پاکستان کومنہ توڑجواب دینےکیلئے ہمہ وقت تیارہیں ہندوستانی فوج کےجوان : راجناتھ سنگھ

مرکزی وزیرداخلہ راجناتھ سنگھ نےآج کہاکہ پڑوسی ملک پاک کی جانب سےمستقل دراندازی کی کوشش کی جارہی ہے،جس کامنہ توڑجواب دینےکےلئےفوج کےجوان ہمیشہ تیارہیں۔

Apr 22, 2018 10:32 PM IST | Updated on: Apr 22, 2018 10:32 PM IST
پاکستان کومنہ توڑجواب دینےکیلئے ہمہ وقت تیارہیں ہندوستانی فوج کےجوان : راجناتھ سنگھ

مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ: فائل فوٹو۔

پٹنہ: مرکزی وزیرداخلہ راجناتھ سنگھ نےآج کہاکہ پڑوسی ملک پاک کی جانب سےمستقل دراندازی کی کوشش کی جارہی ہے،جس کامنہ توڑجواب دینےکےلئےفوج کےجوان ہمیشہ تیارہیں۔مسٹر سنگھ نےبہاربھارتیہ جنتاپارٹی کی جانب سےمنعقدہ بابوویرکنورسنگھ یوم فتح تقریب کوخطاب کرتےہوئےکہاکہ پڑوسی ملک کی جانب سےبرابرافراتفری پھیلانےکی کوششیں جاری ہیں۔ملک کو توڑنےکی کوشش ہورہی ہے۔جس کامنہ توڑجواب دیاجارہاہے۔انہوں نےکہاکہ فوج کویہ ہدایت دی گئی تھی کہ گولی چلانےمیں پہل نہیں کرنی ہے۔لیکن اس کےباوجودسرحدکی جانب سےگولی چلتی ہے توگولی کی گنتی نہیں کرنی ہے۔

مرکزی وزیر نےدعوےکےسارتھ کہاکہ ملک سےنکسلی ختم ہوکررہیگا۔نکسلی انتہاپسند لیڈرغریبوں کاخون چوستےہیں اوراس سےمال اکٹھاکرکےاپنےبچوں کوبیرونی ممالک میں پڑھاتےہیں۔انہوں نےکہاکہ نکسلی ترقیاتی کاموں میں رکاوٹ پیداکرناچاہتےہیں۔مرکزی حکومت نکسی انتہاپسندی کوختم کرنے کےلئےپرعزم ہے۔

مسٹر سنگھ نےکہاکہ آئندہ تین سالوں میں فوج اورحفاظتی دستے کی ٹیم دیسی ہتھیاروں سےمسلح ہوگی۔اس سلسلےمیں کام کیاجارہاہے۔انہوں نےکہاکہ مظبوط،خوداعتماد اورخودکفیل ہندوستان بنانےکےلئے کوششیں کی جانی چاہیے اوریہی ویرکنورسنگھ کےتیئں سچاخراج عقیدت ہوگا بابوکنورسنگھ میں خودداری کاجذبہ تھا۔عزت واحترام اورخودداری سب سےبڑی چیز ہوتی ہے۔اس سےکبھی سمجھوتہ نہیں کیاجاسکتا۔

مرکزی وزیر نےکہاکہ کچھ ایسی طاقتیں ہیں جوملک کی سماجی ہم آہنگی کوتارتارکرناچاہتےہیں۔مذہب کےنام پرسماج کوبانٹنےکی کوشش کی جارہی ہے۔انہوں نےکہاکہ ملک کی سالمیت اوراتحاد کوتارتارکرنےکی جوکوششیں ہورہی ہیں اسےکبھی کامیاب ہونےنہیں دیاجائےگا۔ملک نہیں رہیگاتوغلام بن کے نہیں جی سکتے۔یہی توخودکفیل ہندوستان کی پہچان ہےاوراسےتعلیم یافتہ اورخودکفیل بناناہے۔

Loading...

مسٹر سنگھ نےکہاکہ جوسماج خودپرمنحصرنہیں ہےاس کاوجودزیادہ دنوں تک نہیں رہ سکتا۔انہوں نےکسی سیاسی جماعت کانام لئےبغیرکہاکہ مرکزی حکومت پرالزام لگائےجارہےہیں کہ درج فہرست ذات وقبائل پر کام نہیں کررہی ہے۔سیاست کےبہت سےمسائل ہوسکتےہیں۔لیکن اسطرح کےنہیں ہونے چاہیے۔انہوں نے کہاکہ وزیراعظم نریندرمودی نےحلف لینےکےفوراً بعدکہاتھاکہ حکومت غریبوں کےبارےمیں فکرمندہے۔

Loading...