کشمیرتنازعہ کے بعد آئی سی سی سخت، انڈیا - نیوزی لینڈ میچ کے دوران اسٹیڈیم بنا نوفلائی زون

انڈیا سری لنکا میچ کے دوران ایک نامعلوم پرائیویٹ طیارہ کئی بارہندوستان مخالف بینرلے کرہیڈنگلے اسٹیڈیم کے اوپرسے گزرا تھا۔

Jul 09, 2019 06:09 PM IST | Updated on: Jul 09, 2019 06:21 PM IST
کشمیرتنازعہ کے بعد آئی سی سی سخت، انڈیا - نیوزی لینڈ میچ کے دوران اسٹیڈیم بنا نوفلائی زون

وراٹ کوہلی کی قیادت میں میدان پرآتی ہوئی ٹیم انڈیا۔ تصویر: اے پی

انڈیا اورنیوزی لینڈ کے درمیان سیمی فائنل میچ کے دوران مینچسٹرکے اولڈ ٹریفرڈ اسٹیڈیم کو 'نوفلائی زون' قرار دے دیا گیا ہے۔ یہ اعلان ہیڈنگلے میں انڈیا - سری لنکا میچ کے دوران پلین (طیارہ) سے ہندوستان مخالف بینرلہرائے جانے کے سبب لیا گیا ہے۔ انگلینڈ اورویلس کرکٹ بورڈ نے بی سی سی آئی کوبتایا کہ مقامی انتظامیہ سے بات چیت کےبعد یہ فیصلہ لیا گیا ہے۔

بی سی سی آئی کے افسران نے نام نہ شائع کرنے کی شرط پرپی ٹی آئی کو بتایا 'ہم نے سیکورٹی میں چوک کی بات کو واضح طورپررکھا اورہمارے کھلاڑیوں کی سیکورٹی کولے کرتشویش ظاہرکی۔ اس بارے میں ای سی بی نے سی ای اوراہل جوہری کوبتایا کہ اولڈ ٹریفرڈ کےایئراسپیس کوایک دن کےلئےنوفلائی زون میں تبدیل کردیا گیا ہے'۔

Loading...

قابل ذکرہےکہ ہفتہ کے روز ہندوستان اور سری لنکا میچ کے دوران ایک نامعلوم پرائیویٹ طیارہ کئی بارہندوستان مخالف بینرلےکرہیڈنگلےاسٹیڈیم کےاوپرسے گزرا تھا۔ ان بینروں میں'انڈیا موب لنچنگ روک'، 'کشمیرکوانصاف چاہئے'، جیسےنعرے لکھے ہوئے تھے۔ ان کےعلاوہ ریستوراں کے پرموشن اورایک شادی کے پرپوزل کا بینرلےکربھی پلین اسٹیڈیم کےاوپرسے گزرا تھا۔

انڈیا - سری لنکا میچ کے دوران کشمیر سے متعلق نعرے والے بینر کے ساتھ طیارہ گزرا تھا۔ انڈیا - سری لنکا میچ کے دوران کشمیر سے متعلق نعرے والے بینر کے ساتھ طیارہ گزرا تھا۔

ان حادثات سے بی سی سی آئی کافی ناراض تھا۔ اس نےاس بارے میں آئی سی سی سے اعتراض ظاہرکیا تھا۔ عالمی کپ 2019 میں دوسری بارایسا ہوا تھا جب کسی میچ کے دوران سیاسی پیغام والے بینرلےکرکوئی طیارہ اسٹیڈیم کےاوپرسے گزرا تھا۔ پاکستان اورافغانستان کےمیچ کےدوران 'بلوچستان کوانصاف' کےنعرے کا بینرلےکرطیارہ اسٹیڈیم کےاوپرسے گزرا تھا۔

واضح رہےکہ بریڈ فورڈ ایئرپورٹ کا ہوائی راستہ ہیڈنگلےاسٹیڈیم کے اوپرسے ہوکرجاتا ہے۔ بریڈ فورڈ میں بڑی تعداد میں پاکستانی لوگ رہتے ہیں۔ آئی سی سی نے یارک شائرپولیس سے سیاسی پیغامات والے پلین کے معاملے کی جانچ کے لئے کہا تھا۔ پولیس نے یقین دہانی کرائی تھی کہ وہ اس معاملے میں کارروائی کرے گی، لیکن ایسا کچھ نہیں ہوا۔ اسی درمیان انتظامیہ کی طرف سے یہ بھی کہا گیا ہے کہ تشہیرکے لئے پرائیویٹ طیاروں کوکرائے پرلینے پر کوئی روک نہیں ہے۔ خبرآئی تھی کہ پولیس نےان معاملوں کواظہاررائےکی آزادی کا معاملہ مانا ہے۔

Loading...