راجستھان: معصوم طالبہ کی عصمت دری معاملے میں ایک ملزم کو حراست میں لیا گیا

ٹونک ضلع میں اس گھنونی واردات کو کھیڑلی گاؤں میں اس وقت انجام دیا گیا جب ہفتہ کے روز دوپہر کو بچی اسکول سے اپنے گھر لوٹ رہی تھی۔

Dec 02, 2019 12:37 PM IST | Updated on: Dec 02, 2019 12:55 PM IST
راجستھان: معصوم طالبہ کی عصمت دری معاملے میں ایک ملزم کو حراست میں لیا گیا

راجستھان: 6 سال کی بچی کی آبروریزی کے بعد اس کا گلا دبا کر قتل

جےپور۔ راجستھان کے ضلع ٹونک میں علی گڑھ تھانہ علاقے کے کھیڑلی گاؤں میں چھ سالہ معصوم بچی کی عصمت دری اور قتل کرنے کے معاملے میں آج ایک ٹرک ڈرائیور کو حراست میں لیا گیا ہے۔ علی گڑھ تھانہ انچارج رام کشن نے بتایا کہ اس معاملے میں ٹرک ڈرائیور مہیندر مینا عرف دھولو کو حراست میں لیا گیا ہے اور اس سے معاملے کی پوچھ گچھ کی جا رہی ہے۔ مہیندر کھیڑلی گاؤں کا ہی رہنے والاہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ ہفتے کو اسکول سے گھر لوٹتے وقت معصوم بچی کو ٹافی کا لالچ دے کر اٹھا لیا گیا اور عصمت دری کرکے اسکول بیلٹ سے گلا گھونٹ کر اسے قتل کردیا گیا تھا۔ اس کے بعد اتوار کی صبح گاؤں میں جھاڑیوں میں اس کی لاش برآمد ہوئی۔ جائےوقوع کے آس پاس کچوری اور ٹافی کی پنیاں،گٹکھے کے پیکٹ وغیرہ بھی ملے ہیں۔

Loading...

اطلاعات کے مطابق، بچی ٹونک کے کھیڑلی گاؤں میں اپنے دادا۔ دادی کے پاس رہتی تھی۔ بچی کے والدین مدھیہ پردیش کے شیوپور ضلع کے مان پور تھانہ علاقہ کے ایک گاؤں میں رہتے ہیں۔ بچی کے قتل کے بعد اطلاع ملتے ہی والدین کے پیروں تلے زمین کھسک گئی۔ راتوں رات خبر ملتے ہی وہ ٹونک کے لئے روانہ ہو گئے۔

وزیر اعلیٰ اشوک گہلوت نے اس واقعہ کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ مجرموں کو بخشا نہیں جائے گا۔

یو این آئی، اردو کے ان پٹ کے ساتھ

Loading...