سرفراز احمد سے کرکٹ ٹیم کی قیادت چھیننے پر پاکستان میں جم کر ہنگامہ ، کراچی میں احتجاج

کپتانی سے ہٹائے جانے کی کافی مخالفت بھی ہورہی ہے ۔ حالانکہ کئی لوگوں نے اس قدم کی حمایت بھی کی ہے ۔

Oct 20, 2019 08:18 PM IST | Updated on: Oct 20, 2019 08:18 PM IST
سرفراز احمد سے کرکٹ ٹیم کی قیادت چھیننے پر پاکستان میں جم کر ہنگامہ ، کراچی میں احتجاج

سرفراز احمد سے کپتانی چھیننے پر پاکستان میں جم کر ہنگامہ ، کراچی میں احتجاج

پاکستان کرکٹ بورڈ نے سرفراز احمد کو تینوں فارمیٹ میں کپتانی چھوڑ کر ایک پروقار طریقہ سے جانے کا مشورہ دیا تھا ، لیکن اس وکٹ کیپر بلے باز نے اس مشورہ کو ٹھکرادیا ۔ باوثوق ذرائع کے مطابق سرفراز احمد نے جب بورڈ کے سی ای او وسیم خان سے جمعہ کو ملاقات کی تو انہیں عہدہ چھوڑنے کیلئے کہا گیا ۔ وہ 2017 سے تینوں فارمیٹ میں قومی ٹیم کے کپتان تھے ۔ اسی درمیان انہیں کپتانی سے ہٹائے جانے کی کافی مخالفت بھی ہورہی ہے ۔ حالانکہ کئی لوگوں نے اس قدم کی حمایت بھی کی ہے ۔

پی بی سی ذرائع کے مطابق سرفراز احمد نے ایسا کرنے سے واضح طور پر منع کردیا اور وسیم خان سے کہا کہ بورڈ اگر چاہتا ہے تو انہیں ہٹا سکتا ہے ، لیکن وہ خود ہی عہدہ نہیں چھوڑیں گے ۔ ذرائع کے مطابق سرفراز احمد آسٹریلیا دورہ پر پاکستان کی ٹی 20 اور ٹیسٹ ٹیم کا بھی حصہ نہیں ہوں گے کیونکہ کوچ اور چیف سلیکٹر مصباح الحق نے اب وکٹ کیپر بلے باز کے طور محمد رضوان کو موقع دینے کا فیصلہ کیا ہے ۔

Loading...

misbah ul haq, pakistan batting, tuk tuk batting, pakistan cricket team, मिस्‍बाह उल हक, टुक टुक बैटिंग, पाकिस्‍तान क्रिकेट, पाकिस्‍तानी पत्रकार,

وہیں پاکستان کے سابق کرکٹ کھلاڑیوں نے سرفراز احمد کو ہٹانے پر سوالات کھڑے کئے ہیں ۔ ان میں سابق کپتان اور وکٹ کیپر معین خان اور راشد لطیف بھی شامل ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ مصباح اور وقار یونس کو کبھی سرفراز پسند نہیں تھے ۔ سرفراز نے پاکستان کو اپنی قیادت میں مسلسل 11 ٹی 20 سیریز میں کامیابی دلائی اور آپ ان کی خراب کارکردگی کی وجہ سے انہیں نہیں ہٹا سکتے ہیں ۔ کوچ اور چیف سلیکٹر مصباح کو بہت زیادہ طاقت دیدی گئی ہے ۔ یہ پاکستان کرکٹ کیلئے اچھا نہیں ہوگا ۔

راشد لطیف نے کہا کہ سرفراز احمد کو عہدہ سے ہٹانے کیلئے بابر اعظم کا استعمال مہرہ کے طور پر کیا گیا ۔ انہوں نے کہا کہ بابر کو کپتان بنانے سے پہلے پاکستان کرکٹ بورڈ نے کوئی ہوم ورک نہیں کیا ۔ وہ سرفراز کو ہٹانے کیلئے بابر کا استعمال کررہے ہیں جو کہ بابر کے کیریئر کیلئے نقصاندہ ہے ۔ اگر وہ ( بابر ) اچھا کھیلتا ہے تو بھی پاکستانی ٹیم کو نقصان اٹھانا پڑ سکتا ہے ۔

babar azam, babar azam century, babar azam run, pakistan vs sri lanka odi, pak vs sl live score, sl vs pak karachi odi, karachi odi score, बाबर आजम शतक, पाकिस्‍तान श्रीलंका वनडे, कराची वनडे, श्रीलंका पाकिस्‍तान लाइव स्‍कोर

ادھر کرک ٹریکر کی خبر کے مطابق سرفراز احمد کو کپتانی سے ہٹانے کی مخالفت میں کراچی میں احتجاج کئے جانے کی بھی خبر ہے ۔ بتادیں کہ سوشل میڈیا پر بھی اس فیصلے پر سوالات اٹھائے گئے تھے ۔ سرفراز احمد کا ٹی 20 کپتان کے طور پر زبردست ریکارڈ ہے ۔ 2016 ٹی 20 ورلڈ کپ کے بعد سے ہی پاکستانی ٹیم نے مسلسل 11 سیریز جیتی تھی ۔ اس کے علاوہ اس نے 2017 کی چمپئنز ٹرافی بھی اپنے نام کی تھی ۔

Loading...