بیٹے کی ہلاکت کے باوجود امن کی اپیل کرنے والے مولانا امداد اللہ کو ممتا حکومت دے گی بنگا بھوشن اعزاز

کولکاتہ۔ مغربی بنگال کی ممتا حکومت نے مولانا امداد اللہ راشدی کو بنگا بھوشن اعزاز سے نوازنے کا فیصلہ کیا ہے۔

May 21, 2018 04:55 PM IST | Updated on: May 21, 2018 04:56 PM IST
بیٹے کی ہلاکت کے باوجود امن کی اپیل کرنے والے مولانا امداد اللہ کو ممتا حکومت دے گی بنگا بھوشن اعزاز

آسنسول میں واقع نورانی مسجد کے امام مولانا امداد اللہ راشدی: فائل فوٹو۔

کولکاتہ۔ مغربی بنگال کی ممتا حکومت نے مولانا امداد اللہ راشدی کو بنگا بھوشن اعزاز سے نوازنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ممتا حکومت نے یہ فیصلہ مولانا کی امن اپیل سے متاثر ہو کر کیا ہے۔ خیال رہے کہ گزشتہ مارچ کے اواخر میں ریاست کے آسنسول اور رانی گنج میں ہوئے فرقہ وارانہ فساد میں آسنسول کے تین لوگ مارے گئے تھے جن میں مدھیامک کا طالب علم مولانا کا بیٹا صبغتہ اللہ بھی شامل تھا۔

آسنسول میں واقع نورانی مسجد کے امام مولانا امداد اللہ راشدی نے اپنے بیٹے کے مارے جانے کے باوجود اس وقت عوام سے امن کی اپیل کی تھی۔ انہوں نے مشتعل بھیڑ سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ اگر میرے بیٹے کی ہلاکت کا انتقام یا فساد برپا کرنے کی کوشش کی گئی تو میں امامت چھوڑ کر شہر سے باہرچلا جاؤں گا ۔ خیال رہے کہ  امام کے سولہ سالہ بیٹے کو شرپسندوں نے اغوا کے بعد ہلاک کردیا تھا۔

امام کے بیٹے صبغۃ اللہ راشدی نے فساد سے چند دنوں قبل دسویں بورڈ کا امتحان دیا تھا۔ وہ فساد کے دن سے لاپتہ ہوگیا تھا ۔ بعد میں معلوم ہوا کہ فسادیوں کی بھیڑ نے اسے اغواکیا تھا۔ایک دن بعد اس کی لاش برآمد ہوئی تھی۔ یہ شناخت ہونے پر کہ یہ مسجد کے امام مولانا امداد اللہ کے بیٹے صبغۃ اللہ کی لاش ہے، اس کے بعد سے ہی آسنسول کے مسلم محلوں میں کشیدگی پھیل گئی تھی۔ یہ کشیدگی بڑے فساد میں تبدیل ہوسکتی تھی ۔ لیکن موقع کی نزاکت کو دیکھتے ہوئے امام صاحب نے بروقت مداخلت کی اور آگے بڑھ کر عوام سے امن کی اپیل کرکے ان کے غصہ کو ٹھنڈا کیا اور ملک کے لئے ایک نئی مثال پیش کی ۔

مولانا کی اس امن اپیل کی ملک بھر میں ستائش کی گئی تھی اور ملک میں امن و امان کی بحالی اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی کو برقرار رکھنے کی اسے ایک مضبوط کوشش کے طور پر دیکھا گیا تھا۔ ممتا حکومت نے مولانا کی اس امن پہل سے متاثر ہو کر اب انہیں ریاست کے سب سے بڑے اعزاز سے نوازنے کا فیصلہ کیا ہے۔

Loading...

Loading...