طالبات کا سنگین الزام ، پڑھانے کے بہانے پرائیویٹ پارٹس کو چھوتا تھا ٹیچر ، مخالفت کرنے پر دیتا تھا ایسی سزا

ملک کی راجدھانی دہلی سے متصل اترپردیش کے نوئیڈا کے ایک مشہور اسکول میں ریاضی کے ٹیچر پر دو طالبات نے چھیڑ چھاڑ کا الزام لگایا ہے ۔

Aug 01, 2019 06:53 PM IST | Updated on: Aug 01, 2019 06:53 PM IST
طالبات کا سنگین الزام ، پڑھانے کے بہانے پرائیویٹ پارٹس کو چھوتا تھا ٹیچر ، مخالفت کرنے پر دیتا تھا ایسی سزا

علامتی تصویر

ملک کی راجدھانی دہلی سے متصل اترپردیش کے نوئیڈا کے ایک مشہور اسکول میں ریاضی کے ٹیچر پر دو طالبات نے چھیڑ چھاڑ کا الزام لگایا ہے ۔ جانچ کے بعد تفتیشی کمیٹی نے اس معاملہ کو صحیح پایا ، جس کے بعد اسکول کے پرنسپل نے سیکٹر 49 تھانہ میں شکایت درج کرائی ہے ۔ پولیس نے شکایت ملنے کے بعد معاملہ درج کرکے جانچ شروع کردی ہے ۔

ریاضی کے ٹیچر پر ساتویں جماعت کی دو طالبات نے یہ الزام عائد کیا ہے ۔ جانچ کمیٹی کے مطابق دونوں طالبات نے اپنے کلاس ٹیچر کو بتایا تھا کہ ریاضی کا ٹیچر پڑھانے کے بہانے ان کے پرائیویٹ پارٹس کو چھوتا تھا ۔ جب طالبات اس کی مخالفت کرتی تھیں ، تو خامیاں نکال کر کلاس میں ان کی بے عزتی کرتا اور پھر کسی وجہ کے بغیر بھی سزا دیتا تھا ۔

Loading...

ایسا طالبات کے ساتھ ایک نہیں بلکہ کئی مرتبہ ہوا ۔ اپنے ٹیچر کی فحش حرکتوں سے جب دونوں طالبات کافی پریشان ہوگئیں ، تو انہوں نے کلاس ٹیچر سے اس کی شکایت کرنے کا فیصلہ کیا ۔ معاملہ سامنے کے آنے کے بعد دونوں طالبات کی اسکول میں کاونسلنگ بھی کی گئی ۔ وہیں اسکول کی جانچ کمیٹی نے معاملہ صحیح پایا تو پرنسپل نے سیکٹر 49 تھانہ میں شکایت دی ۔ فی الحال ٹیچر کو اسکول نے اس کے عہدہ سے ہٹادیا ہے ۔

خیال رہے کہ سیکٹر 50 میں واقع ایک مشہور اسکول میں پڑھنے والی دونوں طالبات نے 17 جولائی کو اپنے کلاس ٹیچر سے اس کی شکایت کی تھی ، جس کے بعد معاملہ کی داخلی جانچ کی گئی ۔ اس سے پہلے دونوں طالبات نے کلاس ٹیچر سے کہا تھا کہ ریاضی کا ٹیچر اپریل سے پڑھانے کے بہانے ان کے اعضائے مخصوصہ کو چھو رہے تھے ۔

Loading...