ایمرجنگ انڈر -23 ایشیا کپ: ہندوستان کو شکست دے کرفائنل میں پہنچی پاکستانی ٹیم، دلچسپ میچ کے آخری اوورمیں ہوا فیصلہ

آخری اوورمیں ٹیم انڈیا کو جیت کے لئے 7 رن کی ضرورت تھی، لیکن ٹیم انڈیا اس اوورمیں صرف 4 رن ہی بناسکی۔

Nov 21, 2019 12:10 AM IST | Updated on: Nov 21, 2019 12:11 AM IST
ایمرجنگ انڈر -23 ایشیا کپ: ہندوستان کو شکست دے کرفائنل میں پہنچی پاکستانی ٹیم، دلچسپ میچ کے آخری اوورمیں ہوا فیصلہ

آخری اوورمیں ہندوستان کو شیوم ماوی کے طورپر بڑا جھٹکا لگا۔

ڈھاکہ: ایمرجنگ انڈر -23 ایشیا کپ کے سیمی فائنل کے دلچسپ مقابلہ میں آج پاکستان نے ہندوستان کے خلاف تین رن سے جیت حاصل کرکے فائنل میں جگہ بنالی۔ پاکستان نے 50 اوور میں 7 وکٹوں کے نقصان پر 267 رن بنائے جبکہ ہندوستانی ٹیم آٹھ وکٹ پر 264 رن ہی بنا سکی۔ ہندوستان کو آخری تین اوور میں 20 رن کی ضرورت تھی اور اس کے چار وکٹ باقی تھے لیکن ٹیم اس ہدف کا حاصل نہیں کرسکی اور فائنل کی دوڑ سے باہر ہو گئی۔

پاکستان کا ہفتہ کےروز فائنل میں بنگلہ دیش اور افغانستان کے درمیان دوسرے سیمی فائنل کے فاتح سے مقابلہ ہوگا۔ دوسرا سیمی فائنل جمعرات کو کھیلا جائے گا۔ہدف کا تعاقب کرتے ہوئے ہندوستان نے اچھی شروعات کی۔ کپتان بی آر شرت (47) اور آرین جيال (17) نے پہلے وکٹ کے لئے 43 رن جوڑے۔ شرت ٹیم کے 96 کے اسکور پر آؤٹ ہوئے۔ انہوں نے 43 گیندوں کی اننگز میں چھ چوکے اور ایک چھکا لگایا۔

سنوير سنگھ (76) اور ارمان جعفر (46) نے تیسرے وکٹ کے لئے 81 رن کی شاندار شراکت کر کے ٹیم انڈیا کو مضبوط پوزیشن میں پہنچایا۔ سنوير 31 ویں اوور میں رن آوٹ ہوئے جس کے بعد ہندوستانی ٹیم دباؤ میں آگئی ۔سنوير نے 90 گیندوں کی اننگز میں پانچ چوکے اور ایک چھکا لگایا۔ ہندوستان نے 211 کے اسکور پر یش راٹھوڈ (13) اور جعفر کے وکٹ گنوا دیئے۔ جعفر نے 53 گیندوں پر 46 رنز میں پانچ چوکے اور ایک چھکا لگایا۔ ایس شرما (12) رنز بنا کر 244 کے اسکور پر رن آوٹ ہوئے۔ ریتک کا وکٹ 250 اور شوم ماوي کا وکٹ 260 کے اسکور پر گرا۔ ماوي آخری اوور کی دوسری گیند پر آؤٹ ہوئے۔ اس کے بعد ہندوستانی ٹیم ہدف تک نہیں پہنچ سکی۔ چنمے سوتار نے ناٹ آؤٹ 28 رن بنائے۔ پاکستان کی جانب سےمحمد حسنین نے 61 رن پر دو وکٹ اور سیف بدر نے 57 رن پر دو وکٹ لئے۔احمد بٹ اور عمر خان کو ایک ایک وکٹ ملا۔ ہندوستان کے دو کھلاڑی رن آوٹ ہوئے۔

Loading...

خطابی مقابلے میں جانے کا جشن مناتی ہوئی پاکستانی ٹیم۔ خطابی مقابلے میں جانے کا جشن مناتی ہوئی پاکستانی ٹیم۔

اس سے پہلے پاکستان کی اننگز میں سلامی بلے باز عمر یوسف نے 97 گیندوں پر تین چوکوں اور دو چھکوں کی مدد سے سب سے زیادہ 66 رن بنائے۔ حیدر علی نے 60 گیندوں میں پانچ چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 43 رن، کپتان روہیل ناظر نے 41 گیندوں میں 35 رن، سیف بدر نے 48 گیندوں میں ناٹ آؤٹ 47 رن اور عمران رفیق نے 30 گیندوں میں 28 رن بنائے۔ پاکستان نے 90 رنز کی اوپننگ شراکت کے دم پر 50 اوور میں سات وکٹ پر 267 رن کا مشکل اسکور بنا یا۔ہندوستان کی جانب سے شوم ماوي نے 53 رن پر دو وکٹ، سوربھ دوبے نے 60 رن پر دو وکٹ اور ریتک شوقین نے 59 رن پر دو وکٹ لئے۔ پاکستان کی ٹیم گروپ اے میں تینوں میچ جیت کر چوٹی پر رہی تھی اور اس نے اپنی مضبوط مہم برقرار رکھتے ہوئے روایتی حریف ہندوستان کو شکست دے کر فائنل میں جگہ بنا لی۔ ہندوستانی ٹیم اپنے گروپ بی میں دوسرے مقام پر رہی تھی اور گروپ بی میں اسے بنگلہ دیش کے ہاتھوں چھ وکٹ سے شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

Loading...