ہم جنس پرست پارٹنر کے خواتین سے بھی تھے ناجائز تعلقات ، سچائی سامنے آئی تو بوائے فرینڈ نے اٹھایا یہ بڑا قدم

اترپردیش کے دین دیال اپادھیائے نگر میں اترپردیش پولیس نے ایک ہم جنس پرست پر ہوئے جان لیوا حملہ کا معمہ حل کرلینے کا دعوی کیا ہے ۔

Oct 09, 2019 09:54 PM IST | Updated on: Oct 09, 2019 09:54 PM IST
ہم جنس پرست پارٹنر کے خواتین سے بھی تھے ناجائز تعلقات ، سچائی سامنے آئی تو بوائے فرینڈ نے اٹھایا یہ بڑا قدم

علامتی تصویر

اترپردیش کے دین دیال اپادھیائے نگر میں اترپردیش پولیس نے ایک ہم جنس پرست پر ہوئے جان لیوا حملہ کا معمہ حل کرلینے کا دعوی کیا ہے ۔ اس سلسلہ میں پولیس نے دو نوجوانوں کو گرفتار کیا ہے ، جس کے پاس سے اسلحہ اور کارتوس بھی برآمد ہوئے ہیں ۔ پولیس کا کہنا ہے کہ ہم جنس پرستی کی وجہ سے ملزم نے گولی ماری تھی ۔

دراصل 14 ستمبر کی رات دین دیال اپادھیائے نگر کوتوالی حلقہ کے کھیوا منڈی میں ایک موبائل سیلس مین کو گولی مارے جانے کی خبر آئی تھی ، جس کی شناخت انکت جیسوال کے طور پر ہوئی اور اس کے گھر کے سامنے گولی ماری گئی تھی ۔ لیکن کافی دن گزر جانے کے بعد بھی پولیس اس معاملہ کو حل کرنے میں ناکام رہی ۔ اب اس معاملہ میں ملزم نوجوان شرون گپتا کو گرفتار کیا گیا ہے ۔ پولیس کے مطابق انکت اور شرون گپتان ہم جنس پرست تھے ۔

Loading...

علاوہ ازیں دیگر کئی لڑکیوں کے ساتھ بھی جنسی تعلقات تھے ۔ ہم جنس پرستی پر مبنی تعلقات کی وجہ سے سماج میں بے عزتی کے ڈر سے انکت ، شرون سے اپنا پیچھا چھڑانا چاہتا تھا اور یہ بات شرون کو ناگوار گزری اور اسی وجہ سے ملزم نے انکت کو گولی ماری تھی ۔ گرفتار نوجوان کے پاس سے طمنچہ اور کارتوس بھی برآمد کیا گیا ہے ۔ فی الحال پولیس نے ملزم کے خلاف معاملہ درج کرکے اس کو جیل بھیج دیا ہے ۔

Loading...