گھوڑے کو بیہوش کرنے والے انجیکشن 6 سال کی بچی کو لگاکر 3 مرتبہ رپپ کے بعد قتل، تا عمرقید کی سزا

ملزم نے 6 سال کی معصوم کو سابق وزیر نرمل سنگھ کے فارم ہاؤس پر گھوڑوں کو بیہوش کرنے والا انجیکشن لگانے کے بعد تین مرتبہ اس کا ریپ کیا اور بعد میں گلا کاٹ کر اس کا قتل کر دیا تھا۔

Jan 29, 2019 09:45 PM IST | Updated on: Jan 29, 2019 09:53 PM IST
گھوڑے کو بیہوش کرنے والے انجیکشن 6 سال کی بچی کو لگاکر 3 مرتبہ رپپ کے بعد قتل، تا عمرقید کی سزا

دیوی سنگھ نے جو انجیکشن معصوم کو لگایا تھا وہ گھوڑوں کو بیہوش کرنے کیلئے لگایا جاتا تھا۔ اس کی کتنی تعداد ہوتی ہے یہ دیوی سنگھ کو پہلے سے ہی پتہ تھا۔

یمنا نگر کے خضر آباد علاقے میں جون کے مہینے میں 6 سال کی معصوم کے ساتھ ہوئی حیوانیت کے بارے میں جان کر آپ کا دل دہل اٹھے گا، آپ کی روح کانپ جائے گی، جسم کانپنے لگے گا۔ بتادیں کہ 6 سال کی بچی کے ساتھ گھنونے شرمناک معاملے میں کورٹ نے قصوروار کو آخری سانس تک جیل کی سلاخوں کے پیچھے بند رہنے کی سخت سزا سنائی ہے۔ ایسے میں ملزم کو دیڑھ لاکھ روپئے جرمانہ بھی سنایا ہے۔ ملزم نے 6 سال کی معصوم کو سابق وزیر نرمل سنگھ کے فارم ہاؤس پر گھوڑوں کو بہیوش کرنے والا انجیکشن لگانے کے بعد تین مرتبہ اس کا ریپ کیا اور بعد میں گلا کاٹ کر اس کا قتل کر دیا تھا۔

بیل گڑھ گاؤں میں واقع سابق وزیر نرمل سنگھ کے گھوڑوں کے فارم ہاؤس پر دو جون کو ایک خون سے لتھ پتھ 6 سالہ معصوم کی لاش کھائی میں پڑی ملی تھی۔ معصوم ایک جون کو ہی گھر سے لاپتہ ہو گئی تھی اور اس کا کنبہ اسے دن۔رات ڈھونڈتا رہا لیکن جب لڑکی کی لاش ملی تو اسے دیکھتے ہی اہل خانہ کے لوگوں کے پاؤں تلے سےزمین کھسک گئی۔

Loading...

در اصل معصوم کی لاش مٹی کے درمیان نصف برہنہ حالت میں خون سے سنی ہوئی تھی۔ پولیس نے اس معاملے میں جانچ کرنے کے بعد فارم ؤس پر کام کرنے والے دیوی سنگھ کو حراست میں لیکر جب پوچھ گچھ کی تو پولیس کے سامنے ملزم نے جو بیان دئے وہ چونکانے والے تھے۔ ان بیانوں میں حیوانیت تھی۔ ملزم دیوی سنگھ نے مانا کہ اس نے معصوم بچی کو روتے دیکھ کر اسے گود میں اٹھا لیا اور بعد میں اسے ایک انجیکشن لگایا جس سے وہ بے سدھ (بیہوش) ہو گئی۔

دیوی سنگھ نے جو انجیکشن معصوم کو لگایا تھا وہ گھوڑوں کو بیہوش کرنے کیلئے لگایا جاتا تھا۔ اس کی کتنی تعداد ہوتی ہے یہ دیوی سنگھ کو پہلے سے ہی پتہ تھا۔ انجیکشن کا اثر ہوتے ہی معصوم بیہوش ہو گئی اور ایسے میں دیوی سنگھ  شراب پیکر معصوم کو اپنی حوس کا شکار بناتا رہا۔ دیوی سنگھ نے اس بات کو خود قبول کیا کہ اس نے تین مرتبہ بچی کا ریپ کیا اور تیسری مرتبہ میں جب لڑکی رونے لگی تو اس نے اپنے بچاؤ کیلئے چاقو سے معصوم کا گلا کاٹ دیا اور خود گھر آگیا۔

دیوی سنگھ کے خلاف پولیس نے پختہ کارروائی کی اور اسے جیل بھیج دیا لیکن اس معاملے میں فاسٹ ٹریک کورٹ نے منگل کو فیصلہ سناتے ہوئے یہ کہہ دیا کہ ملزم نے بڑی ہی بے دردی سے حیوانیت کی تھی اور اسی کے مد نظر اسے اب آخری سانس تک جیل کی سلاخوں کے اندر رہنا پڑے گا اور اہل خانہ کو معاوضہ کے طور پر دیڑ لالھ روپئے جرمانہ بھی دینا ہوگا۔

کورٹ کے اس فیصلے کے بعد دیوی سنگھ اپنے آپ کو بے قصور بتا رہا ہے اور اس کا یہی کہنا ہے کہ وہ ڈر گیا تھا جس کی وجہ سے پولیس کے سامنے یہ بیان دئے۔ جبکہ بچی کے ڈی این اے کی بنیاد پر کورٹ نے فیصلہ سنایا ہے۔ حالانکہ اس فیصلے سے سرکاری وکیل خوش نہیں ہیں اور ان کے مطابق ایسے کیس میں ملزم کو پھانسی کی سزا دی جانی چاہئے اور اس کو لیکر وہ ہائی کورٹ میں بھی عرضی دائر کریں گے۔

Loading...