پرنسپل اور ٹیچر نے مل کر کی کے جی ٹیچر کی اجتماعی آبروریزی ، حاملہ ہونے پر اس طرح کھلا راز

اترپردیش کے فیروز آباد ضلع میں ایک پرائیویٹ اسکول کے پرنسپل اور ساتھی ٹیچر کے ذریعہ کے جی کی ٹیچر کی اجتماعی آبروریزی کا سنسنی خیز معاملہ سامنے آیا ہے ۔

Sep 18, 2019 07:33 PM IST | Updated on: Sep 18, 2019 07:33 PM IST
پرنسپل اور ٹیچر نے مل کر کی کے جی ٹیچر کی اجتماعی آبروریزی ، حاملہ ہونے پر اس طرح کھلا راز

علامتی تصویر

اترپردیش کے فیروز آباد ضلع میں ایک پرائیویٹ اسکول کے پرنسپل اور ساتھی ٹیچر کے ذریعہ کے جی کی ٹیچر کی اجتماعی آبروریزی کا سنسنی خیز معاملہ سامنے آیا ہے ۔ اس معاملہ کا انکشاف اس وقت ہوا جب نابالغ ٹیچر کو 21 ہفتہ کے حمل کا پتہ چلا ۔ اہل خانہ کی تحریر پرپولیس نے ملزمین کے خلاف پوکسو ایکٹ ، اجتماعی آبروریزی اور آئی پی سی کی دیگر دفعات کے تحت مقدمہ درج کرلیا ہے ۔ پولیس مفرور ملزمین کی گرفتاری کیلئے دبش دے رہی ہیں ۔

متاثرہ کے اہل خانہ کے مطابق 16 سال کی متاثرہ لڑکی نے ایک سال پہلے مصطفی آباد کے پرائیویٹ اسکول میں بطور کے جی ٹیچر جوائن کیا تھا ۔ گزشتہ مئی میں اسکول کے پرنسپل اور ٹیچر نے اس کی اجتماعی آبروریزی کی ۔ واردات کے بعد ملزمین نے اس کو جان سے مارنے کی دھمکی بھی دی ۔ دھمکی کے ڈر سے متاثرہ نے کسی کو کچھ نہیں بتایا ۔

Loading...

متاثرہ کے بھائی نے بتایا کہ واردات والے دن ملزمین نے اس کی بہن کو ٹیچر ٹریننگ کے نام پر زبردستی اسکول میں روک لیا اور اس کے بعد جب اسکول کے دیگر اسٹاف اور ٹیچر چلے گئے تو اس کی اجتماعی آبروریزی کی گئی ۔ متاثرہ نے 21 ہفتوں تک کسی کو کچھ نہیں بتایا کیونکہ اس کو مسلسل دھمکی دی جارہی تھی ۔ ایف آئی آر کے بعد بھی ملزمین اس کو دھمکی دے رہے ہیں ۔

شکوہ آباد تھانہ کے ایس ایچ او اجے کشور نے بتایا کہ ملزمین کی گرفتاری کیلئے دبش دی جارہی ہے ۔ لڑکی کی میڈیکل رپورٹ سے حمل کی تصدیق ہوچکی ہے ۔ متاثرہ کا بیان درج کروا کر آگے کی کارروائی کی جارہی ہے ۔

Loading...