உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کورونا وائرس: گھروں میں قید پاکستانی دیکھ رہے ہیں بولڈ اور سیکس سین سے بھرپور فلمیں

    وجائنا میں خشکی : مینوپاز کے وقت اچانک سے اسٹروجن کی سطح کم ہوجاتی ہے ، جس کی وجہ سے وجائنا میں خون کا بہاو کم ہوجاتا ہے ۔ اس کی وجہ سے وجائنا میں لبریکیشن بھی کم ہوجاتا ہے اور وجائنا میں بہت زیادہ خشکی محسوس ہونے لگتی ہے ۔ علامتی تصویر ۔

    وجائنا میں خشکی : مینوپاز کے وقت اچانک سے اسٹروجن کی سطح کم ہوجاتی ہے ، جس کی وجہ سے وجائنا میں خون کا بہاو کم ہوجاتا ہے ۔ اس کی وجہ سے وجائنا میں لبریکیشن بھی کم ہوجاتا ہے اور وجائنا میں بہت زیادہ خشکی محسوس ہونے لگتی ہے ۔ علامتی تصویر ۔

     کوروناوائرس کی وجہ سے  گھروں میں ہی وقت گزارنے کیلئے پاکستان کے لوگ بولڈ اور سیکس سین سے بھری فلمیں دیکھنا پسند کررہے ہیں۔ 

    • Share this:
    پاکستان میں تیزی سے پھیل رہے کوروناوائرس کی وجہ سے لوگ گھروں میں ہی وقت گزارنے کو اہمیت دے رہے ہیں۔ ایسے میں وقت کاٹنے کیلئے پاکستانی نیٹ فلکس پر جو فلمیں دیکھنا پسند کررہے ہیں وہ بیحد بولڈ اور فحش ہیں۔ ڈیلی پاکستان میں شائع ایک خبر کے مطابق ان دنوں نیٹ فلکس پر جو فلم پاکستانمیں سب سے زیادہ دیکھی جارہی ہے۔ وہ 'ففٹی شیڈس آف گرے مووی فرینچائز' (Fifty Shades of Grey Franchise)کی فلم 'ففٹی شیڈس فریڈ' ہے۔ ٹائم کے مطابق یہ فلم ان دنوں نیٹ فلکس پر ٹرینڈند میں پاکستان میں پہلے نمبر پر ہے۔
    بولڈ اور فحش مناظر سے بھری ہے فلم
    ایک روایت پسند معاشرے کی شبیہہ والے ملک میں یہ انکشاف چونکانے والا ہے کہ لوگ اپنےگھروں میں ویب سیریز پر بولڈ فلمیں دیکھنا پسند کررہے ہیں۔ ففٹی شیڈس 'ففٹی شیڈس آف گرے مووی فرینچائز' (Fifty Shades of Grey Franchise) کی ہر فلم کی طرح 'ففٹی شیڈس فریڈ' (Fifty Shades Freed) بھی ایک ڈرامہ ٹھریلر  (Drama Thriller) ہے۔ اس میں بولڈ اور سیکس مناظروں کی بھرمار ہے۔ اس کی سبھی فلمیں بولڈ اور سیکس سین سے بھرپور ہوتی ہیں۔
    کورونا وائر کے مد نظر گھروں میں قید پاکستانی
    پاکستان بھی اس وقت کورونا وائرس کی زد میں ہے۔ اس کے مد نظر ملک کی درحدیں بند کردی گئی ہیں او رآمدورفت پر پابندی عائد کردی گئی All Postsہے۔۔ انفیکشن نہ پھیلے اس لئے لوگوں سے بھی گھروں میں رہنے کی اپیل پاکستان حکومت کی طرف سے کی گئی ہے۔
    Published by:sana Naeem
    First published: