بس حادثہ: بہار سے دہلی جا رہی بس حادثے میں 6 مسافرلاپتہ،موقع پر پہنچی ایف ایس ایل کی ٹیم

بہار کے موتیہاری ضلع کے این ایچ ۔18 کولوا کے پاس جمعرات کو بس پلٹنے سے بس میں آگ لگ گئی ۔جس میں 20لوگوں کی موت ہو گئی۔حادثہ جمعرات کی شام قریب 4 بجے پیش آیا ۔ جب بس نمبر (یوپی 75اے ٹی۔2312)موتیہاری کے راستے مظفر پور سے دہلی جا رہی تھی۔

May 03, 2018 09:07 PM IST | Updated on: May 04, 2018 09:24 AM IST
بس حادثہ: بہار سے دہلی جا رہی بس حادثے میں 6 مسافرلاپتہ،موقع پر پہنچی ایف ایس ایل کی ٹیم

بہار سے دہلی جا رہی بس حادثے کا شکار

بہار کے موتیہاری ضلع کے این ایچ ۔18 کولوا کے پاس جمعرات کو بس پلٹنے سے بس میں آگ لگ گئی ۔جس میں 20لوگوں کی موت ہو گئی۔حادثہ جمعرات کی شام قریب 4 بجے پیش آیا  ۔ جب بس نمبر (یوپی 75اے ٹی۔2312)موتیہاری کے راستے مظفر پور سے دہلی جا رہی تھی۔

مشرقی چمپارن کے ڈی ایم رمن کمار نے نیوز 18 سے بتایا کہ اسپتال میں داخل 7 زخمی مسافروں میں سے 6 لوگوں کو علاج کے بعد چھٹی دے دی گئی ہے،جبکہ حادثے میں شدید طور سے زخمی ایک مسافرزیر علاج ہے۔

Loading...

رپورٹ کے مطابق ۔موتیہاری بس میں32 لوگوں نے بکنگ کرائی تھی،لیکن 13لوگ ہی سوار تھے اور باقی لوگ راستے میں سوار ہونے والے تھے۔ابھی  تک صرف 7 مسافروں کو ہی محفوظ باہر نکالا گیا ہے۔موقع پر ایف ایس ایل کی ٹیم اور این ڈی آر ایف کی ٹیم پہنچ چکی ہے اور راحت۔بچاؤ کا کام  شروع کر دیا ہے۔

مشرقی چمپارن کے چکیا کے ایس ڈی او چتر گپت کمار نے کہا کہ ابھی کسی بھی شخص کی موت کی تصدیق نہیں ہوئی ہےا ور این ڈی آر ایف کی ٹیم پہنچ گئی ہے۔جانچ کے بعد ہی ہم لوگ کچھ کہہ سکتے ہیں۔

اس دردناک حادثے کے وقت سی ایم نتیش کمار ٹرانسپورٹ  ڈیپارٹمنٹ کے پروگرام میں موجود تھے۔اس حادثے کی جانکاری کے ملنے کے ساتھ ہی سی ایم نے اپنی غصہ ظاہر کیا اور ایک منٹ کا مون رکھا۔دوسری اور ریاستی حکومت نے مہلوکین کے اہل خانہ کو 4۔4 لاکھ کا معاوضہ دینے کا اعلان کیا ہے۔

fire-in-bus

حادثے کے بعد موقع پر ضلع کے ڈی ایم اور ایس پی راحت ٹیم کے ساتھ موقع پر پہنچ گئے ہیں۔ریسکیو آپریشن چلایا جا رہا ہے۔جائے حادثہ پر مقامی لوگ بھی راحت بچاؤ کے کام میں ساتھ کام کر رہے ہیں۔حالانکہ ابھی تک بس کی آگ نہیں بجھائی جا سکی ہے۔جانکاری کے مطابق فائر برگیڈ کی ٹیم ابھی تک موقع پر نہیں پہنچی ہے۔

fire-in-bus-3

اس درمیان حادثے میں زخمی 7 مسافروں کا موتیہاری اسپتال میں علاج چل رہا ہے۔مرکزی زرعی وزیر رادھا موہن سنگھ نے اسپتال جاکر زخمیوں سے ملاقات کی ۔انہوں نے کہا کہ سبھی مسافر خطرے سے باہر ہیں۔

بس حادثے میں زخمی مسافروں سے موتیہاری صدر اسپتال میں ملتے ہوئے۔

ترہوت ڈویژن کے کمشنرایچ آر سری نواس کے مطابق موتیہاری بس حادثے میں ایک بھی موت کی تصدیق نہیں ہوئی ہے۔لاش جلنے کی کوئی علامت نہیں  ملی ہے۔اف ایس ایل کی ٹیم جانچ کیلئے بلائی گئی ہے۔ایس ایس بی اور ضلع پولیس کی ٹیم ریسکیو میں مصروف ہے۔

بتایاجا رہا کہ کوٹوا کے پاس اچانک بس ڈرائور نے اپنے ہوش کھو دئے۔جس کے بعد بس پلٹ گئی اور بس میں آگ لگ گئی ۔ایسی بس تھی تو ہو سکتا ہے اے سی میں خرابی کی وجہ سے بس میں آگ لگی ہو۔

Loading...