ورلڈ کپ سیمی فائنل میں نیوزی لینڈ سے ہندوستان کو ملی شکست تو کیا ہوگا ؟ وراٹ کوہلی نے دیا یہ جواب

ہندوستانی کپتان وراٹ کوہلی نے عالمی کپ سیمی فائنل کی شام پیر کو کہا کہ ٹیم انڈیا ناک آؤٹ مقابلے کے دباؤ کا سامنا کرنے کے اہل ہے اور وہ نیوزی لینڈ کو شکست دینے کے ارادے سے اترے گی۔

Jul 08, 2019 08:35 PM IST | Updated on: Jul 08, 2019 08:35 PM IST
ورلڈ کپ سیمی فائنل میں نیوزی لینڈ سے ہندوستان کو ملی شکست تو کیا ہوگا ؟ وراٹ کوہلی نے دیا یہ جواب

وراٹ کوہلی ۔ فوٹو : اے پی۔

ہندوستانی کپتان وراٹ کوہلی نے عالمی کپ سیمی فائنل کی شام پیر کو کہا کہ ٹیم انڈیا ناک آؤٹ مقابلے کے دباؤ کا سامنا کرنے کے اہل ہے اور وہ نیوزی لینڈ کو شکست دینے کے ارادے سے اترے گی۔ وراٹ نے پریس کانفرنس میں کہاکہ عالمی کپ اب ناک آؤٹ راؤنڈ میں پہنچ چکا ہے اور جو ٹیم ناک آؤٹ راؤنڈ کے دباؤ کو برداشت کرلے گی وہ جیتنے میں کامیاب رہے گی۔ ہم نے کئی بار ناک آؤٹ راؤنڈ اور فائنل میں پہنچے ہیں اور اس میچ میں ہمیں اپنی بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کر نا ہوگا ۔ ہماری پوری ٹیم اس کے لئے تیار ہے۔

وراٹ کوہلی نے اس سوال کا بھی بخوبی جواب دیا کہ اگر ہندوستان کی ٹیم نیوزی لینڈ سے ہار گئی تو ہندوستانی مداحوں کو کیسا لگے گا ۔ وراٹ نے کہا کہ اگر ہم سیمی فائنل میں ہار گئے تو ہمارے فینس کو نیوزی لینڈ کے فینس کی طرح ہی لگے گا ۔ ہمارے ساتھ بہت ساری امیدیں وابستہ ہیں ، ہم دباو کو برداشت کرسکتے ہیں ، ہمارا ہدف صرف اور صرف جیت ہے۔

Loading...

کپتان نے کہاکہ لیگ میچ اور ناک آؤٹ کا معاملہ بالکل مختلف ہوتا ہے۔ لیگ میچ میں آپ کے پاس واپسی کرنے کا موقع ہوتا ہے لیکن سیمی فائنل جیسے ناک آؤٹ مقابلے میں ہر قدم اہم ہوتا ہے اور ایک بھی غلطی بھاری پڑ سکتی ہے۔ ہم جانتے ہیں کہ نیوزی لینڈ نے گزشتہ عالمی کپ کا فائنل کھیلا تھا جبکہ ہم سیمی فائنل تک پہنچے تھے۔ نیوزی لینڈ ایک بہترین ٹیم ہے لیکن ہر میچ کی طرح یہاں بھی ہماری توجہ حریف ٹیم کے بجائے اپنے کھیل پر مرکوز ہے۔

اپنے بولنگ اٹیک پر پورا بھروسہ ظاہر کرتے ہوئے وراٹ نے کہاکہ ہمارے گیند بازوں نے پورے ٹورنامنٹ میں شاندار بولنگ کا مظاہرہ کیا ہے۔ خاص طور پر کم اسکور والے میچوں میں ہندوستانی گیند بازوں کی کارکردگی قابل ستائش رہی ہے اور انہوں نے ضرورت پڑنے پر وکٹ بھی نکالے ہیں۔نیوزی لینڈ کے بولنگ اٹیک کو متوازن قرار دیتے ہوئے ہندستانی کپتان نے کہاکہ ان کے تیز گیند بازوں نے مسلسل اچھی کارکردگی کی ہے اور مشیل سیٹنر مڈل اوورز میں کنٹرول کے ساتھ بولنگ کرتے ہیں۔ ہمیں نظم و ضبط کے ساتھ کھیلنا هوگا اور کیوی گیند بازوں کے خلاف مسلسل اسکور کرنا ہوگا۔

اپنی بلے بازی کے بارے میں وراٹ نے کہاکہ میں جانتا ہوں کہ میں اننگز میں کسی بھی وقت رن رفتار کو تیز کر سکتا ہوں لیکن ہم سب کا دھیان ذاتی ریکارڈ کے بجائے ٹیم کی کارکردگی پر لگا ہوا ہے۔ قابل ذکر ہے کہ وراٹ اس عالمی کپ میں اب تک ایک سنچری بھی نہیں بنا پائے ہیں اور ان کے بلے سے پانچ نصف سنچری نکلی ہیں۔

ہندوستانی کپتان نے اپنے نائب کپتان روہت شرما کی بلے بازی اور ان کی شراکت کی تعریف کرتے ہوئے کہاکہ یہ دیکھنا بہت خوشگوار ہے کہ روہت مسلسل رنز بنا رہے ہیں اور ٹیم کی اننگز کو سنبھال رہے ہیں جس کی وجہ سے ہردک پانڈیا، کیدار جادھو، رشبھ پنت اور مہندر سنگھ دھونی پر زیادہ دباؤ نہیں آتا ہے۔ میں بھی اننگز کے آخر میں رن رفتار کو بڑھا سکتا ہوں۔ روہت اس وقت ون ڈے کے بہترین کھلاڑی ہیں اور ہمیں ان سے ایک اور زبردست اننگز کی امید ہے۔ اوپنر لوکیش راہل کی بھی تعریف کرتے ہوئے وراٹ نے کہاکہ روہت کے ساتھ راہل نے گزشتہ چند میچوں میں ٹیم کو شاندار شروعات دی ہے جو فتح حاصل کرنے کے لئے بہت اہم ہے۔

نیوز ایجنسی یو این آئی کے ان پٹ کے ساتھ

Loading...