حاملہ بھابھی سے جسمانی تعلقات بنانا چاہتا تھا دیور ، انکار کرنے پر کردی یہ وحشیانہ حرکت

نوجوان پر الزام ہے کہ اس نے حاملہ بھابھی کے ساتھ جسمانی تعلقات قائم کرنے کی کوشش کی ۔ تاہم جب بھابھی نے انکار کردیا تو اس کا قتل کردیا ۔

Sep 11, 2019 11:04 PM IST | Updated on: Sep 11, 2019 11:04 PM IST
حاملہ بھابھی سے جسمانی تعلقات بنانا چاہتا تھا دیور ، انکار کرنے پر کردی یہ وحشیانہ حرکت

علامتی تصویر

پنجاب کے برنالا میں ایک دیور نے اپنی بھابھی کو موت کے گھاٹ اتار دیا ۔ نوجوان پر الزام ہے کہ اس نے حاملہ بھابھی کے ساتھ جسمانی تعلقات قائم کرنے کی کوشش کی ۔ تاہم جب بھابھی نے انکار کردیا تو اس کا قتل کردیا ۔ پولیس نے ملزم کے خلاف کیس درج کرکے معاملہ کی جانچ شروع کردی ہے ۔

یہ پورا واقعہ گاوں گنمٹی میں پیش آیا ، جہاں ایک 30 سالہ حاملہ خاتون کی موت ہوگئی ۔ خاتون کے والد نے اس کے دیور پر الزام لگایا ہے کہ وہ اپنی بھابھی کے ساتھ جسمانی تعلقات قائم کرنا چاہتا تھا ۔ تاہم اس میں ناکام ہونے پر نوجوان اور اس کی ماں نے سر پر مار کر اس کا قتل کردیا ۔ مرنے والی خاتون چھ ماہ کی حاملہ تھی ۔

Loading...

تھانہ ٹھلی وال کی پولیس نے پوسٹ مارٹم کرواکر جانچ شروع کردی ہے ۔ متاثرہ خاتون کے والد کے مطابق اس کی بیٹی کی شادی تقریبا 8 سال پہلے ہوئی تھی ۔ اب اس کی دو بیٹیاں ہیں ، جس میں سے ایک کی عمر پانچ سال اور دوسری کی سات سال ہے ۔ متاثرہ خاتون چھ ماہ کی حاملہ تھی ۔ باپ کے مطابق اس کا 25 سالہ دیور نشیڑی ہے اور وہ جسمانی تعلقات قائم کرنے کیلئے اکثر لڑائی کرتا تھا ۔

منگل کی صبح تقریبا 8 بجے جب گھر پر کوئی نہیں تھا ، تو اس کے دیور نے جسمانی تعلقات قائم کرنے کی کوشش کی ۔ مگر جب خاتون نے اس کی مخالفت کی تو اس نے لکڑی کے گھوٹنے سے پٹائی شروع کردی ۔ اسی دوران شور سن کر اس کی ساس بھی آگئی ۔ اس نے بھی پٹائی شروع کردی ، جس کی وجہ سے اس کی موت ہوگئی ۔

تھانہ محل کلاں کے انچارج انسپکٹر گرپریت سنگھ نے بتایا کہ مرنے والی خاتون کے والد کے بیان کی بنیاد پر ملزمین کے خلاف کیس درج کرنے کی کارروائی شروع کردی گئی ہے اور ان کی گرفتاری کیلئے پولیس کوشش کررہی ہے ۔

Loading...