شرمناک ! کوچنگ آنے والی ہر طالبہ کو اس کام کیلئے آزماتا تھا یہ پروفیسر، اب ہوئی یہ حالت

نیوز 18 پر خبر دکھائے جانے کے بعد پروفیسر جیل تو چلا گیا ، لیکن اس کی شکار بنیں دیگر لڑکیاں بھی اب سامنے آرہی ہیں ۔

Nov 15, 2019 11:16 PM IST | Updated on: Nov 15, 2019 11:31 PM IST
شرمناک ! کوچنگ آنے والی ہر طالبہ کو اس کام کیلئے آزماتا تھا یہ پروفیسر، اب ہوئی یہ حالت

کوچنگ آنے والی ہر طالبہ کو اس کام کیلئے آزماتا تھا یہ پروفیسر، اب ہوئی حالت ، علامتی تصویر ۔

طالبات کے جنسی استحصال کے ملزم پروفیسر ڈاکٹر شیتل پرساد کی گناہوں کی کہانی اب رفتہ رفتہ کھل رہی ہیں ۔ نیوز 18 پر خبر دکھائے جانے کے بعد پروفیسر جیل تو چلا گیا ، لیکن اس کی شکار بنیں دیگر لڑکیاں بھی اب سامنے آرہی ہیں ۔ طالبات کا جنسی استحصال کرنے والے ملزم پروفیسر کی برادری بھی اس کی مخالفت میں اتر گئی ہے اور سخت سزا کا مطالبہ کررہی ہے ۔

بتادیں کہ بہار کے مظفر پور کے پروفیسر شیتل پرساد کی کرتوتوں کا نیوز 18 نے انکشاف کیا تھا ۔ پروفیسر کو جیل بھیجے جانے کے بعد وہ طالبات بھی نیوز 18 کے سامنے کھل کر سامنے آئی ہیں ، جنہوں نے پردے کے پیچھے رہتے ہوئے نہ صرف متاثرہ کی مدد کی بلکہ وحشی پروفیسر کو جیل کی سلاخوں کے پیچھے بھی بھیجوایا ۔

Loading...

یہ لڑکیاں مظفرپور میں جرنلزم کی پڑھائی کررہی ہیں اور پروفیسر کی فحش حرکتوں کا شکار ہوئی طالبات ان کی دوست ہیں ۔ انہیں لڑکیوں کی مدد سے اس نے اپنے پروفیسر سے تنہا مقابلہ کرنے کا رسک لیا ۔ نیوز 18 پر خبر دیکھنے کے بعد ان طالبات نے رابطہ کیا تو انہوں نے کچھ چونکانے والی باتیں بھی بتائیں ۔

muzaffar pur professor case

دراصل پروفیسر شیتل پرساد کوچنگ پڑھنے والی طالبات کو آزماتا تھا ۔ کچھ طالبات پڑھائی چھوڑ دیتی تھیں اور کچھ پڑھائی کیلئے ظلم برداشت کرتی تھیں ۔ یہ سلسلہ سالوں سے چل رہا تھا اور شیتل پرساد وقت کے ساتھ مزید ہٹ دھرم بنتا جارہا تھا ۔ اس معاملہ میں طالبات قصوروار کو سخت سے سخت سزا دینے کا مطالبہ کررہی ہیں ۔

ان طالبات کی بہادری کی کہانی جب کالج میں پہنچی ، تو ان کے ٹیچروں نے انہیں اپنے دفتر میں بلایا اور طالبات کی تعریف کی ۔ ایس ایس پی جینت کانت نے بھی واضح کردیا ہے کہ قصوروار خواہ کتنا بھی با اثر کیوں نہ ہو ، طالبات کا جنسی استحصال کرنے والے بخشے نہیں جائیں گے ۔

Loading...