شادی شدہ بیٹی کی آبروریزی کرتا تھا سوتیلا باپ ، ماں بھی دیتی تھی ساتھ ، اب ملی یہ بڑی سزا

بیٹی کی ماں اور باپ اس کو بڑی رقم لے کر کسی کو فروخت کرنے کی تیاری میں بھی تھے ۔

Nov 03, 2019 02:44 PM IST | Updated on: Nov 03, 2019 02:44 PM IST
شادی شدہ بیٹی کی آبروریزی کرتا تھا سوتیلا باپ ، ماں بھی دیتی تھی ساتھ ، اب ملی یہ بڑی سزا

علامتی تصویر

سوتیلا باپ شادی شدہ بیٹی کی آبروریزی کرتا تھا ۔ اتنا ہی نہیں بیٹی کی ماں اور باپ اس کو بڑی رقم لے کر کسی کو فروخت کرنے کی تیاری میں بھی تھے ۔ تین سال سے زائد پرانے اس معاملہ میں ہفتہ کو اے ڈی جے پروین ورما نے فیصلہ سناتے ہوئے سوتیلے باپ کو قصوروار قرار دیا اور اس کو 10 سال جیل کی سزا سنائی ۔ اس کے ساتھ ہی 10 ہزار روپے کا جرمانہ بھی عائد کیا ۔ اس سلسلہ میں پراسکیوٹر کی جانب سے 10 گواہ اور 16 دستاویزات پیش کئے گئے تھے ۔

آٹھ مئی 2016 کو راجستھان کے راجلدیسر تھانہ میں متاثرہ نے رتن گڑھ تحصیل کے ایک گاوں میں رہنے والے اپنے سوتیلے باپ روپا رام میگھوال کے خلاف آبروریزی کا مقدمہ درج کرایا تھا ۔ اے پی پی مہاویر سنگھ راٹھور نے بتایا کہ متاثرہ نے اپنی شکایت میں بتایا تھا کہ اس کے والد کی موت اس وقت ہوگئی تھی جب وہ چار سال کی تھی ۔ بعد میں ماں روپا رام کے ساتھ رہنے لگی ۔

Loading...

سوتیلے باپ نے 2015 میں اس کی شادی رتن گڑھ تحصیل کے ہی ایک گاوں میں کروادی ، مگر سازش کے تحت متاثرہ کو سسرال نہیں جانے دیا ۔ سوتیلے باپ نے اس کے شوہر اور سسر وغیرہ کے خلاف جہیز کا جھوٹا مقدمہ درج کروادیا ۔ بعد میں سوتیلا باپ متاثرہ کے ساتھ فحش حرکتیں کرنے لگا اور جب اس نے اپنی ماں کو اس بارے میں بتایا ، تو ماں اور سوتیلے باپ نے مل کر متاثرہ کی پٹائی کی ۔

سوتیلے باپ نے کئی مرتبہ اس کی آبروریزی کی اور کسی کو بتانے پر جان سے مارنے کی دھمکی دینے لگا ۔ آبروریزی بعد سوتیلا باپ اور اس کی ماں متاثرہ کو کسی کے ہاتھوں فروخت کرکے بڑی رقم حاصل کرنا چاہتے تھے ، لیکن متاثرہ نے اس کی جم کر مخالفت کی ، جس کی وجہ سے ایسا نہیں ہوسکا ۔

Loading...