ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

کورونا وبا کے قہر میں بھی لوگ کر رہے ہیں ایسے شرمناک کام، 62 ملازمین کو فرضی RT-PCR رپورٹ دینے کا پردہ فاش

پونے میں فرضی آر ٹی پی سی آر کی رپورٹ دینے والے تین بدمعاش گرفتار کمپنی کے 62 ملازمین کو فرضی رپورٹ دینے کا پردہ فاش۔

  • Share this:
کورونا وبا کے قہر میں بھی لوگ کر رہے ہیں ایسے شرمناک کام، 62 ملازمین کو فرضی RT-PCR رپورٹ دینے کا پردہ فاش
پونے میں فرضی آر ٹی پی سی آر کی رپورٹ دینے والے تین بدمعاش گرفتار کمپنی کے 62 ملازمین کو فرضی رپورٹ دینے کا پردہ فاش۔

ملک میں کورونا قہر بڑھتا جا رہا ہے تودوسری طرف اس مشکل وقت میں بھی ملک کے عوام کو اپنی شرمناک کرتوتوں سے باز نہیں آرہے ہیں۔ لوٹنے والے لوگوں کی کوئی کمی نہیں ہے۔ کبھی ریمیڈیسیور انجیکشن ہزاروں روپے میں بیچنےکا معاملہ ہو یا فرضی رپورٹ دینے کا معاملہ ہر روز ان دونوں واقعات میں اضافہ ہوتا دکھائی دے رہا ہے۔ مہاراشٹرا کے پونے سے جرا پمپری چنچواڑ میں تین بد معاشوں کو پولیس نےگرفتار کیا ہے۔


دراصل ان تینوں بدمعاشوں نے ایک نجی کمپنی کے 62 ملازمین کو فرضی آر ٹی پی سی آر RT-PCR کی رپورٹ بناکر دی ہے۔ یہ سارا معاملہ اس وقت منظر عام پر آیا جب کمپنی کے تین ملازمین کو کمپنی کے مالک کے خلاف مقدمہ درج کرنے کے بعد ایک ہی کیو آر کوڈ کی رپورٹ دیئے گئے۔



کرشن پرکاش (کمشنر ، پمپری چنچواڑ) نے بتایا کہ یہ تینوں ملزم تعلیم یافتہ ہیں اور جعلی لیب کے ڈاکٹروں کے دستخط کر کے فرضی رپورٹ بنائی تھی۔ یہ ملزم لوگوں کی زندگی سے کھلواڑ کر رہے تھے جسے کورونا ہوا ہے وہ اس رپورٹ کے بعد بھی علاج نہیں کر وا سکے اور جسے کورونا نہیں ہوا اس نے دوا کھائی۔ ایسے میں لوگوں کی زندگیوں سے کھلواڑ کیا جارہا ہے۔



پولیس کو شبہ ہے کہ ملزم نے اس پہلے بھی اس طرح کا کام کر چکے ہیں جس کی جانچ ضروری ہے ۔ ساتھ ہی لوگوں سے اپیل کی ہے کہ اگر وہ اپنے QR کوڈ سے اپنی صحیح رپورٹ کی معلومات لیتے ہیں اور کوئی لیب اس طرح سے فریب دہی کرتی ہے تو پولیس میں اس کی شکایت درج کریں۔
Published by: Sana Naeem
First published: May 03, 2021 06:51 PM IST