!ایکسکلوزیو: ہنی ٹریپ میں پھنسے مدھیہ پردیش کے سابق ایم پی کی بنائیں 30 فحش سی ڈیز

بتایا جا رہا ہے کہ سیاسی پارٹی کی تنظیم کے بڑے لیڈروں کے ذریعے بھوپال کی خاتون ملزم سے سابق پی ایم کی پہچان ہوئی تھی۔ اس کےبعد ملزم خاتون اپنے این جی او کے کام سے سابق ایم پی سے کئی مرتبہ ملی۔

Oct 01, 2019 10:10 AM IST | Updated on: Oct 01, 2019 10:10 AM IST
!ایکسکلوزیو: ہنی ٹریپ میں پھنسے مدھیہ پردیش کے سابق ایم پی کی بنائیں 30 فحش سی ڈیز

علامتی تصویر

بھوپال: مدھیہ پردیش کے ہائی پروفائل ہنی ٹریپ معاملے میں پھنسے سابق ایم پی کی فحش سی ڈی کو لیکر چونکانے والی معلومات سامنے آئی ہیں۔ بتایا جارہا ہے کہ اس سابق ایم پی کی ایک نہیں دو نہیں بلکہ پوری تیس سی ڈی بنائی گئی تھیں۔ ان سی ڈی کے ذریعے ہی ملزم خاتون بار۔بار انہیں بلیک میل کر رہی تھی۔ لوک سبھا انتخابات سے پہلے ٹکٹ کٹنے کے ڈر سے سابق  ایم پی نے ملزم خاتون کو دبئی ٹور پر بھیج دیا تھا۔

ذرائع کے مطابق، جانچ کے دوران ایک ایسی بات سامنے آئی ہے جس سے جانچ ایجنسی بھی سکتے میں ہے۔ پتہ چلا ہے کہ سابق  ایم پی کی سی ڈی ایک مرتبہ نہیں بلکہ کئی مرتبہ بنائی گئی ہے۔ انہیں سی ڈی کے ذریعے سابق ایم پی سے سب سے پہلے دو کروڑ کی رقم مانگی گئی۔ یہ سلسلہ یہیں نہیں تھما۔ کل تیس فحش سی ڈی بننے کی وجہ سے ایم پی کو بار۔بار بلیک میل کیا گیا۔ ایک مرتبہ انہوں نے خود کشی تک کی کوشش کی تھی۔ ایک سینئر لیڈر کی مداخلت کے بعد ایم پی صدمے سے ابھر تو گئے لیکن بھوپال کی خاتون ملزم نے ان کا پیچھا نہیں چھوڑا۔ ملزم خاتون نے انہیں بار۔بار بلیک میل کیا اور این جی او کیلئے کئی سرکاری کام بھی کرائے۔ بھوپال سے گرفتار اس خاتون ملزم سے ایس آئی ٹی پوچھ گچھ کر رہی ہے۔

بتایا جا رہا ہے کہ سیاسی پارٹی کی تنظیم کے بڑے لیڈروں کے ذریعے بھوپال کی خاتون ملزم سے سابق پی ایم کی پہچان ہوئی تھی۔ اس کےبعد ملزم خاتون اپنے این جی او کے کام سے سابق ایم پی سے کئی مرتبہ ملی۔ اسی دوران سابق ایم پی خاتون کے جال میں بری طرح پھنس گئے اور ان کی ایک کے بعد ایک کرکے پوری تیس فحش سی ڈی بنا دی گئیں۔ بلیک میل ہوئے سابق ایم پی پہلی مرتبہ پیچھا چھڑانے کیلئے ملزم خاتون کو پورے دو کروڑ روپئے دئے۔

Loading...

خودکشی کی کوشش

جب ملزم خاتون نے تیس سی ڈی بنائے جانے کی بات سابق ایم پی کو بتائی تو انہوں نے بدنامی کے ڈر سے خود کشی کرنے کی کوشش کی تھی۔ خودکشی کی کوشش کے اس واقعہ کے بعد ملزم خاتون کچھ مہینوں تک خاموش رہی اور اس کے بعد اس نے ایک بار پھر سابق رکن پارلیمنٹ کو بلیک میل کرنا شروع کر دیا۔ رکن پارلیمنٹ رہتے ہوئے نیتا جی نے ملزم خاتون کے این جی او کو مالی مدد دلائی اور کئی سرکاری کام کاج بھی کرائے۔

(رپورٹ، منوج راٹھور)

 

 

Loading...