آئی سی سی عالمی کپ میں کرکٹ میدان شرمسار، پاکستان - افغانستان کےمداحوں میں مارپیٹ اورگالیاں، پاکستانی صحافی کوبھی پیٹا گیا

آئی سی سی کرکٹ عالمی کپ 2019 میں افغانستان اورپاکستان کے درمیان مقابلے میں مداحوں کے درمیان گالی گلوچ اورلڑائی جھگڑے کی خبرسامنے آرہی ہے۔

Jun 29, 2019 06:35 PM IST | Updated on: Jun 29, 2019 06:56 PM IST
آئی سی سی عالمی کپ میں کرکٹ میدان شرمسار، پاکستان - افغانستان کےمداحوں میں مارپیٹ اورگالیاں، پاکستانی صحافی کوبھی پیٹا گیا

پاکستان کے خلاف میچ کے دوران افغانستان کے شائقین۔ تصویر: اے پی

آئی سی سی کرکٹ عالمی کپ 2019 میں افغانستان اورپاکستان کےدرمیان مقابلےمیں شائقین کے درمیان گالی گلوچ اورلڑائی جھگڑے کی خبرسامنے آرہی ہے۔ سوشل میڈیا پرپاکستانی صحافیوں نےٹوئٹ کرکےبتایا ہے کہ شائقین میں موجود افغانستان کے شائقین بہت گالیاں دے رہے ہیں اوربرا برتاوکررہے ہیں۔ ایک پاکستانی صحافی کوپیٹے جانے کی بھی خبرہے۔ پاکستانی صحافی زخرف خان نےٹوئٹ کرکےبتایا کہ افغانستان کے مداح اسٹیڈیم کے اندر اور باہرموجود پاکستانی مداحوں کوگالیاں دے رہے ہیں اوران پرحملے کررہے ہیں۔ انہوں نے ڈان ٹی وی کےاسپورٹس صحافی مخدوم ابوبکربلال کو بھی مارا۔

واضح رہے کہ گزشتہ کچھ دنوں میں پاکستان اورافغانستان کے درمیان کافی بیان بازی ہوئی ہے۔ افغانستان کرکٹ بورڈ کے سی ای اواسداللہ خان نے پاکستان کو مدد کی پیش کردی تھی۔ انہوں نے پاکستان کے ہندوستان سے ہارنے کے بعد کہا تھا کہ اگرپاکستان کوکھیل میں کسی بھی طرح کی مدد چاہئے تووہ تیارہیں۔

Loading...

دوسری جاب افغانستان -پاکستان کےمیچ کے دوران اسٹیڈیم میں ماحول کافی کشیدگی والا تھا۔ پاکستانی صحافی سازصادق نے بتایا کہ میدان کے اندراورباہرکافی خراب ماحول ہے۔ افغانستان اورپاکستان کے شائقین آپس میں لڑرہے ہیں۔ کچھ کوسیکورٹی اسٹاف نے میدان سے باہرنکال دیا ہے۔ وہیں ایک دیگرصحافی فیضان نے بھی ایسی ہی رپورٹ دی۔

انہوں نے سوشل میڈیا پرلکھا 'میں نے سینکڑوں بین الاقوامی میچ کورکئے ہیں، لیکن اتنا خراب برتاو کبھی نہیں دیکھا۔ نفرت واضح طورپرنظرآرہی ہے اورگالیاں دی جارہی ہیں۔ انہوں نے(افغان شائقین) پاکستانی صحافیوں کوبھی پریشان کیا۔ مخدوم ابوبکربلال سے میدان کے باہرہاتھا پائی کی گئی۔ اتنا تناوتوہندوستان اورپاکستان کے میچوں میں بھی نہیں ہوتا۔

واضح رہے کہ میچ شروع ہونے سے قبل پاکستان کے عظیم گیند باز شعیب اخترنے کہا کہ ہندوستان، افغانستان ٹیم کوبیٹنگ (بلے بازی) میں مضبوط نہیں کرپایا۔ یہی نہیں پاکستان کے سابق تیزگیند بازنےافغانستان ٹیم پرالزام لگایا کہ اگرافغانستان ٹیم کے سبھی کھلاڑیوں کے آئی ڈی کارڈ اچھی طرح چیک کئے جائیں توٹیم پرپابندی عائد ہوجائے گی۔ شعیب اخترنےکہا کہ افغان ٹیم کا گھریلومیدان کبھی پیشاور، راولپنڈی ہوتا تھا۔ ہم لوگ ان کے لڑکوں کو تیار کرتے تھے، لیکن آج وہ دہلی اورنوئیڈا چلےگئے ہیں۔ دہرہ دون ان کاہوم گراونڈ بن گیا ہے۔ ہندوستان نے ان پرکافی سرمایہ کاری کی ہے، لیکن وہ افغانستان ٹیم کوبلے بازی میں مضبوط نہیں کرپائے۔

Loading...