ہوم » نیوز » عالمی منظر

دہشت گردوں کو پکڑنے والی تکنیک عمران خان کےآئی کام، اب کورونا وائرس مشتبہ کی کرہے ہیں تلاش۔

سرکاری افسرانکے مطابق اس سسٹم کے استعمال سے زیادہ سے زیادہ ہاٹ اسپاٹ علاقوں کی پہچان ہو پائے گئ، اسے (TTQ) کہا جاتا ہے یعنی ٹریکنگ ، ٹیسٹنگ اور کورنٹائن۔ پاکستان (Pakistan) میں اس کے تحت زیادہ سے زیادہ کوروناوائرس ٹیسٹنگ (coronavirus test) پر زور دیا جارہاہے۔

  • Share this:
دہشت گردوں کو پکڑنے والی تکنیک عمران خان کےآئی کام، اب کورونا وائرس مشتبہ کی کرہے ہیں تلاش۔
سرکاری افسرانکے مطابق اس سسٹم کے استعمال سے زیادہ سے زیادہ ہاٹ اسپاٹ علاقوں کی پہچان ہو پائے گئ، اسے (TTQ) کہا جاتا ہے یعنی ٹریکنگ ، ٹیسٹنگ اور کورنٹائن۔ پاکستان (Pakistan) میں اس کے تحت زیادہ سے زیادہ کوروناوائرس ٹیسٹنگ (coronavirus test) پر زور دیا جارہاہے۔

اسلام آباد: پاکستان (Pakistan) میں بھی کورونا وائرس (Coronavirus)   سے کہرام مچا ہے۔ اس خطرناک وائرس کی وجہ سے اب تک 237 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔ جبکہ 11 ہزار سے زیادہ افراد اس وائرس سے متاثر ہیں۔ ماہرین کے مطابق پاکستان میں مریضوں کی تعداد بہت زیادہ ہوسکتی ہے۔ دراصل متاثرہ افراد سامنے نہیں آرہے ہیں۔ ایسی صورتحال میں اب وزیر اعظم عمران خان(Imran Khan) کوروناوائرس مشتبہ مریضوں (covid-19 suspects) کو پکڑنے کے لئے نئی ترکیب استعمال کررہے ہیں۔ پاکستان میں جس طرح سے دہشت گرد (Terrorist) پکڑے جاتے ہیں۔

اب دہشت گردوں کے ساتھ کورونا وائرس مشتبہ بھی پکڑے جائیں گے

عمران خان نے کہا کہ پہلے یہ تکنیک دہشت گردوں کی نگرانی کرتی تھی لیکن اب اس کا استعمال کوروناوائرس مریضوں کی کھوج (track)کے لئے کیا جائے گا۔ یہ عام طور پر پاکستان کی خفیہ ایجنسی آئی ایس آئی (ISI) استعمال کرتی آرہی ہے۔ یہ باتیں انہوں نے ایک ٹی وی پروگرام میں کہیں۔ اس پروگرام کا انعقاد فنڈز جمع کرنے کے لئے کیا گیا تھا تاکہ کووڈ-19وبا (Covid-19 pandemic) سے متاثرہ افراد کی مدد کی جاسکے۔

TTQ کا ہوگا استعمال۔۔

سرکاری افسرانکے مطابق اس سسٹم کے استعمال سے زیادہ سے زیادہ ہاٹ اسپاٹ علاقوں کی پہچان ہو پائے گئ، اسے (TTQ) کہا جاتا ہے یعنی ٹریکنگ ، ٹیسٹنگ اور کورنٹائن۔ پاکستان (Pakistan)  میں اس کے تحت زیادہ سے زیادہ کوروناوائرس ٹیسٹنگ (coronavirus test)  پر زور دیا جارہاہے۔

لاک ڈاؤن پر سختی۔۔
عمران نے کہا کہ لاک ڈاؤن کے قواعد بنائے گئے ہیں اور اسے توڑنے والوں کو سزا دی گئی ہے۔ اسی طرح  اگر مساجد میں ایس او پی کی پیروی نہیں کی گئی تو  علمائے کرام کو ذمہ دار ٹھہرایا جائے گا اور ان کے لئے سزا مقرر کی جائے گی۔ عمران نے کہا کہ جس بھی مسجد میں کسی قسم کی غلطی ہوئی [سے فوراً پھ سے بند کردیا جائے گا۔  اس پر مزید کوئی بات چیت نہیں ہوگی۔ انہوں نے آگے کہا کہ  میری تو صلاح یہی ہے کہ ملک کے عوام ڈاکٹروں کی قربانی کو یاد رکھیں اور رمضان المبارک کے دوران گھروں میں دعا اور نماز کا اہتمام کریں۔ عمران نے کہا کہ ہم لوگوں کو سڑکوں پر نہیں پیٹنا چاہتے کیونکہ انہوں نے لاک ڈاؤن کو توڑا ہے۔ ہم چاہتے ہیں کہ وہ صورتحال کی سنجیدگی کو سمجھیں اور اپنے گھروں میں ہی رہیں۔

رمضان المبارک کے مہینے کے پیش نظر مسجدیں کولنے کو لیکر پاکستانی حکومت اور علمائے اکرام کے درمیان جو معاہدہ ہوا ہے اس میں نماز او رتراویح میں شامل ہونے کیلئے 21 نکاتی ایس او پی (SOP ) اسٹینڈرڈ آپریٹنگ پروسیزر مسجدوں کو سونپا گیا ہے۔ جس کی پیروی کرنا لازمی بنایا گیا ہے۔ اسی ایس او پی میں مسجدوں میں داخلے سے پہلے بخار یک کرنا اور اندر سوشل ڈسٹینسنگ کے قانون پر سختی سے عمل کرنا اہم ہے۔ نابالغوں اور  50 سال سے زیادہ عمر کے افراد کو بھی نماز اور تراویح  میں شرکت کرنے سے منع کیا گیا ہے۔
First published: Apr 25, 2020 09:17 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading