کٹھوعہ کیس: ملزمین کے وکیل کا متنازعہ بیان "خاتون ہے کتنا دماغ ہو گا اس میں"۔

جموں و کشمیر کے کھٹوعہ میں آٹھ سال کی بچی کے ساتھ اجتماعی عصمت دری اور قتل کے معاملے میں ملزمین کے وکیل نے پو لیس جانچ پر سوال اٹھاتے ہوئے متنازعہ بیان دیا ہے۔

Apr 18, 2018 05:03 PM IST | Updated on: Apr 18, 2018 05:03 PM IST
کٹھوعہ کیس: ملزمین کے وکیل کا متنازعہ بیان

جموں و کشمیر کے کھٹوعہ میں آٹھ سال کی بچی کے ساتھ  اجتماعی عصمت دری اور قتل کے معاملے میں ملزمین کے وکیل نے پو لیس جانچ پر سوال اٹھاتے ہوئے متنازعہ بیان دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہاں پوری جانچ ایک خاتون افسر کی قیادت میں ہوئی ہے اور کیس کی جانچ کر نا ان کی سمجھ سے باہر  کی  بات ہے۔

وکیل انکر شرما اس معاملے کے آٹھ میں پانچ ملزمین کے وکیل کے طور پر پیش ہوئے۔انہوں ںے نیوز 18 سے کہا کہ جانچ آفسر خاتون ہے، نئ ہیں اور انہیں کسی نے مس گائڈ کردیا رپورٹ کے مطابق جانچ کے لیے قائم  ایس آئی ٹی کی  واحد خاتون آفسر شویتانبری شرما کو اس سے پہلے بھی کئی پر شانیوں کاسامنا کر نا پڑاتھا۔

Loading...

بچائو فریق کے وکیل انکر شرما نے منگل کو کہا ،شویتا نبری کیا ہے،لڑکی ہے، اس کا کتنا ہی دماغ ہوگا۔ وہ نئی آفسر ہے کسی نے جھوٹے ثبوٹ دکھا کر یقین دلا دیاکہ حادثہ اس طرح سے ہوا ہے۔ انہوں نے آگے کہا کہ پو لیس آفسراور بیوروکریٹس صرف کٹھ پتلیاں ہیں، اگر انہیں  اتنی ہی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑتا تو انہوں نے پہلے اپنےسنیئر آفسروں کو اس کے بارے میں بتایا کیوں نہیں۔

شرمانے کہا کہ  یہ پو ری جانچ من گھڑت ہے کیو ں کہ اپنی مرضی کے مطابق نتیجے کے لئے گواہوں کو متاثر کیاگیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ قریب 40،سے 50 لوگوں نے کہا کہ اس نے کرائم  برانچ کے زریعہ اس لئے متاثر کیا  گیا، وہ جیسا کرائم  برانچ کے آفسر چاہتے ہیں  ویسا بیان دے دیں۔

Loading...