانتی سکند اسپتال کے سی ای او CEO  سنیل ساگر کا ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر سامنے آیا تھا جس میں سنیل ساگر اسپتال میں آکسیجن کی کمی کے چلتے پریشان نظر آرہے ہیں اور یہ ویڈیو دیکھنے کے بعد بالی ووڈ اداکارہ سشمتا سین  (Sushmita Sen)  بھی کافی دکھی ہو گئیں۔


سشمتا سین نے سنیل ساگر کی  ویڈیو دیکھنے کے بعد ان کی مدد کی پیش کش کرتے ہوئے  آکسیجن بھیجنے کی خواہش کا اظہار کیا ہے۔ سنشیل ساگر کی ویڈیو پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے سشمیتا سین نے لکھا- 'یہ گہری اور دل دہلا دینے والی ہے۔ ہر طرف آکسیجن کا بحران ہے۔ میں نے اس اسپتال کے لئے آکسیجن کے کچھ سلینڈر ارینج کرنے میں کامیابی حاصل کی ہے  لیکن ممبئی سے دہلی تک لے جانے کا کوئی طریقہ نہیں ہے ۔ براہ کرم راستہ کھوجنے میں  میری مدد کریں۔ '


وہیں اپنی مدد کی پیشکش کو لیکر سشمتا سین خوس ہی ٹرولرس کے نشانے پر آگئی ہیں۔ کئی یوزرس نے اداکارہ کے پوٹ پر کمینٹ کرتے ہوئے ان پر سوال اٹھاتے ہوئے سوال کیا کہ ممبئی میں بھی آکسیجن کی کمی ہت تو وہ دہلی سلینڈر کیوں بھیجنا چاہتی ہیں لیکن سشمتا ہوزر کے اس سوال پر خاموش نہیں رہیں۔ انہوں نے خوب اچھے سے اس کا جواب بھی دیا۔




سشمتا نے یوزر کے سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا، کیونکہ مجھے پتہ چلا ہے کہ ممبئی میں ابھی بھی آکسیجن سلینڈر ہیں۔ فی الحال دہلی کو ان سلینڈرس کی ضرورت ہے۔ خاص کر چھوٹے اسپتالوں کو اس لئے اگر مدد کر سکتے ہیں تو کریئے۔
Published by: Sana Naeem
First published: Apr 25, 2021 05:02 PM IST