ہوم » نیوز » عالمی منظر

امریکی کمپنی نے کھوجا کوروناوائرس کاعلاج، گائے کی اس چیز سے بنے گی دوا۔۔۔۔

دنیا کی زیادہ تر کمپنیاں کوروناوائرس سے لڑنے کیلئے مونوکلونل اینٹی باڈی (Develop) کرنے میں لگی ہیں۔ جبکہ گایوں کے ساتھ اچھی بات یہ ہے کہ یہ پالی کلونل اینٹی باڈی بناتی ہیں۔ یہ کسی بھی وائرس کو ختم کرنے کے معاملے میں کسی بھی مونوکلونل ایٹی باڈی سے زیادہ صلاحیت رکھتی ہے۔

  • Share this:
امریکی کمپنی نے کھوجا کوروناوائرس کاعلاج، گائے کی اس چیز سے بنے گی دوا۔۔۔۔
کووڈ 19 کے خاتمے کیلئے سائنسدانوں نے ایک علاج کھوجا ہے۔

دنیا میں کہرام کوروناوائرس (Corona Virus) کی ابھی تک کوئی دوا نہیں بن پائی ہے۔ سائنسداں دن رات کی ویکسین کی کھوج میں لگے ہوئے ہیں۔ اب کووڈ 19 کے خاتمے کیلئے سائنسدانوں نے ایک علاج کھوجا ہے۔ گائے کے جسم میں علاج ہے۔ گائے کے جسم کے اینٹی باڈیز کا استعمال کوروناوائرس کو ختم کرنے میں کامیابی مل سکتی ہے۔ امریکہ کی ایک اینٹی بائیوٹک کمپنی سیب بایئو تھیراہیوٹکس نے یہ دعویٰ کیا ہے۔ کمپنی جلد ہی اس کا کلینکل ٹرائل شروع کرنے والی ہے۔


آج تک کی خبر کے مطابق، جانس ہاپکنس یونویرسٹی میں وائرس بیماریوں کے فزیشین امیش ادالجا نے کہا کہ یہ دعوی بیحد مثبت ، بھروسہ دینے والا اور ایک امید بھرا ہے۔ ہمیں کوروناوائرس کو ہرانے کیلئے ایسے مختلف ہتھیاروں کی ضرورت پڑے گی۔ عام طور پر سائنسداں اینٹی باڈیز کی جانچ (Laboratories) میں کلچر کی گئیں خلیات یا پھر مباکو کے پودھے پر کرتی ہیں۔ لیکن بایئوتھیراپیوٹیکس (bio therapeutics) بیس سال میں گایوں کے کھروں میں اینٹی باڈیز (Antibodies) کو ڈیولپ (Develop) کررہی ہے۔

گائے زیادہ مقدار میں بناتی ہے اینٹی باڈیز

کمپنی گایوں میں میں جینیٹک تبدیلی کرتی ہے تاکہ ان کے امیون سیلس (Immune cells) اور زیادہ ترقی ہوسکے۔ خطرناک بیماریوں سے لڑ سکیں۔ ساتھ ہی یہ گائے زیادہ مقدار میں ایٹی باڈیز (Antibodies) بناتی ہے۔ پٹس برگ یونیورسٹی کے امیونولاجسٹ ولیم کلمسترا نے کہا کہ اس کمپنی کے گایوں کی اینتی باڈیز میں کوروناوائرس کے اسپائک پروٹین (Spike protein) کو ختم کرنے کی طاقت ہے۔ گائے اپنے آپ میں ایک بایئو ری ایکٹر (bioreactor) ہے۔ وہ بھاینک سے بھیانک بیماریوں سے ٹکرانے کیلئے کافی مقدار میں اینٹی باڈیز بناتی ہے۔

سیب بائیوتھراپیوٹیکس کے سی ای او ایڈی سلیون نواس گاؤں کے پاس موجود دیگر چھوٹے سے حیاتیات کے مقابلے میں زیادہ خون ہوتا ہے۔ لہذا ان کے جسم میں اینٹی باڈیز بھی بہت زیادہ بنتے ہیں۔ جنہیں بعد میں سدھار کرکے انسانوں میں استعمال کیا جاسکتا ہے۔ ایڈی نے بتایا کہ دنیا کی زیادہ تر کمپنیاں کوروناوائرس سے لڑنے کیلئے مونوکلونل اینٹی باڈی (Develop) کرنے میں لگی ہیں۔ جبکہ گایوں کے ساتھ اچھی بات یہ ہے کہ یہ پالی کلونل اینٹی باڈی بناتی ہیں۔ یہ کسی بھی وائرس کو ختم کرنے کے معاملے میں کسی بھی مونوکلونل ایٹی باڈی سے زیادہ صلاحیت رکھتی ہے۔
First published: Jun 09, 2020 12:44 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading