ریپ کی شکار 6 سالہ بچی کے جسم کے ہرحصے میں لگے ٹانکے، درد سے رونے پر بھی نہیں نکل رہی آواز

بچی کو دیکھنے اسپتال پہنچی دہلی خواتین کمیشن کی صدر سواتی مالیوال نے بتایا کہ انہوں نے گزشتہ 4 سال میں ریپ کی شکار زندہ کوئی ایسی بچی نہیں دیکھی جیسی اس کی حالت کر دی گئی ہے۔

Jul 17, 2019 11:49 AM IST | Updated on: Jul 17, 2019 02:20 PM IST
ریپ کی شکار 6 سالہ بچی کے جسم کے ہرحصے میں لگے ٹانکے، درد سے رونے پر بھی نہیں نکل رہی آواز

علامتی تصویر

دہلی کے صفدر جنگ اسپتال میں ریپ متاثرہ 6 سال کی ایک معصوم بچی کو بھرتی کرایا گیا ہے۔ اتوار کی رات ایک رکشے والے نے اس پچی کو اپنی ہوس کا شکار بنایا تھا۔ ڈاکٹروں کے مطابق جب بچی کو اسپتال لایا گیا تھا تو اس کی حالت اتنی خراب تھی کہ اس کے جسم کے ہر حصے پر ٹانکے لگانے پڑے۔ آج بدھ کو بچی اپنی آنکھ بھی بڑی مشکل سے کھول پا رہی ہے۔ اسے اتنا درد ہو رہا ہے کہ رونے پر اس کی آواز بھی نہیں نکل پارہی ہے۔ بچی کے جسم کو پوری طرح سے ٹھیک ہونے میں کم از کم ایک سال لگے گا۔

بچی کو دیکھنے اسپتال پہنچی دہلی خواتین کمیشن کی صدر سواتی مالیوال نے بتایا کہ انہوں نے گزشتہ 4 سال میں ریپ کی شکار زندہ کوئی ایسی بچی نہیں دیکھی جیسی اس کی حالت کر دی گئی ہے۔ ایسا لگ رہا ہے مانو بچی کے جسم کو دھاگے سے سل دیا گیا ہے۔

سوئی ہوئی بچی کو رکشہ والا اٹھاکر لے گیا تھا۔

اطلاعات کےمطابق بچی جنک پوری کی رہنے والی ہے۔ اتوار کی رات وہ اپنے گھر والوں کے ساتھ سوئی ہوئی تھی۔ تبھی ملزم رکشہ والا ارون اسے اٹھاکر لے گیا۔ اس نے بچی کا ریپ کیا اور پھر اسے مارنے کی کوشش کی لیکن اس دوران اسے کچھ لوگوں نے دیکھ لیا۔ واقعے کی خبر لگتے ہی بھیڑ جمع ہوگئی۔

Loading...

موقع پر پہنچی پولیس نے ملزم رکشہ والے کو گرفتار کر لیا۔ وہیں جانکاروں کا کہنا ہے کہ بچی کی حالت کافی نازک بنی ہوئی ہے۔ بتادیں کہ کچھ دن پہلے دوارکا میں بھی اسی طرح سے ایک بچی درندگی کا شکار ہوئی تھی۔ ڈاکٹروں کو مجبور ہوکر انفیکشن پھیلنے کے ڈر سے بچی کے دو حصوں کو نکالنا پڑا تھا۔

Loading...