உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ڈبلیو ایچ او نے بتایا کونسی ویکسین لگوا چکے سن رسیدہ افراد کو لینی ہوگی تیسری ڈوز

    ڈبلیو ایچ او نے بتایا کونسی ویکسین لگوا چکے سن رسیدہ افراد کو لینی ہوگی تیسری ڈوز

    ڈبلیو ایچ او نے بتایا کونسی ویکسین لگوا چکے سن رسیدہ افراد کو لینی ہوگی تیسری ڈوز

    عالمی صحت تنظیم کے ایکسپرٹس نے 60 سال سے زیادہ عمر کے ان لوگوں کو تیسری ڈوز لینے کا مشورہ دیا ہے ، جنہوں نے چین کی ویکسین سائنووک ، سائنوفارم سے ویکسینیشن کروایا ہے ۔

    • Share this:
      نئی دہلی : عالمی صحت تنظیم کے ایکسپرٹس نے 60 سال سے زیادہ عمر کے ان لوگوں کو تیسری ڈوز لینے کا مشورہ دیا ہے ، جنہوں نے چین کی ویکسین سائنووک ، سائنوفارم سے ویکسینیشن کروایا ہے ۔ اس کی جانکاری بین الاقوامی نیوز ایجنسی اے ایف پی نے اپنی رپورٹ میں دی ہے ۔ ڈبلیو ایچ او کے ویکسین اسٹریٹجی گروپ نے کہا ہے کہ چین کی ان دونوں ویکسین کے ذریعہ ٹیکہ کاری کرواچکے 60 سال سے زیادہ عمر کے لوگوں کو تیسری بوسٹر ڈوز بھی لینی چاہئے ۔ ایکسپرٹس نے یہ بھی مشورہ دیا ہے کہ تیسری ڈوز کسی دیگر ویکسین کا حصہ ہوسکتی ہے ۔

      چین کی ویکسین کو لے کر تیسری ڈوز کا فیصلہ کیوں کیا گیا ہے ، اس پر کوئی تفصیلی جانکاری نہیں دی گئی ہے ۔ ڈبلیو ایچ او کا رخ ابھی تک بوسٹر ڈوز کے خلاف رہا ہے ۔ دراصل چین کی ویکسین اپنے پروڈکشن کے ساتھ ہی ایفیکیسی اور ڈیٹا کو لے کر تنازعات میں رہی ہے ۔

      کچھ مہینے پہلے چین کے ڈیزیز کنٹرول افسر نے کہا تھا کہ ملک کا کورونا وائرس انفیکشن ٹیکہ کم اثر دار ہے اور سرکار انہیں مزید موثر بنانے پر غور کررہی ہے ۔ چین کے سی ڈی سی کے ڈائریکٹر نے کہا تھا کہ چین کے ٹیکوں میں بچاو شرح بہت زیادہ نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا تھا کہ اب اس بات پر سنجیدگی سے غور کیا جارہا ہے کہ کیا ہمیں ٹیکہ کاری عمل کیلئے الگ الگ ٹیکوں کا استعمال کرنا چاہئے ۔

      ان کے اس بیان کو چین کیلئے بڑا جھٹکا مانا گیا تھا ۔ دراصل چین نے ویکسین اسٹریٹجی کے تحت دنیا میں کئی ممالک کو بڑی مقدار میں ویکسین سپلائی کی ہے ۔ دوا ساز کمپنیوں کے ذریعہ بنائے گئے ٹیکے میکسیکو ، انڈونیشیا ، ہنگری ، برازیل اور ترکی سمتی کئی ممالک میں تقسیم کئے گئے ہیں ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: