ہوم » نیوز » عالمی منظر

ہوا میں 6 فٹ سے بھی زیادہ دور جاسکتا ہے کورونا وائرس، covid-19 پر US میں جاری ہوئیں نئی گائیڈلائنس

نئی ہدایات کے مطابق کورونا وائرس کا انفیکشن ہوا میں 6 فٹ سے زیادہ دوری تک جاسکتا ہے۔ اس کے مطابق لوگ سانس کے بہت کم قطروں اور ایروسولائزڈ ذرات (aerosolized particles ) یا سیدھے چھینٹوں، اسپرے یا آلودہ ہاتھوں سے منھ، ناک یا آنکھ کو چھونے سے متاثر ہو سکتے ہیں۔

  • Share this:
ہوا میں 6 فٹ سے بھی زیادہ دور جاسکتا ہے کورونا وائرس، covid-19 پر US میں جاری ہوئیں نئی گائیڈلائنس
نئی ہدایات کے مطابق کورونا وائرس کا انفیکشن ہوا میں 6 فٹ سے زیادہ دوری تک جاسکتا ہے۔

یو ایس سینٹر فار ڈسیز کنترو ایںڈ پریوینشن (سی ڈی سی) نے کورونا وائرس کے پھیلاؤ سے جڑی اپنی گائیڈ لائنس کی ہیں۔ نئی ہدایات کے مطابق کورونا وائرس کا انفیکشن ہوا میں 6 فٹ سے زیادہ دوری تک جاسکتا ہے۔ اس کے مطابق لوگ سانس کے بہت کم قطروں اور ایروسولائزڈ ذرات (aerosolized particles ) یا سیدھے چھینٹوں، اسپرے یا آلودہ ہاتھوں سے منھ، ناک یا آنکھ کو چھونے سے متاثر ہو سکتے ہیں۔ ایجنسی کے مطابق: " ہوا میں سانس لینے والی بہت چھوٹی بوندیں اور (aerosolized particles ) ہوتے ہیں جن میں وائرس ہوتے ہیں۔ وائرس کے پھیلنے کا خطرہ تین سے چھ فٹ کے اندر سب سے زیادہ ہوتا ہے جہاں ان بہت ہی کم بوند اور (aerosolized particles ) اس سے زیادہ دوری تک بھی جا سکتے ہیں۔


تاہم یہ انتباہ بھی دیا گیا کہ وائرس بڑے پیمانے پر گھر کے اندر ہوا کے ذریعے بھی پھیل سکتا ہے ،یہاں تک کہ اگر کچھ حالات میں وائرس چھ فٹ سے بھی زیادہ دور تک جا سکتا ہے۔ اس کے مطابق ان نشریاتی واقعات میں ایک متاثر شخص گھر میں کچھ وقت جیسے 15 منٹ سے زیادہ اور کچھ معاملات میں گھنٹوں کے لئے کے لئے انفیکشن پھیلا سکتا ہے جس سے ہوا میں وائرس 6 فٹ سے زیادہ کے فاصلے پر موجود لوگوں کو متاثر کرکر سکتا ہے۔ اور کچھ معاملات میں متاثر شخص کے فورا بعد اس جگہ سے گزرنے والے لوگوں میں انفیکشن کا خطرہ ہوسکتا ہے۔


گزشتہ ماہ لینسیٹ کی رپورٹ میں کہی گئی تھی یہ بات۔۔۔

لینسیٹ میگزین میں اپریل میں شائع ایک نئی تحقیقی رپورٹ میں کہا گیا کہ اس بات کو ثابت کرنے کے مضبوط ثبوت ہیں کہ کووڈ ۔19 وبائی مرض کے لئے ذمہ دار سارس کوو-2 وائرس بنیادی طور پر ہوا کے ذریعے پھیلتا ہے۔

برطانیہ، امریکہ اور کناڈا سے تعلق رکنے والے چھ ماہرین کے اس assessment میں کہا گیا ہے کہ بیماری علاج و معالجہ سے متعلق قدم اس لئے ناکام ہو رہے ہیں کیونکہ وائرس بنیادی طور پر ہوا سے پھیل رہا ہے۔ امریکہ میں واقع کول راڈو باؤلڈیر یونیورسٹی کے جوس لوئی جمین جے نے کہا، وائرس کے ہوا کے ذریعے سے پھیلنے کے مضبوط ثبوت ہیں۔

انہوں نے کہا ، "عالمی ادارہ صحت World Health Organization (WHO) اور دیگر صحت کی ایجنسیوں کے لئے یہ ضروری ہے کہ وہ اس وائرس کے پھیلاؤ کے سائنسی ثبوت کو قبول کریں تاکہ وائرس کو ہوا میں پھیلاؤ کو کم کرنے پر توجہ دی جاسکے۔"
Published by: Sana Naeem
First published: May 09, 2021 07:09 AM IST