کوچنگ جارہی طالبہ کا کیا اغوا ، چھ گھنٹوں تک کار میں کی اجتماعی آبروریزی اور پھر... ۔

راجستھان میں دوسا کے لال سوٹ میں ایک کوچنگ کی طالبہ کی کار میں اجتماعی آبروریزی کا معاملہ سامنے آیا ہے ۔

Nov 04, 2019 05:18 PM IST | Updated on: Nov 04, 2019 05:18 PM IST
کوچنگ جارہی طالبہ کا کیا اغوا ، چھ گھنٹوں تک کار میں کی اجتماعی آبروریزی اور پھر... ۔

علامتی تصویر

راجستھان میں دوسا کے لال سوٹ میں ایک کوچنگ کی طالبہ کی کار میں اجتماعی آبروریزی کا معاملہ سامنے آیا ہے ۔ ملزمین طالبہ کا اغوا کرنے کے بعد تقریبا چھ گھنٹوں تک کار کو سڑک پر دوڑاتے رہے اور اس کی اجتماعی آبروریزی کرتے رہے ۔ اس دوران ملزمین نے طالبہ کی آنکھوں پر پٹی باندھ دی تھی ۔ بعد میں جان سے مارنے کی دھمکی دے کر اس کر سڑک پر چھوڑ دیا ۔

معاملہ کی تفیش کررہی لال سوٹ پولیس کے مطابق یہ واقعہ تین دن پہلے یعنی یکم نومبر کو پیش آیا ۔ متاثرہ اپنے گاوں سے صبح پانچ بجے کوچنگ کیلئے نکلی تھی ۔ ہودایلی موڑ کے نزدیک کار سوار تین نوجوانوں نے طالبہ کو کھینچ کر کار میں بیٹھا لیا ۔ ملزمین نے طالبہ کی آنکھوں پر اس کا ہی دوپٹہ باندھ دیا تاکہ وہ ان کو پہچان نہ سکے ۔ اس کے بعد ملزمین کئی کلو میٹر تک متاثرہ کو کار میں گھماتے رہے اور اس کی آبروریزی کرتے رہے ۔

Loading...

پولیس نے متاثرہ کی شکات پر تینوں ملزمین کو گرفتار کرلیا ہے ۔ پولیس نے تینوں کے خلاف معاملہ درج کرلیا ہے ۔ بتایا جارہا ہے کہ تینوں ملزمین تقریبا چھ گھنٹے تک یرغمال بنا کر طالبہ کی آبروریزی کرتے رہے ۔ دوپہر کے وقت ملزمین نے متاثرہ کو لال سوٹ شہر کے گنگاپور روڈ پر چھوڑ دیا ۔ ملزمین نے جاتے وقت متاثرہ کو دھمکی دی کہ اگر اس نے اس واقعہ کے بارے میں کسی کو بتایا تو اس کو جان سے مار دیا جائے گا ۔

ڈری سہمی طالبہ کسی طرح گھر پہنچی اور پھر اہل خانہ کو آپ بیتی بتائی ۔ اس کے بعد متاثرہ نے لال سوٹ تھانہ میں تینوں ملزمین کے خلاف اجتماعی آبروریزی کا کیس درج کرایا ۔

Loading...