ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

قبرستان بند ہونے کے دہانے پرکورونا وائرس سے مر نے والوں کی تعداد میں اضافہ 

کورونا وائرس کی وجہ سے مرنے والوں کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے۔ اس کی وجہ سے وڈالا سنی قبرستان کے باہر نوٹس لگا دیا گیا ہے۔

  • Share this:
قبرستان بند ہونے کے دہانے پرکورونا وائرس سے مر نے والوں کی تعداد میں اضافہ 
کورونا وائرس کی وجہ سے مرنے والوں کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے۔ اس کی وجہ سے وڈالا سنی قبرستان کے باہر نوٹس لگا دیا گیا ہے۔

ممبئی کورونا کی دوسری لہر سے جو جھ رہی ہے اور اب تیسری لہر سے نمٹنے کی تیاری میں مصروف حکومت قبرستانوں کو بھول چکی ہے۔ کورونا وائرس کی وجہ سے مرنے والوں کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے۔ اس کی وجہ سے وڈالا سنی قبرستان کے باہر نوٹس لگا دیا گیا ہے۔  قبرستان کے باہر بورڈلگا کر لوگوں کو یہ بتایا جا رہا ہے کہ وڈالا مسلم سنی قبرستان بند ہونے کے دہانے پر ہے۔ اگرچہ خود بی ایم سی نے بھی اس کی تصدیق کی ہے لیکن ہم آپ کو بتادیں کہ اس قبرستان میں مجموعی طور پر 11 پلاٹ ہیں جن میں قریب 1132 قبریں ہیں، اس وقت صرف 128 قبریں بچی ہیں۔


کورونا کی میت کے لئے ایک پلاٹ کو ریزرو کیا گیا ہے جس میں قریب 165 قبریں ہیں، عام میت کے 839 قبریں اور بچوں کے لئے ایک پلاٹ الگ سے مختص کیا گیا ہے۔ بی ایم سی قانون کے مطابق قبر میں جسم 18 ماہ میں گلتی ہے۔ جو اب نہیں ہوپارہی ہے کیونکہ کووڈ۔19 کی وجہ سے موت کی شرح بڑھ گئی ہے۔لاشوں کی بڑی تعداد آنے کی وجہ سے قبر کو 10 سے 12 ماہ کے اندر ہی دفن کرنا پڑتا ہے۔ اس کے نتیجے میں قبروں سے میت نکل رہی ہے جوگلی نہیں ہے۔ اندیشہ یے کہ کچھ دنوں میں قبرستان بند ہو سکتا ہے۔


اس لئے حکومت سے ایک نئی جگہ کی اپیل کی گئی ہے تاکہ کورونا وائرس کی تیسری لہر میں ہونے والی اموات کی صورت میں تدفین کے لئے پریشانی نہ ہو۔




محمود خان (وڈالا مسلم سنی قبرستان۔ صدر) کے مطابق ہمارے علاقہ میں آبادی زیادہ ہے اور کورونا بیماری میں مرنے والوں کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے جس کی وجہ سے قبرستان چھوٹا پڑنے لگا ہے اور قبریں کم پڑنے لگی ہیں اور اس کی اطلاع بی ایم سی نے بھی دی ہے اسی لئے حکومت سے اپیل ہے کہ نیا قبرستان دیا جائے۔ اشتیاق شیخ (سکریٹری ، وڈالا مسلم سنی قبرستان) نے بتایا کہ پہلے تیس سے چالیس میت آتی تھی لیکن کرونا بیماری میں 60 سے 70 میت آرہی ہے یعنی روزانہ دو میت آتی یے جس کی وجہ سے قبر کھودنے کی وجہ سے کچی میت نکلنے لگی ہے جس کے بعد بی ایم سی نے اعتراف کیا ہے کہ جگہ کی کمی کی وجہ سے ایسا ہو رہا ہے۔ اگر یہی صورتحال برقرار رہی تو کچھ دنوں میں یہ قبرستان بند ہوجائے گا اور مقامی لوگوں کو پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔
Published by: Sana Naeem
First published: May 14, 2021 06:45 AM IST