انگلینڈ سے پھر سپر اوور میں ہارا نیوزی لینڈ ، اب اس بڑے کھلاڑی نے اوپر والے سے مانگی مدد

ورلڈ کپ کے فائنل کے متنازع سپر اوور کے بعد آئی سی سی کے اس اصول پر سخت تنقید ہوئی تھی ، جس میں سپر اوور بھی ٹائی رہنے کے بعد باؤنڈري کاؤنٹ کا سہارا لیا گیا تھا ۔

Nov 10, 2019 08:37 PM IST | Updated on: Nov 10, 2019 08:37 PM IST
انگلینڈ سے پھر سپر اوور میں ہارا نیوزی لینڈ ، اب اس بڑے کھلاڑی نے اوپر والے سے مانگی مدد

انگلینڈ سے پھر سپر اوور میں ہارا نیوزی لینڈ ، اب اس بڑے کھلاڑی نے اوپر والے سے مانگی مدد

انگلینڈ نے ون ڈے ورلڈ کپ کے فائنل میں نیوزی لینڈ کو متنازع سپر اوور میں شکست دے کر پہلی بار ٹائٹل جیتا تھا ، لیکن اس مرتبہ اس نے نیوزی لینڈ کو اتوار کو کھیلے گئے پانچویں اور آخری ٹی -20 میچ میں صاف ستھرے انداز میں سپر اوور میں شکست دے کر پانچ میچوں کی سیریز 3-2 سے اپنے نام کر لی ۔ ورلڈ کپ کے فائنل کے متنازع سپر اوور کے بعد آئی سی سی کے اس اصول پر سخت تنقید ہوئی تھی ، جس میں سپر اوور بھی ٹائی رہنے کے بعد باؤنڈري کاؤنٹ کا سہارا لیا گیا تھا ۔ یعنی جس ٹیم نے اپنی مقرر اننگز میں زیادہ باؤنڈری لگائی ، وہ ٹیم فاتح بنی ۔ انگلینڈ نے اس بنیاد پر ورلڈ کپ جیتا۔

اس اصول کی بعد میں سخت تنقید ہوئی ، جس کی وجہ سے آئی سی سی کو سپر اوور کا یہ اصول تبدیل کرنے پر مجبور ہونا پڑا۔ نئے قوانین کے تحت اب سپر اوور بھی ٹائی رہنے پر سپر اوور دوبارہ سے کھیلا جائے گا۔ بارش سے متاثرہ اس دلچسپ مقابلے میں اوورز کی تعداد 11 کر دی گئی۔ نیوزی لینڈ نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے 11 اوور میں پانچ وکٹ پر 146 بنائے۔ جواب میں انگلینڈ کی ٹیم بھی متعین 11 اوورز میں سات وکٹ پر 146 رن ہی بنا سکی۔ انگلینڈ کو آخری اوور میں جیت کے لئے 16 رن بنانے تھے اور مقابلہ ٹائی ہو گیا۔

Loading...

اس کے بعد سپر اوور میں انگلینڈ نے 17 رن بنائے ، جبکہ نیوزی لینڈ کی ٹیم 8 رن ہی بنا سکی۔ انگلینڈ نے اس طرح سپر اوور میں ورلڈ کپ جیسی صورتحال نہیں بننے دی اور میچ جیت لیا۔ انگلینڈ نے سیریز میں پہلے ، چوتھے اور پانچویں میچ میں جیت درج کی ہے۔ جبکہ نیوزی لینڈ نے دوسرا اور تیسرا میچ جیتا۔ انگلینڈ کے جانی بيرسٹو کو مین آف دی میچ اور نیوزی لینڈ کے مشیل سیٹنر کو مین آف دی سیریز کو ایوارڈ ملا۔

نیوزی لینڈ کی اننگز میں مارٹن گپٹل کے 20 گیندوں پر تین چوکوں اور پانچ چھکوں کی مدد سے 50 اور کولن منرو کے 21 گیندوں پر دو چوکوں اور چار چھکوں کی مدد سے بنائے گئے 46 رنز بنائے۔ ٹم اسفرٹ نے 16 گیندوں پر ایک چوکے اور پانچ چھکوں کے دم پر 39 رنز بنائے۔ انگلینڈ جانب سے سام کیرن، ٹام کیرن، عادل راشد اور ثاقب محمود نے ایک ایک وکٹ لیا۔ انگلینڈ کے لئے جانی بيرسٹو نے 18 گیندوں پر دو چوکے اور پانچ چھکوں کی مدد سے 47، کپتان ایون مورگن نے 17، سیم کیرن نے 24 اور ٹام کیرن نے 12 رنز بنائے۔

انگلینڈ کی اس جیت نے نیوزی لینڈ کے زخم کو ایک مرتبہ پھر تازہ کردیا ۔ خاص طور پر جمی نیشم کے زخم کو جو ورلڈ کپ فائنل کے سپر اوور میں کریز پر تھے ۔ سپر اوور میں انگلینڈ کی جیت کے بعد جمی نیشم نے اس کہانی کو بدلنے کیلئے بھگوان سے دعا کی ۔ انہوں نے ٹویٹ کرکے کہا کہ کہانی بدلنے کا کوئی موقع ہے ۔

england vs New Zealand,Jimmy Neesham, sports news, cricket, जिम्मी नीशाम, इंग्लैंड बनाम न्यूजीलैंड, ‌क्रिकेट

Loading...