رنگین مزاج پروفیسر کی گندی تصویر! ٹیوشن کے بہانے لڑکیوں کے ساتھ کرتا تھا یہ شرمناک حرکت

شیتل پرساد صاحب گنج کے ایک پرائیویٹ کالج میں کامرس کا ٹیچر ہے اور وہ اپنی رہائش گاہ پر ہی طلبا وطالبات کو ٹیوشن بھی پڑھاتا ہے۔

Nov 14, 2019 09:35 AM IST | Updated on: Nov 14, 2019 10:24 AM IST
رنگین مزاج پروفیسر کی گندی تصویر! ٹیوشن کے بہانے لڑکیوں کے ساتھ کرتا تھا یہ شرمناک حرکت

ملزم پروفیسر کو گرفتار کرنے پہنچی پولیس

بہار کے مظفرپور میں ایک پروفیسر کی شرمناک کرتوت سامنے آئی ہے۔ ملزم پروفیسر کا نام ڈاکٹر شیتل پرساد ہے جو صدر تھانہ کے سدھارتھ پورم میں رہتا ہے۔ شیتل پرساد صاحب گنج کے ایک پرائیویٹ کالج میں کامرس کا ٹیچر ہے اور وہ اپنی رہائش گاہ پر ہی طلبا وطالبات کو ٹیوشن بھی پڑھاتا ہے۔ اس کے بدلے وہ اسٹوڈینٹس سے اچھی خاصی رقم بھی لیتا ہے۔ لیکن اس کا کردار اتنا گندا ہے کہ پڑھاتے وقت اس کی نظر سوالوں سے زیادہ طالبات کے جسم پر ہوتی ہے۔

بیوی کی غیر موجودگی میں کی زبردستی کی کوشش

پروفیسر کے کرتوتوں کی شکار ایسی طالبات کا ایک طویل  سلسلہ ہے۔ لیکن استحصال کی شکار ان طالبات میں سے دو ایسی طالبات سامنے آئی ہیں جنہوں  نے پروفیسر کو سبق سکھانے کی ٹھان لی۔ منگل کو ان میں سے ایک طالبہ پروفیسر کے گھر پہنچی اور اس کی بیوی اس وقت گھر پر نہیں تھی۔ اس کا فائدہ اٹھاکر ملزم شیتل پرساد نے طالبہ کے ساتھ فحش حرکتیں کرنی شروع کردی لیکن طالبہ ڈری نہیں۔ اس نے ڈرنے اور گھبرانے کے بجائے اس کی کرتوتوں کو موبائل فون میں ریکارڈ کرلیا۔ اس دوران پروفیسر کا حیوان چہرہ اجاگر ہوگیا۔ جب تک متاثرہ طالبہ پروفسر کے گھر میں تھی تب تک دوسری متاثرہ گھر کے باہر موجود رہی۔

Loading...

علامتی تصویر طالبات میں سے دو ایسی طالبہ سامنے آئی ہیں جس نے پروفیسر کو سبق سکھانے کی ٹھان لی۔ منگل کو ان میں سے ایک طالبہ پروفیسر کے گھر پہنچیےو اس کی بیوی اس وقت گھر پر نہیں تھی۔ اس کا فائدہ اٹھاکر ملزم شیتل پرساد نے طالبہ کے ساتھ فحش حرکتیں کرنی شروع کردی

واقعے والی شام کو دونوں لڑکیوں نے اپنے دیگر ساتھیوں کے ساتھ مل کر پروفیسر کے گھر پر دھاوا بول دیا۔ حقیقت جاننے کے بعد سدھارتھ پورم محلے کے لوگ بھی جمع ہوگئے۔ ڈر کے مارے ملزم پروفیسر اپنے گھر میں چھپ گیا۔ تقریبا دو گھنٹے تک چلے ڈرامے کے بعد صدر تھانہ پولیس انسپیکٹر میتھیلیش جھا اور قاضی محمد پور تھانہ انسپیکٹر شجاع الدین موقع پر پہنچے۔ پولیس کو دیکھ کر ملزم پروفیسر گھر کے اندر والے کمر میں جاکر چھپ گیا۔ تقریبا ایک گھنٹے کی مشقت کے بعد پولیس اس کے گھر میں داخل ہوپائی۔

ریکارڈنگ دیکھتے ہی کھلی پول۔۔

اندر بیٹھے پروفیسر سے جب پولیس نے سوال۔جواب کیا تو کہنے لگا کہ بقایہ ٹیوشن فیس مانگنے پر طالبات نے اسے پھنسایا ہے۔ لیکن پولیس کی موجودگی میں پروفیسر نے اپنے کرتوتوں کی ریکارڈنگ دیکھی تو زبان بند ہوگئی۔ اس کے بعد بڑی مشقت سے شیتل پرساد کے گھر میں داخل ہوئی پولیس اسے پکڑ کر کھینچتے ہوئے گاڑی میں بٹھاکر اپنے ساتھ لے گئی۔ اس واقعے سے محلے میں سنسنی پھیل گئی ہے۔ صدر تھانہ انسپکٹر متھلیش جھا نے بتایا کہ متاثرہ کے بیان پر ملزم پروفیسر کے خلاف ایف آئی آر درج کی گئی ہے۔ پولیس اسے سخت سزا دلانے کی کوشش کرے گی۔

Loading...