ٹی -20 عالمی کپ سے قبل مد مقابل ہوں گے ہندوستان اورپاکستان، سامنےآیا آئی سی سی کا پلان

میڈیا رپورٹس کی مانیں تواگلے سال آسٹریلیا میں ہونے والے ٹی-20 عالمی کپ کو سپرہٹ بنانے کے لئےآئی سی سی ہند- پاک کے میچ کے منصوبے پرکام کررہی ہے۔

Oct 16, 2019 03:40 PM IST | Updated on: Oct 16, 2019 03:40 PM IST
ٹی -20 عالمی کپ سے قبل مد مقابل ہوں گے ہندوستان اورپاکستان، سامنےآیا آئی سی سی کا پلان

ٹی -20 عالمی کپ سے قبل مد مقابل ہوں گی ہند - پاک کی ٹیمیں

کرکٹ کے میدان پرہندوستان اورپاکستان کا جب بھی مقابلہ ہوتا ہے تو پوری دنیا تھم سی جاتی ہے۔ اوراگر ان دونوں ممالک کی ٹکرعالمی کپ جیسے ٹورنامنٹ ہورہی توپھرمداحوں کا جوش اورجنون دیکھتے ہی بنتا ہے۔ یہ بات انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) بھی جانتی ہے اورمیڈیا رپورٹس کی مانیں تواگلے سال آسٹریلیا میں ہونے والے ٹی-20 عالمی کپ کو سپرہٹ بنانے کے لئے آئی سی سی ہند- پاک کے میچ کے منصوبے پرکام کررہی ہے۔

وارم اپ میچ میں مد مقابل ہوں گے ہند- پاک 

Loading...

ٹائمس آف انڈیا اخبارمیں شائع خبرکے مطابق آئی سی سی ٹی -20 عالمی کپ سے قبل ہندوستان اورپاکستان وارم اپ میچ میں مد مقابل ہوسکتے ہیں۔ ٹی -20 عالمی کپ کو سپرہٹ کرانے کے لئے آئی سی سی اس آئیڈیا پرکام کررہی ہے۔ واضح رہے کہ ٹی -20 عالمی کپ کا شیڈول دو سال قبل ہی جاری ہوچکا ہے اورہندوستان - پاکستان دونوں ہی ٹیمیں الگ الگ گروپ میں ہیں۔ پاکستان کی ٹیم گروپ -1 میں ہے توٹیم انڈیا گروپ -2 میں ہے۔ ایسے میں یہ ممکن ہے کہ عالمی کپ میں ان دونوں ٹیموں کا مقابلہ نہ ہوپائے، ایسے میں آئی سی سی نے وارم اپ میچ میں ہندوستان - پاکستان کے مقابلہ کا پلان تیارکیا ہے۔

ٹی -20 عالمی کپ میں الگ الگ راؤنڈ میں ہیں ہند-پاک ٹی -20 عالمی کپ میں الگ الگ راؤنڈ میں ہیں ہند-پاک

ہندوستان اورپاکستان کی ٹیمیں آئی سی سی ٹورنامنٹ میں سال 2012 سے ایک گروپ میں نہیں رہی ہیں۔ 2017 چمپئنزٹرافی اور2019 کرکٹ عالمی کپ راؤنڈ رابن کی بنیاد پرکھیلا گیا تھا، جس کی وجہ سے ان دونوں ٹیموں کے درمیان مقابلہ دیکھنے کو ملا تھا۔ ویسے آپ کو بتادیں کہ سال 2009 ٹی -20 عالمی کپ میں بھی ہندوستان - پاکستان کی ٹیمیں وارم اپ میچوں میں مدمقابل ہوچکی ہیں، جس میں ہندوستانی ٹیم کو جیت حاصل ہوئی تھی۔ اب ایک بار پھرآئی سی سی وارم اپ میچ میں ہندوستان - پاکستان کا مقابلہ کرانا چاہتی ہے۔ حالانکہ اس نے ابھی اس بارے میں بی سی سی آئی سے کوئی بات نہیں کی ہے۔

Loading...