بہارسب سے زیادہ لیچی پیداکرنے والی ریاست ، 32 ہزار رقبے میں تقریباً 300 ہزارمیٹرک ٹن لیچی کی پیداوار

ملک میں لیچی کی کل پیداوار میں سے 40 فیصد لیچی کی پیداوار بہار میں ہوتی ہے۔

May 29, 2017 11:34 PM IST | Updated on: May 29, 2017 11:34 PM IST
بہارسب سے زیادہ لیچی پیداکرنے والی ریاست ، 32 ہزار رقبے میں تقریباً 300 ہزارمیٹرک ٹن لیچی کی پیداوار

پٹنہ : زراعت اور کسانوں کی بہبود کے وزیر جناب رادھا موہن سنگھ نے کہا ہے کہ مرکزی حکومت کا بنیادی مقصد انواع و اقسام کی لیچی پیدا کرنے اور لیچی پیداوار میں اضافےکے لیے نئی تکنیک کی ریسرچ اور تحقیق پر توجہ مرکوز کرنا ہے اور سبھی ڈویژن کے ساتھ اطلاعات کا تبادلہ ہوسکے۔ مسٹر رادھا موہن سنگھ نے یہ بات نئی دہلی  لیچی پروسیسنگ پلانٹ کے افتتاح کے موقع پر کہی۔

مرکزی وزیر نے کہا کہ بہار ملک میں سب سے زیادہ لیچی پیدا کرنے والی ریاست ہے۔ بہار میں 32 ہزار رقبے میں تقریباً 300 ہزار میٹرک ٹن لیچی کی پیداوار ہورہی ہے۔ ملک میں لیچی کی کل پیداوار میں سے 40 فیصد لیچی کی پیداوار بہار میں ہوتی ہے۔ لیچی کی اہمیت کا خیال رکھتے ہوئے 6 جون 2001 میں لیچی سے متعلق قومی تحقیقی مرکز کا قیام عمل میں آیا۔ مسٹر سنگھ نے کہا کہ لیچی کی پیداوار میں مظفر پور ضلع کا تعاون بیحد متاثر کن ہے۔ تاہم لیچی کی پیداوار میں اضافہ کرنے کی ضرورت ہے، جو کہ فی الحال 8.0 ٹن ہے۔ اس کے لیے حکومت کے تمام اداروں، امداد باہمی کے اداروں اور کسانوں کو آگے آنا ہوگا۔

مرکزی وزیر نے کہا کہ یہ بیحد فخر کی بات ہے کہ بھابھا آٹومک ریسرچ سنٹر کے سائنسدانوں اور لیچی سے متعلق نیشنل ریسرچ سنٹر نے لیچی کے علاج اور کم درجہ حرارت پر 60 دنوں تک لیچی کو محفوظ رکھنے میں کامیابی حاصل کی ہے۔ لیچی کی پروسیسنگ پلانٹوں میں سے ایک پلانٹ تیار کیا جاچکا ہے۔ جناب رادھا موہن سنگھ نے کہا کہ اس تکنیک کو لیچی کی پیداوار کرنے والے افراد اور تاجروں کے لیے استعمال کیا جائے گا۔ جناب سنگھ نے مزید کہا کہ اس تکنیک کو مزید مؤثر بنانے کے لیے لیچی کی پیداوار کرنے والوں کو نہایت اعلیٰ قسم کے پھلوں کو تیار کرنا ہوگا۔ لیچی سے متعلق نیشنل ریسرچ سینٹر نے اس کے لیے متعدد تکنیک تیار کی ہیں۔ لیچی سے متعلق نیشنل ریسرچ سینٹر ملک کے مختلف اداروں/ ریاستوں میں تقریباً 35 سے 40 ہزار پودوں کو مہیا کررہا ہے۔ زراعت کے وزیر نے مزید کہا کہ لیچی سے متعلق نیشنل ریسرچ سینٹر آئی سی اے آر اور ریاست کی زرعی یونیورسٹیوں اور مرکزی و ریاستی حکومتوں کے ترقی یافتہ مراکز مثلاً نیشنل ہارٹی کلچر بورڈ، اے پی ای ڈی اے، نیشنل ہارٹی کلچر مشن کے ساتھ کام کررہا ہے۔

جناب رادھا موہن سنگھ نے کہا کہ ہمارے سائنسداں اعلیٰ معیار اور انواع و اقسام کی لیچی تیار کرنے کے لیے اور زرعی سرگرمیوں کے لیے دن رات محنت کررہے ہیں۔ ریاستی حکومتوں کے وی کے اور دیگر اداروں کو ان کو عوام تک پہنچانا چاہئے۔ اس موقع پر جناب رادھا موہن سنگھ نے تمام سائنسدانوں اور افسران کو مبارکباد دی اور امید ظاہر کی کہ اس پلانٹ سے بہار کے لیچی پیداوار کرنے والے کسان اور تاجروں کے علاوہ پورے ملک کو اپنی آمدنی بڑھانے میں مدد ملے گی۔

Loading...

Loading...