ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

لفٹ لینے سے کیا انکار ، تو گھر جا کر طالبہ کے چہرے پر پھینکا تیزاب

گوپال گنج : گوپال گنج میں ایک سر پھرے نوجوان کے ذریعہ ایک طالبہ کے چہرے اور جسم پر تیزاب پھینکے جانے کی وجہ سے سنسنی پھیلی ہوئی ہے ۔ تیزاب سے متاثرہ طالبہ کا چہرہ اور جسم بری طرح سے جھلس گیا ہے۔ لڑکی کو سنگین حالت میں گوپال گنج صدر اسپتال کے برن وارڈ میں داخل کرایا گیا ہے۔

  • Pradesh18
  • Last Updated: Feb 21, 2016 07:55 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
لفٹ لینے سے کیا انکار ، تو گھر جا کر طالبہ کے چہرے پر پھینکا تیزاب
گوپال گنج : گوپال گنج میں ایک سر پھرے نوجوان کے ذریعہ ایک طالبہ کے چہرے اور جسم پر تیزاب پھینکے جانے کی وجہ سے سنسنی پھیلی ہوئی ہے ۔ تیزاب سے متاثرہ طالبہ کا چہرہ اور جسم بری طرح سے جھلس گیا ہے۔ لڑکی کو سنگین حالت میں گوپال گنج صدر اسپتال کے برن وارڈ میں داخل کرایا گیا ہے۔

گوپال گنج : گوپال گنج میں ایک سر پھرے نوجوان کے ذریعہ ایک طالبہ کے چہرے اور جسم پر تیزاب پھینکے جانے کی وجہ سے سنسنی پھیلی ہوئی ہے ۔ تیزاب سے متاثرہ طالبہ کا چہرہ اور جسم بری طرح سے جھلس گیا ہے۔ لڑکی کو سنگین حالت میں گوپال گنج صدر اسپتال کے برن وارڈ میں داخل کرایا گیا ہے۔


یہ واقعہ ميرگنج تھانہ کے سوریجي گاؤں میں پیش آیا ۔ متاثرہ طالبہ کا نام شاهينہ پروین ہے۔ وہ ميرگنج کے سوریجي گاؤں کی رہنے والی ہے۔ معلومات کے مطابق سوریجي گاؤں کے ہی ایک سر پھرے نوجوان نے متاثرہ طالبہ کے گھر پہنچ کر کر دیر رات جم کر ہنگامہ کیا اور 24 فروری سے شروع ہو رہے انٹر کے امتحان میں زبردستی لفٹ دینے کی ضد کرنے لگا۔


لفٹ لینے سے انکار کرنے پر ملزم نوجوان نے شاہینہ کے جسم اور چہرے پر تیزاب پھینک دیا، جس سے وہ بری طرح جھلس گئی۔ شاہینہ کے اہل خانہ کے مطابق گاؤں کا ہی نوجوان گڈو شاہ لڑکی کو زبردستی اسکول لے جانے کیلئے دباؤ ڈال رہا تھا ۔


متاثرہ کے اہل خانہ کے بیان پر ميرگنج تھانے میں نامزد ایف آئی آر درج کرلی گئی ہے۔ تاہم ملزم واقعہ کے بعد سے فرار ہے۔

First published: Feb 21, 2016 07:55 PM IST