اس بیماری کی وجہ سے 15 دنوں میں تین کنگارو کھلاڑی ہوئے کرکٹ سے دور ، اس لیجنڈ نے کہا : یہ تو وبا بن گئی

سابق آسٹریلیا کپتان ایان چیپل نے جمعرات کو کہا کہ ذہنی پریشانیوں کی وجہ سے سرگرم کھلاڑیوں کا کرکٹ سے بریک لینا ان کے ملک میں ایک وبا کی شکل اختیار کرتا جارہا ہے ۔

Nov 14, 2019 07:37 PM IST | Updated on: Nov 14, 2019 07:37 PM IST
اس بیماری کی وجہ سے 15 دنوں میں تین کنگارو کھلاڑی ہوئے کرکٹ سے دور ، اس لیجنڈ نے کہا : یہ تو وبا بن گئی

گلین میکسویل ۔ فائل فوٹو ۔ نیوز 18 ہندی ڈاٹ کام ۔

سابق آسٹریلیا کپتان ایان چیپل نے جمعرات کو کہا کہ ذہنی پریشانیوں کی وجہ سے سرگرم کھلاڑیوں کا کرکٹ سے بریک لینا ان کے ملک میں ایک وبا کی شکل اختیار کرتا جارہا ہے ۔ انہوں نے کرکٹ بورڈ سے فورا اس پر توجہ دینے کی اپیل کی ۔ بین الاقوامی اسٹار کرکٹر گلین میکسویل اور نک میڈنسن کے کھیل سے بریک لینے کے دو ہفتے بعد وکٹوریہ کے نوجوان بلے باز ول پکووسکی ٹیم انتظامیہ کو ذہنی صحت کی پریشانی کی رپورٹ کرنے والے تیسرے آسٹریلیائی کھلاڑی بن گئے ۔ پکووسکی نے ذہنی صحت کا حوالہ دیتے ہوئے پاکستان کے خلاف پہلے ٹیسٹ سے ہٹنے کا فیصلہ کیا ۔

چیپل نے مقامی ریڈیو اسٹیشن تھری اے ڈبلیو سے کہا کہ یہ پیچیدہ مسئلہ ہے ، یہ تقریبا وبا کی شکل اختیار کرچکا ہے ، یہ کہنا صحیح ہے کہ ان کھلاریوں کے بارے میں کہنا جرات مندانہ ہے ، ہاں ، یہ جرات مندانہ ہے ، لیکن کرکٹ آسٹریلیا کو اس کی جڑ تک پہنچنا ہوگا کہ ایسا کیوں ہورہا ہے ۔

Loading...

ایان چیپل ۔ فائل فوٹو ۔ نیوز 18 ہندی ڈاٹ کام ۔

خیال رہے کہ ول پکووسکی کو پاکستان کے خلاف ہونے والے پہلے ٹیسٹ میچ کیلئے 14 کھلاڑیوں کی فہرست میں شامل کیا گیا تھا اور ایسا مانا جارہا تھا کہ وہ برسبین میں ڈیبیو کرسکتے ہیں ۔ لیکن میچ سے پہلے ہی پکووسکی ذہنی دباو کا شکار ہوگئے ۔ تاہم ایسا پہلی مرتبہ نہیں ہے کہ پکووسکی اس طرح ذہنی کشیدگی کی وجہ سے باہر ہوئے ہیں ۔ اسی سال فروری میں انہیں سری لنکا کے خلاف ہونے والی ٹیسٹ سیریز کیلئے بھی آسٹریلیائی ٹیم میں منتخب کیا گیا تھا ، لیکن اس دوران وہ ذہنی کشیدگی کا شکار ہوگئے تھے ، جس کے بعد پکووسکی کو ٹیم سے باہر کردیا گیا تھا ۔ پکووسکی کے باہر ہونے کے بعد آسٹریلیائی ٹیم میں سلامی بلے باز کیمرن بینکرافٹ کو جگہ دی گئی ہے ۔

ول پکووسکی وکٹوریہ کے بلے باز ہیں ۔ انہیں آسٹریلیا کا اگلا اسٹیو اسمتھ بھی کہا جاتا ہے ۔ سال 2018-2019 میں اپنے پہلے ہی شیفیلڈ شیلڈ میچ میں انہوں نے ڈبل سنچری بناکر ڈان بریڈمین اور رکی پونٹنگ جیسے لیجنڈ کھلاڑیوں کی فہرست میں اپنی جگہ بنالی تھی ۔ پکووسکی نے ویسٹرن آسٹریلیا کے خلاف 243 رنوں کی اننگز کھیلی تھی ۔ بتادیں کہ پکووسکی کافی چھوٹی عمر سے ہی چکر آنے اور ذہنی کشیدگی کی بیماری سے پریشان ہیں ۔ پکووسکی نے فرسٹ کلاس کیریئر میں 40 سے زیادہ کی اوسط سے 1143 رن بنائے ہیں ۔

Loading...