ہوم » نیوز » عالمی منظر

شوہر بنا رہا ہے دن۔رات جسمانی تعلقات، پریشان خاتون نے حکومت سے کہا لاک ڈاؤن ختم کرو ورنہ۔۔

بتادیں کہ ٹویٹر سمیت دیگر سوشل میڈیا پلیٹ فارمس پر وائرل ہورہے ایک ویڈیو میں خاتون کہہ رہی ہے کہ "میری نیند نہیں کھلتی کہ شوہر سیکس کیلئے تیار رہتا ہے۔ پہلے اس کی خواہش کو پورا کرکے اسے مطمئن کیجئے اور پھر کچن میں جاکر کھانا بنایئے۔ وہ کھانا کھائے گا، پھر ٹی وی دیکھے گا، کچھ دیر میں ہی پھر سیکس کی ڈیمانڈ کرے گا۔ پھر سیکس، پھر سیکس، پھر سیکس۔ کیا خواتی لاک ڈاؤن میں سیکس کیلئے رہ رہی ہیں۔ یا سچ میں ہم کوروناوائرس کے خوف سے گھروں میں قید ہیں؟ ہم تو اپنی صحت کا خیال رکھنے کیلئے لاک ڈاؤن میں ہیں نہ؟ میرا شوہر بہت زیادہ سیکس کررہا ہے۔ میں حکومت سے مدد چاتی ہوں"۔

  • Share this:
شوہر بنا رہا ہے دن۔رات جسمانی تعلقات، پریشان خاتون نے حکومت سے کہا لاک ڈاؤن ختم کرو ورنہ۔۔
screen grab

کوروناوائرس(Coronavirus) وبا کے پھیلاؤ کے مد نظر ملک اور دنیا بھر میں لاک ڈاؤن (Lockdown) نافذ کیا گیا ہے۔ ہندستان میں لاک ڈاؤن کا وقت بڑھاکر 3 مئی تک کردیا گیا ہے۔ اس لاک ڈاؤن کی وجہ سے سبھی اپنے گھروں میں قید ہیں جس کی وجہ سے عام زندگی پوری طرح سے تھم سی گئی ہے۔ حکومت نے یہ قدم کووڈ19 (Covid-19 pandemic)کے پھیلنے اور سکیورٹی کو دھیان میں رکھتے ہوئے اٹھایا ہے۔ لاک ڈاؤن کی وجہ سے لوگوں کو عام ضرورتوں کی چیزوں کیلئے پریشان ہونا پڑ رہا ہے، وہیں کچھ ممالک میں خواتین بھی کئی طرح کے چیلنجز جھیل رہی ہیں۔

دراصل جن خواتین کے شوہر اس لاک ڈاؤن کی وجہ سے گھر سے باہر کام پر نہیں جا پرہے ہیں وہ گھروں میں قید ٹیوی، موبائل، انٹرنیٹ کے علاوہ سیکس لائف کو بھی انجوائے کررہے ہیں۔ وہیں کچھ خواتین اپنے شوہر کی سیکس کی زیادہ خواہش سے پریشان ہیں۔ دن۔رات بار۔بار سیکس سے پریشان ایسی ہی ایک خاتون کا درد سامنے آیا ہے۔ سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو وائرل ہورہا ہے جس ویڈیو میں خاتون اپنے اس درد کو شیئر کرتی نظر آرہی ہے۔

افریقہ (africa) ملک گھانا (ghana) میں ایک خاتون نے ویڈیو بناکر اپنا درد بیان کیا ہے۔ خاتون نے گھانا کے صدر نانا اکوفو اڈو اڈو سے لاک ڈاؤن ختم کرنے کی اپیل کی ہے۔

'Saddo Sports' نام کے یو ٹیوب چینل پر یہ ویڈیو اپلوڈ کیا گیا ہے جس میں خاتون حکومت سے لاک ڈاؤن ختم کرنے کی اپیل کررہی ہے۔ بتادیں کہ گھانا کے مقامی میڈیا میںاسی ویڈیو کے حوالے سے خبر شائع کی جارہی ہے۔

سیکسوئل طور پر شوہر سے پریشان خواتین نے حکومت سے اپیل کی ہے کہ 'اگر لاک ڈاؤن کو ختم نہیں کیا جاسکتا ہے تو سبھی دفتروں کو کھولا جائے اور ان کے شوہروں کو کام پر جانے کی اجازت دی جائے۔ اور ہمیں اس طرح کی دقتوں کا سامنا نہ کرنا پڑے'۔ گھانا کے مقامی میڈیا میں شائع رپورٹ کے مطابق گھانا کہ بہت سی خواتین نے عویٰ کیا ہے کہ وہ لاک ڈاؤن کے دوران اپنے شوہر کی بار۔بار سیکس کی خواہش سے تنگ آچکی ہیں۔ خواتین کا کہنا ہے کہ زیادہ سیکس سے ہماری صحت پر برا اثر پڑ رہا ہے لیکن شوہر کی ڈیمانڈ کم نہیں ہورہی ہے۔


بتادیں کہ ٹویٹر سمیت دیگر سوشل میڈیا پلیٹ فارمس پر وائرل ہورہے ایک ویڈیو میں خاتون کہہ رہی ہے کہ "میری نیند نہیں کھلتی کہ شوہر سیکس کیلئے تیار رہتا ہے۔ پہلے اس کی خواہش کو پورا کرکے اسے مطمئن کیجئے اور پھر کچن میں جاکر کھانا بنایئے۔ وہ کھانا کھائے گا، پھر ٹی وی دیکھے گا، کچھ دیر میں ہی پھر سیکس کی ڈیمانڈ کرے گا۔ پھر سیکس، پھر سیکس، پھر سیکس۔ کیا خواتی لاک ڈاؤن میں سیکس کیلئے رہ رہی ہیں۔ یا سچ میں ہم کوروناوائرس کے خوف سے گھروں میں قید ہیں؟ ہم تو اپنی صحت کا خیال رکھنے کیلئے لاک ڈاؤن میں ہیں نہ؟ میرا شوہر بہت زیادہ سیکس کررہا ہے۔ میں حکومت سے مدد چاتی ہوں"۔


مقامی ویب سائٹس نے اس خبر کو شائع کیا اور خاتون کے حوالے سے کہا ہے کہ اس کے شوہر نے بے پناہ سیکس کرکے اس کی حالت خراب کردی ہے۔ سیکس ڈیمانڈ سے متاثرہ خاتون کا کہنا ہے کہ شوہر کی عجی۔غریب حرکتوں سے پریشان ہوچکی ہوں۔ پریشان خاتون گھر سے بھاگ کر وہاں پہنچی جہاں وہ نوکری کرتی ہے اور وہیں سے ویڈیو بناجر اپنا درد بیان کیا۔ اس نے ویڈیو میں لاک ڈاؤن کو توڑنے پر ممکنہ کارروائی پر امید ظاہر کی کہ سکیورٹی فورسز اس کی مجبوری کو سمجھیں گے۔


بتادیں کہ گھانا میں اب تک 636 سے زیادہ لوگوں کے کوروناوائررس سے متاثر ہونے کی تصدیق ہوچکی ہے جبکہ 8لوگوں کی موت بھی ہو گئی ہے۔ حکوم نے سکیورٹی اور کووڈ19 کے پھیلاؤ کو روکنے کے مد نظر افریقہ میں اپریل کے پہلے ہفتے میں لاک ڈاؤن کا اعلان کیا تھا۔
First published: Apr 16, 2020 09:48 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading