نوکری کے نام پر پہلے کی اجتماعی آبروریزی اور پھر فحش ویڈیو بناکر کردی ایسی گھنونی حرکت

اترپردیش کے نوئیڈا سے ایک بڑی خبر سامنے آرہی ہے ، جہاں ایک خاتون کی اجتماعی آبروریزی کا واقعہ پیش آیا ہے ۔ اس واقعہ سے آس پاس کے علاقے میں سنسنی پھیل گئی ہے ۔

Sep 01, 2019 01:37 PM IST | Updated on: Sep 01, 2019 01:37 PM IST
نوکری کے نام پر پہلے کی اجتماعی آبروریزی اور پھر فحش ویڈیو بناکر کردی ایسی گھنونی حرکت

علامتی تصویر

اترپردیش کے نوئیڈا سے ایک بڑی خبر سامنے آرہی ہے ، جہاں ایک خاتون کی اجتماعی آبروریزی کا واقعہ پیش آیا ہے ۔ اس واقعہ سے آس پاس کے علاقے میں سنسنی پھیل گئی ہے ۔ پولیس نے ملزمین کے خلاف معاملہ درج کرکے جانچ شروع کردی ہے ۔ حالانکہ ابھی تک کسی بھی ملزم کی گرفتاری نہیں ہوئی ہے ۔ ساتھ ہی خاتون نے فحش ویڈیو بناکر بلیک میل کرنے کا بھی الزام عائد کیا ہے ۔

اطلاعات کے مطابق یہ واقعہ نوئیڈا کے سیکٹر 44 میں واقع امیٹی انٹرنیشنل اسکول میں پیش آیا ہے ۔ خاتون نے اسکول میں تعینات اپنے دو ساتھی ملازمین پر اجتماعی آبروریزی کا الزام عائد کیا ہے ۔ خاتون کا کہنا ہے کہ نوکری دلانے کے نام پر ملزمین نے اس کی اجتماعی آبروریزی کی ۔ ساتھ ہی ساتھ اس واقعہ کا فحش ویڈیو بھی بنالیا اور پھر ویڈیو کو سوشل میڈیا پر وائرل کرنے کی دھمکی دے کر کئی مہینوں تک آبروریزی کرتا رہا ۔ مقامی پولیس کے مطابق کچھ ماہ پہلے اس کے شوہر کی انگلی کٹ گئی تھی ، جس کی وجہ سے وہ بے روزگار ہوگیا تھا ۔ شوہر کے بے روزگار ہوجانے سے گھر کی مالی حالت خراب ہوگئی اور گھر کا خرچ چلانا مشکل ہوگیا ، جس کے بعد متاثرہ خاتون نے نوکری کرنے کا فیصلہ کیا ۔

Loading...

خاتون نے اسکول میں تعینات سیکورٹی سپروائزر سچن شرما اور سچت سے رابطہ کیا ۔ دونوں نے نوکری دلانے کے نام پر خاتون کی زبردستی اجتماعی آبروریزی کی اور ساتھ ہی فحش ویڈیو بناکر بلیک میل کرنے لگا ۔ متاثرہ خاتون نے بلیک میلنگ سے پریشان ہو کر پولیس میں شکایت درج کرائی ہے ۔ پولیس کے مطابق خاتون تقریبا ایک سال سے اسکول میں نوکری کررہی ہے ۔ ابتدائی جانچ میں ان کے الزامات مشکوک نظر آرہے ہیں ۔

دینک جاگرن کی خبر کے مطابق جانچ میں پتہ چلا ہے کہ خاتون ڈیوٹی کرنے میں لاپروائی برت رہی تھی ، جس کی ملزم سپروائزر نے شکایت کردی تھی ۔ اس بات کی وجہ سے دونوں کے درمیان تنازع بھی ہوا تھا ۔ خاتون کا بیان ابھی درج نہیں ہوا ہے ۔ دونوں ملزمین فرار ہیں ، جن کی تلاش کی جارہی ہے ۔

Loading...